گوکرن کے مہابلیشور مندر کے متعلق سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ : مندرکی نگرانی کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st April 2021, 12:19 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار :19؍اپریل(ایس اؤ نیوز)اترکنڑاضلع کے ہندؤوں کے مشہورو تاریخی مذہبی مقام گوکرن کی مہابلیشور مندر کے تعلق سے سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ  ریاستی حکومت  مندر کے انتظامی امور کو رام چندر پور مٹھ سے واپس لے۔ یاد رہے کہ  پچھلی بی جے پی کی حکومت نے گوکرن کے مہابلیشور مندر کی انتظامیہ اور نگرانی رام چندر پور مٹھ کے سپرد کی تھی۔ اب سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ایس اے بوبڈے کی بنچ نے عبوری حکم جاری کرتےہوئے یہ اہم فیصلہ سنایا ہے اور ریاستی حکومت سے کہا ہے کہ وہ سپریم کورٹ کے سابق جج بی این کرشنا کی قیادت میں کمیٹی تشکیل دیتےہوئے مندر کی نگرانی کرے۔

سپریم کورٹ کے اس اہم فیصلے سے مندر کے پروہتوں اور رام چندر پورمٹھ کے درمیان پچھلے 12برسوں سے جاری  تنازعہ اختتام کو پہنچ گیا ہے۔ اب گوکرن کا مہابلیشور مندر ، رام چندر پور مٹھ کی نگرانی میں نہیں بلکہ راست حکومت کی نگرانی میں اپنے مذہبی رسومات وغیرہ کو انجام دے گا۔

دراصل گوکرن کا مہابلیشور مندر حکومت کے مجرائی محکمہ کے تحت تھا۔ مندر کے ٹرسٹی وی ڈی دکشت  کی جب 2004میں  موت ہوئی تو ان کا بیٹا بال چندر دکشت کارگزار نگراں کار کے طورپر خدمات انجام دینے لگا۔ لیکن 2008کے مئی مہینے میں ہوسنگر کے رام چندر پور مٹھ والوں نے دعویٰ کیا کہ یہ مندر قدیم زمانے میں ہماری تھی اس لئے اب اس کی انتظامیہ ہمارے سپرد کی جائے ۔ اس سلسلے میں مٹھ والوں نےریاستی حکومت کو درخواست دے کر مطالبہ بھی کیا تھا۔ تو ریاستی حکومت نے  14اگست 2008کو سرکاری فہرست سے مندر کو خارج کرتے ہوئے مندر کی انتظامیہ رام چندرپور مٹھ کو سونپی تھی۔ حکومت کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے بال چندر دکشت اور دیگر افراد نے ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی داخل کی تھی۔ 10برسوں بعد 2018میں ہائی کورٹ نے رام چندر پور مٹھ کے خلاف فیصلہ سنایا تھا اور سپریم کورٹ کے سابق جج بی این کرشنا کی قیادت والی کمیٹی کو مندر انتظامیہ کی نگرانی کرنے کی ہدایات جاری کی تھیں۔ رام چندرپور مٹھ نے ہائی کورٹ فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں رٹ داخل کی۔ حالات کو دیکھتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہاکہ موجودہ  حالات کو جوں کا توں برقرار رکھاجائے۔ تو حکومت نے مندر انتظامیہ کو دوبارہ رام چندر پورمٹھ کے حوالے کر رکھا تھا۔

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ایس اے بوبڈے کی قیادت والی بنچ نے  اب جاکر اس معاملے کی سنوائی کرتےہوئے عبوری فیصلہ سنایاہے۔ جس کے تحت اب گوکرن کے مہابلیشور مندر کی نگرانی سپریم کورٹ کی ہدایات پر تشکیل دی جانے والی بی این کرشنا کی ٹیم کرے گی۔جس کے ساتھہ ہی  رام چندر پور مٹھ انتظامیہ کے لئے ضروری ہوگا کہ وہ  اگلے 15دنوں کے اندر پورے معاملات بی این کرشنا کی قیادت والی کمیٹی کو سونپ دے۔

