بھٹکل میں بارش سے متاثرہ عوام کی  پریشانی اور تکالیف میں کمی نہیں : مزدور، ماہی گیر سمیت عوام حالات سے متاثر

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 9th August 2019, 9:12 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:9؍اگست   (ایس اؤ نیوز)تعلقہ میں ماہ اگست کے صرف 9دن گزرنے تک بارش کا پیمانہ روایت کے مطابق 70فی صد کو پہنچ چکا ہے۔بارش کے  رواں سال پہلے مہینے  کے 15دن بارش نہ ہونے سے جو نقصان ہواتھا وہ تقریباً پورا ہوگیا ہے۔ جمعہ کی صبح سورج کی  کرنیں گرچہ  اجالے اور راحت کی امید جتانےکے بعد بھی عوام کی تکالیف و پریشانیوں  کا کوئی حل نظر نہیں آرہاہے۔

تعلقہ میں برستی موسلادھار بارش کی وجہ سے 10ہزار سے زائد مزدور وں کی زندگی کا گزارہ مشکل ہوگیاہے، کمائی کے لئے دیہی علاقوں سے شہری بازار آنے والے چھوٹے موٹے بیوپاری بھیگ کر خالی ہاتھ لوٹ رہے ہیں۔ مزدور انتظار میں ہیں کہ تھوڑی سی بارش رک جائےتو کہیں کوئی کام مل جائے۔ مزدور وں کی حالت اتنی ابتر ہوگئی ہےکہ روزمرہ کی اشیاء خریداری کے لئے بھی پیسہ نہیں ہے۔ ماہی گیروں کی حالت بھی کچھ ایسی ہی ہے۔ بھٹکل کی مچھلی مارکیٹ پچھلے چند دنوں سے ویران سی لگ رہی ہے۔ قریب 24000ماہی گیروں کے خاندان مشکلات میں گزارہ کررہے ہیں۔ مقامی سطح پر 537کشتیاں ، 207بوٹ ڈر کے مارے ساحل پر ہی لنگر ڈالےہوئے ہیں۔ جس کےنتیجے میں صرف ماہی گیر اور مزدور ہی نہیں بلکہ کئی ایک پر اس کے اثرات ہورہے ہیں، مارکیٹ میں بیوپار ماند پڑگیاہے۔

بھٹکل میں مچھلی کے قحط سے عوام سبزی ترکاری کی طرف رخ کرنےپر مجبور ہیں۔ یہاں کی  کہانی  کچھ اور ہی کہتی ہے،چونکہ شمالی کرناٹکا کے اکثر اضلاع سیلاب سے بری طرح متاثر ہیں ،سبزی ترکاری بھی کم آرہی ہے تو ترکاری کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں۔ ٹماٹے فی کلو گرام 50روپئے سے زائد ہے تو آلو اور پیاز 30سے کم نہیں ہے۔ مقامی خواتین بھینڈی ، ترائی ،ککڑی وغیرہ جہاں تہاں فروخت تو کررہےہیں مگر یہاں بھی قیمتیں موقع کا فائدہ اٹھارہی ہیں۔ کلی طورپر کہاجاسکتاہےکہ پچھلے 15دنوں سے برستی موسلادھار بارش نے حقیقت میں عوامی زندگی کو مفلوج بنادیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں بجلیوں کی چمک اور بادلوں کی گرج کے ساتھ موسلادھار بارش؛ بینگرے میں ایک گھرکو نقصان، ماولی میں الیکٹرانک اشیاء جل کر راکھ؛ الیکٹرک سٹی سپلائی بری طرح متاثر

آج منگل دوپہر کو ہوئی موسلادھار بارش اور بجلیاں گرنے سے ایک مکان کو نقصان پہنچا وہیں دوسرے ایک مکان کی الیکٹرانک اشیاء جل کر خاک ہوگئی۔

بھٹکل: جے این یو کے لاپتہ متعلم نجیب احمد کو ڈھونڈ نکالنے  اور اُس کے ساتھ انصاف کرنے  کا مطالبہ لے کر ایس آئی اؤ آف انڈیا کا ملک گیر احتجاج : بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر کو بھی دیا گیا میمورنڈم

15اکتوبر 2016کو جواہر لال یونیورسٹی میں ایم ایس سی کےفرسٹ ائیر میں زیر تعلیم نجیب  احمد یونیورسٹی کے ہاسٹل سے لاپتہ ہوئے تین سال ہورہےہیں ،گمشدگی کی پہلی رات کو ہاسٹل میں اے بی وی پی کے کارکنان نے حملہ کیا تھا، مگر اس معاملے میں ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہونے پر اسٹوڈنٹس اسلامک ...

بھٹکل کے اسسٹنٹ کمشنر ساجد ملا کا تبادلہ :ایماندار آفسران کے تبادلوں پر عوام میں حیرت ؛کے اے ایس آفیسر  اے رگھو ہونگے نئے اے سی

بھٹکل کے اسسٹنٹ کمشنر ساجد ملا کا تبادلہ کرتےہوئے ریاستی حکومت نے حکم نامہ جاری کیا ہے، ساجد ملا کے عہدے پر کے اے ایس جونئیر گریڈ کے پروبیشنری افسر اے رگھو کا تقر ر کیاگیا ہے۔ اس طرح تعلقہ کے اہم کلیدی عہدوں پر فائز ایماندار افسران کے تبادلوں کولے کرعوام تعجب کا اظہار کیا ہے۔

محکمہ جنگلات کے افسران کے خلاف بھٹکل پولس اسٹیشن کے باہر احتجاج؛ اے ایس پی کو دی گئی تحریری شکایت

جنگلاتی زمین کے حقوق کے لئے لڑنے والی ہوراٹا سمیتی کے کارکنان نے آج بھٹکل ٹاون پولس تھانہ کے باہر جمع ہوکر محکمہ جنگلات کے اہلکاروں کے خلاف کاروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا اور بھٹکل سب ڈیویژن کے اسسٹنٹ ایس پی  کے نام میمورنڈم پیش کیا۔ 

ضلع شمالی کینرا میں آج بھی 24ہزار خاندان گھروں سے محروم ! کیا آشریہ اسکیم کے ذریعے صرف دعوے کئے جاتے ہیں ؟

حکومت کی طرف سے بے گھروں کو مکانات فراہم کرنے کی اسکیمیں برسہابرس سے چل رہی ہیں۔ اس میں سے ایک آشریہ اسکیم بھی ہے۔ سرکاری کی طرف سے ہر بار دعوے کیے جاتے ہیں کہ بے گھروں اور غریبو ں کا چھت فراہم کرنے کے منصوبے پوری طرح کامیاب ہوئے ہیں۔

بھٹکل کے آٹو رکشہ ڈرائیور بھی ایماندار؛ بھٹکل میں تین لاکھ مالیت کے زیورات سے بھری بیگ لے کر رکشہ ڈرائیور پہنچا پولس اسٹیشن

  بھٹکل میں  راستے پر  کوئی  قیمتی چیز کسی کو گری ہوئی ملتی ہے  تو اکثر لوگ  اُسے اُس کے اصل مالک تک  پہنچانے کی کوشش کرنا عام بات ہے،  بالخصوص مسلمانوں کو راستے میں پڑی ہوئی  کوئی قیمتی چیز مل جاتی ہے تو     لوگ یا تو خود سے سوشیل میڈیا  میں پیغام وائرل کرکے  اُسے اُس کے اصل ...