آئی ایم اے کیس کی ایس آئی ٹی جانچ تقریباً مکمل، 9ستمبر کو چارج شیٹ ممکن

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th August 2019, 11:06 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،26؍اگست(ایس او نیوز) کروڑوں روپے کے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ میں لگی ریاستی پولیس کی خصوصی تحقیقاتی ٹیم(ایس آئی ٹی) اس معاملے میں 9ستمبر کو چارج شیٹ دائر کرنے کی تیاری میں لگی ہے تو دوسری طرف اس کیس کی جانچ ابھی ابھی اپنے ماتحت لینے والی مرکزی تحقیقاتی ایجنسی سی بی آئی کی طرف سے اس کیس میں ایک سابق وزیر اعلیٰ اور شہر کے ایک سابق پولیس کمشنر سے پوچھ گچھ کرنے کی تیاری میں مصروف ہے۔بتایا جاتا ہے کہ اس کیس کے سلسلے میں اپنی جانچ کو پورا کرتے ہوئے ایس آئی ٹی ملزمین اور گواہوں کی طرف سے لئے گئے بیانات اور یکجا کئے گئے شواہد پر مشتمل 15تا20ہزار صفحات پر مشتمل چارج شیٹ عدالت میں دائر کرنے کے لئے تیار ہو گئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ آئی ایم اے کے سربراہ منصور خان نے ایس آئی ٹی کی پوچھ تاچھ کے دوران یہ بتایا ہے کہ2018کے اسمبلی اتخابات کے مرحلے میں انہوں نے ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ کو رقم روانہ کی۔ اس کے علاوہ انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ انہوں نے شہر کے ایک سابق پولیس کمشنر کو بھی بھاری رقم کی ادائیگی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تین لوگوں کے ذریعہ انہوں نے سابق وزیر اعلیٰ کو پانچ کروڑ روپے روانہ کئے۔ حکومت کی طرف سے اسی معاملے کی جانچ سی بی آئی کو سونپ دئے جانے کے بعد ایس آئی ٹی کے افسروں نے کہا ہے کہ اس کیس کی جانچ کے مرحلے میں جو بھی بیانات لئے گئے ہیں وہ تما مسی بی آئی کو سونپ دئیے جائیں گے۔ایس آئی ٹی کے افسروں نے کہا ہے کہ منصور خان اس کیس میں ایک ملزم ہیں اور ضروری نہیں کہ ان کے ہر بیان پر اعتبار کرلیا جائے۔ اسی لئے اب چونکہ معاملے کو ریاستی حکومت نے سی بی آئی کے سپرد کیا ہے اسی لئے اب تک ہوئی جانچ کی مکمل جانکاری سی بی آئی کو سونپنے کے ساتھ ساتھ ایس آئی ٹی کی طرف سے تقریباًپندرہ تا بیس ہزار صفحات پر مشتمل چارج شیٹ بھی عدالت میں دائر کردی جائے گی۔ایس آئی ٹی کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پوچھ گچھ کے دوران منصور خا ن نے بی جے پی کے چند رہنماؤں کو بھی کمپنی کے ڈائرکٹر نظام الدین کے ذریعہ رقم روانہ کئے جانے کا انکشاف کیا ہے۔یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ چند ٹی وی چینلوں کو بھی کروڑوں روپے کی رقم ادا کی گئی ہے لیکن ان کے ان دعووں کی تصدیق کے لئے کوئی ٹھوس ثبوت موجود نہیں۔ریاستی حکومت کی طرف سے اس معاملے کو سی بی آئی کے سپرد کئے جانے کے بعد ایس آئی ٹی نے اپنی جانچ کو تقریباً روک دیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک کے وجیا پور میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ۔سیاسی و سماجی لیڈروں نے کیا 2لاکھ سے زائد افرادسے خطاب 

شہریت سے متعلقہ سی اے اے، این آر سی اور این پی آر قوانین کے خلاف”دستور بچاؤ“ عنوان کے تحت ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ وجیاپور میں منعقد کیا گیا جس سے خطاب کرتے ہوئے سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا نے کہا کہ ایسے قوانین کا نفاذ کرتے ہوئے مرکزی حکومت ملک کے آئین کی دھجیاں اڑانے کا کام ...

کرناٹک کے اقلیتی بجٹ میں 40فیصد تک کٹوتی کے آثار،2019/20کے 2950کروڑ کے مقابلے 2000کروڑ بھی مل گئے تو غنیمت

ایسے مرحلے میں جبکہ وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا کی طرف سے ریاستی بجٹ کی تیاری کا عمل تیزی سے جاری ہے۔ مختلف سرکاری محکموں کے افسروں سے وزیر اعلیٰ کی میٹنگوں کا سلسلہ بھی تکمیل کی طر ف گامزن ہے۔

انڈر ورلڈ ڈان روی پجاری کو بنگلورو لایا گیا؛ عدالت میں پیش ، 14؍ دنوں تک پولیس کی حراست میں

متعدد مقدمات میں پولیس کو مطلوب انڈرورلڈ ڈان روی پجاری کو پیر کی صبح اولین ساعتوں میں کرناٹکا پولیس کی ٹیم سنیگیل سے بنگلورو لے آئی۔ بنگلورو آمد کے بعد اسے شہر کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں اسے 14؍ دن کی پولیس حراست میں دیا گیا۔

ٹرمپ کے بھارت دورے سے ملک کو کوئی فائدہ نہیں : حزب مخالف لیڈر سدرامیا

امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بھارت دورے سے ہمارے ملک کو کوئی فائدہ نہیں ہے۔ مودی بھی جب امریکہ کا دورہ کئے تھے تو  کیا ہمارے ملک کو فائدہ ہواتھا ؟ ۔ ودھان سبھا میں حزب مخالف لیڈر سدرامیا نے ٹرمپ کے دورے کو لے کر سوال کیا۔

آئین نے ہی ایک چائے بیچنے والے کو وزیر اعظم کا عہدہ دیا؛ بیدر ضلع کے بسواکلیان میں سیاہ قوانین کے خلاف جلسہ عام ۔ سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا و دیگر کا خطاب

بیدر شہر کے تعلقہ اسٹیڈیم میں کل شام جوائنٹ ایکشن کمیٹی بسواکلیان کے زیر اہتمام مرکزی حکومت کی جانب سے نافذ کئے گئے سیاہ قوانین سی اے اے ، این آر سی ، این پی آر کے خلاف جلسہ عام منعقد ہوا۔جس میں بسواکلیان کے علاوہ ضلع بیدر ، کلبرگی ، عمرگہ ، سولہ پور، لاتو، نیلنگہ سے بھی عوام ...