سپریم کورٹ کے فیصلے پر رد عمل ظاہر کرتےہوئےرام چندر پورمٹھ کے راگھویشوربھارتی  سوامی جی نے کہا کہ گوکرن کا مہابلیشور مندر ہمارے لئے مذہبی خدمت  کا راستہ تھا اس کے علی الرغم مٹھ سے ہمیں کوئی منافع کی امید نہیں تھی۔ سپریم کورٹ کے فیصلے سے نہ ہمیں دکھ پہنچا ہے اور نہ ہی ہم افسوس کا اظہارکرتے ہیں۔ البتہ عوام اور سماج کے تعاون سے ہم دوبارہ مندر کے حق کے لئے قانونی لڑائی جاری رکھیں گے، اُدھر دوسری طرف مندر کے پجاری اور عرضی دار راج گوپال اڈی نے سپریم کورٹ کے فیصلے پر خوشی کااظہارکرتے ہوئے   کہاکہ عدالت کی طرف سے سنایاگیا فیصلہ ہمارے لئے خوشیوں کی بہار لے کر آیا ہے۔ ہمارے اسلاف صدیوں سےمندر میں مذہبی خدمات  انجام دیتے رہے ہیں۔ اب دوبارہ ہمیں ہمارامندر ملنےپر بے حد خوشی محسوس ہورہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا معاملات میں ہورہا ہے اضافہ؛ آج بھی 64 کی رپورٹ آئی پوزیٹیو؛ بھٹکل میں سات علاقوں کوقرار دیا گیا کنٹیمنٹ زون

جس طرح ریاست کرناٹک میں اب ضلع اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات میں روز بروز اضافہ دیکھا جارہا ہے اور ضلع اُترکنڑا پوری ریاست میں کورونا پوزیٹیو معاملات میں  تیسرے نمبر پر پہنچ گیا ہے، اُسی طرح بھٹکل میں بھی کورونا کے معاملات میں  تشویش کی حد تک اضافہ دیکھا جارہاہے۔

بھٹکل: شمالی کینرا میں کووڈ وباء کا بدلتا منظر نامہ : سب سے آخری پوزیشن والا ضلع پہنچ گیا سب سے آگے ؛ کون ہے ذمہ دار ؟

کورونا کی دوسری لہر جب ساری ریاست کو اپنی لپیٹ میں لے رہی تھی تو ضلع شمالی کینرا پوزیٹیو معاملات میں گزشتہ لہر کے دوران سب سے آخری پوزیشن پر تھا۔ لیکن پچھلے دو تین دنوں سے بڑھتے ہوئے پوزیٹیو اورایکٹیو معاملات کی وجہ سے اب یہ ضلع ریاست میں سب سے  اوپری درجہ میں پہنچ گیا ہے۔ بس ...

کورونا کرفیو کی وجہ سے لاری ڈرائیوروں کو سفرکے دوران کھانے پینے اور لاری کی مرمت کا مسئلہ درپیش:ڈرائیور، کلینر اور گیاریج والوں کی زندگی پنکچر

کورونا وائرس پر لگام لگانے کے لئے حکومتوں کی طرف سے  نافذ کئے گئے سخت کرفیو کی وجہ سے ہوٹل ، ڈھابے ،گیاریج ، پنکچر کی دکانیں وغیرہ بند ہیں ، جس کے نتیجے میں  ضروری اشیاء سپلائی کرنےوالی لاریوں کے ڈرائیوروں کو سفر کے دوران میں کئی مشکلات درپیش ہیں۔

کرناٹکا میں کورونا کے بڑھتے معاملات کے چلتے سرکاری اسپتالوں میں ڈیالسس کی خدمات بند : حکومت کی خاموشی پر فاؤنڈیشن کا اقدام

پیشگی احتیاطی تدابیر اورمنظم و منضبط نظام کے بغیر  کورونا وائرس پر  کنٹرول کرنے میں ناکامی  اور کووڈ ٹیکہ  کی سپلائی بند ہوجانے سے ایک طرف عوام پہلے سے پریشان ہیں، ایسے میں    حکومت کی ایک  اورنظرا ندازی  نے ریاست کرناٹک کے ہزاروں ڈیالسس کے مریضوں کو مشکلات میں ڈال دیا ہے۔

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کا اثر؛ طوفانی ہواوں کے ساتھ جاری ہے بارش؛ کئی مکانوں کی چھتیں اُڑ گئیں، بھٹکل میں ایک کی موت

'ٹاوکٹے' طوفان جس کے تعلق سے محکمہ موسمیات نے پیشگی  اطلاع دی تھی کہ    یہ طوفان  سنیچر کو کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے ساحلوں سے ٹکرارہا ہے،   اس اعلان کے عین مطابق  آج سنیچر صبح سے  بھٹکل سمیت اُترکنڑا اور پڑوسی اضلاع اُڈپی اور دکشن کنڑا میں طوفانی ہواوں کےساتھ بارش جاری ہے جس ...

ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کی دستک ۔ محکمہ موسمیات نے جاری کیا 16 مئی تک ریڈ الرٹ

ساحلی کرناٹکا کی طرف  بڑھتے  'ٹاوکٹے' طوفان کے پیش نظرمحکمہ موسمیات نے 16مئی تک ریڈ الرٹ جاری کرتے ہوئے مچھیروں اور عوام الناس کو دریا، سمندراورنشیبی و ساحلی علاقوں سے دور رہنے کی ہدایت دی ہے۔

بھٹکل: شمالی کینرا میں کووڈ وباء کا بدلتا منظر نامہ : سب سے آخری پوزیشن والا ضلع پہنچ گیا سب سے آگے ؛ کون ہے ذمہ دار ؟

کورونا کی دوسری لہر جب ساری ریاست کو اپنی لپیٹ میں لے رہی تھی تو ضلع شمالی کینرا پوزیٹیو معاملات میں گزشتہ لہر کے دوران سب سے آخری پوزیشن پر تھا۔ لیکن پچھلے دو تین دنوں سے بڑھتے ہوئے پوزیٹیو اورایکٹیو معاملات کی وجہ سے اب یہ ضلع ریاست میں سب سے  اوپری درجہ میں پہنچ گیا ہے۔ بس ...

کورونا کرفیو کی وجہ سے لاری ڈرائیوروں کو سفرکے دوران کھانے پینے اور لاری کی مرمت کا مسئلہ درپیش:ڈرائیور، کلینر اور گیاریج والوں کی زندگی پنکچر

کورونا وائرس پر لگام لگانے کے لئے حکومتوں کی طرف سے  نافذ کئے گئے سخت کرفیو کی وجہ سے ہوٹل ، ڈھابے ،گیاریج ، پنکچر کی دکانیں وغیرہ بند ہیں ، جس کے نتیجے میں  ضروری اشیاء سپلائی کرنےوالی لاریوں کے ڈرائیوروں کو سفر کے دوران میں کئی مشکلات درپیش ہیں۔

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کا اثر؛ طوفانی ہواوں کے ساتھ جاری ہے بارش؛ کئی مکانوں کی چھتیں اُڑ گئیں، بھٹکل میں ایک کی موت

'ٹاوکٹے' طوفان جس کے تعلق سے محکمہ موسمیات نے پیشگی  اطلاع دی تھی کہ    یہ طوفان  سنیچر کو کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے ساحلوں سے ٹکرارہا ہے،   اس اعلان کے عین مطابق  آج سنیچر صبح سے  بھٹکل سمیت اُترکنڑا اور پڑوسی اضلاع اُڈپی اور دکشن کنڑا میں طوفانی ہواوں کےساتھ بارش جاری ہے جس ...

لوگ کورونا سے مرے جارہے ہیں اور ریاستی حکومت کو لگی ہے ذات پات کے اعداد و شمار کی فکر

پورے ملک کی طرح ریاست میں بھی کورونا کا قہر جاری ہے ۔ عوام آکسیجن، اسپتال میں بستر اور دوائیوں کی کمی سے تڑپ رہے ہیں۔ لیکن ریاستی حکومت کو الیکشن اور ذات پات کی تفصیلات کی فکر لاحق ہوگئی ہے تاکہ آئندہ انتخاب کے لئے تیاریاں مکمل کی جائیں۔

کورونا پر قابو پانے میں ایڈی یورپا مکمل طورپر ناکام: ایم بی پاٹل

ریاست میں کورونا وباء سے نمٹنے میں ایڈی یورپا کی بی جے پی حکومت مکمل ناکام ہوچکی ہے۔سابق ریاستی وزیر و مقامی بی ایل ڈی ای میڈیکل کالج کے سربراہ ایم بی پاٹل نے آج یہاں ایک اخباری کانفرنس کو خطاب کرتے ہوئے ڈنکے کی چوٹ پر یہ بات بتائی۔

کرناٹک میں 120ٹن لکویڈ آکسیجن کی آمد

ریاست کرناٹک میں میڈیکل آکسیجن کی قلت ہنوز جاری ہے۔ حکومت آکسیجن منگوانے کی ہر ممکن کوشش کرنے کا دعویٰ کررہی ہے۔ ریاست کی راجدھانی بنگلورو میں پہلی آکسیجن ایکسپریس کی آمد ہوئی۔