جموں و کشمیر تحدیدات کا حوالہ، آئی اے ایس عہدیدار مستعفی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th August 2019, 11:49 AM | ملکی خبریں |

سرینگر،26؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) ایک انڈین ایڈمنسٹریٹیو سرویس آفیسر کنن گوپی ناتھن مشہور ہوگئے۔ حالانکہ وہ کیرالا میں سیلاب زدہ افراد کو راحت رسانی کی کوششوں سے مشہور ہوچکے تھے لیکن انہوں نے اپنا استعفیٰ پیش کرنے کے بعد 21 اگست سے شہرت حاصل کی۔ کنن گوپی ناتھن جموں و کشمیر کی صورتحال پر پریشان تھے۔ وہ معتمد توانائی کے عہدہ پر فائز تھے اور شعبہ شہری ترقیات محکمہ زراعت دادرا و نگر حویلی میں برسرکار تھے، انہوں نے اپنا مکتوب استعفیٰ مرکزی معتمد داخلہ کو روانہ کردیا۔ انہوں نے تحریر کیا ’ میں آزادیٔ اظہار کو محفوظ رکھنا چاہتا ہوں‘۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے تقرر کو یہ سمجھتے ہوئے قبول کرچکے تھے کہ وہ دیگر افراد کی طرح اپنی آواز اٹھانے کی آزادی رکھتے ہونگے لیکن یہاں انہیں آواز اٹھانے کی آزادی نہیں ہے۔ اس لئے وہ مستعفی ہو رہے ہیں تاکہ ان کی آزادیٔ اظہار بحال ہوسکے‘ ۔ روزنامہ انڈین ایکسپریس سے انہوں نے کہا کہ اگر آپ مجھ سے پوچھیں گے ، آپ اس وقت کیا کر رہے تھے جبکہ دنیا کی بڑی جمہوریت میں پوری ریاست پر تحدیدات کا اعلان کیا تھا اور عوام کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کم از کم اپنی ملازمت سے استعفی دینے کے بعد میں جواب دینے قابل ہوگیا۔ میں جانتا ہوں کہ اس سے کوئی اثر مرتب نہیں ہوگا۔ یہ صرف آدھے دن کی خبر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لیکن میں استعفیٰ دینا چاہتا ہوں۔ انہوں کہا کہ انہیں کشمیر کی صورتحال پر پریشانی تھی جبکہ آبادی کا بڑا حصہ دنیائی حقوق سے محروم ہوگیا تھا ۔ روزنامہ ہندو کے بموجب گوپی ناتھن نے کہا کہ اس کا جواب دینے والا کوئی نہیں تھا ۔ ہم نے دیکھا ہے کہ سب لوگ خوش اور مگن تھے۔ میں یہ بھی دیکھتا ہوں کہ کئی چھوٹی گلیاں تھیں اور وہ بھی ان کا ایک حصہ تھے۔ ان کے خیال میں ان کے پاس ایک روزنامہ تھا۔ صفحہ اول پر جو کچھ شائع ہوتا تھا، وہ صرف عدد 1919 تھا کیونکہ اس دن مہینہ کا 19 واں دن تھا ۔ انہوں نے اشارہ دیا کہ سیاسی قائدین کی گھر پر نظربندی کے بارے میں اور سابق سیول سروینٹ شاہ فیصل کی نظربندی کے بارے میں ایک لفظ بھی نہیں تھا۔ ہم نے یہ سمجھ کر ملازمت قبول کی تھی کہ عوام کی آواز بنیں گے۔ لیکن خود ہماری آواز چھن گئی۔ گوپی ناتھن نے کہا کہ اگر ذمہ دار عوام کی گرفتاری کا حکومت کو حق ہے تو میں اتنا جانتا ہوں کہ یہ درست نہیں ہے اور میں اس کا ایک حصہ نہیں چاہتا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ کیرالا واپس آگئے ہیں کیونکہ یہاں 2018 ء میں سیلاب آیا تھا، وہ راحت رسانی میں 8 دن مصروف رہے اور انہیں احساس تک نہیں تھا کہ وہ ایک آئی اے ایس ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ممتا بنرجی کا بڑا اعلان، ریاستی کسانوں کو ہر سال 10 ہزار روپے دے گی حکومت

اسمبلی انتخابات سے قبل کسانوں سے کئے گئے وعدے کو پورا کرتے ہوئے وزیر اعلی ممتا بنرجی نے جمعرات کو ’کرشک بانڈو‘ منصوبے کا اعلان کیا ہے۔ اس کے تحت ریاست کے کسانوں کو ہر سال 10 ہزار روپے کی مالی امداد دی جائے گی۔ ریاست کے 60 لاکھ کسان اس سے مستفید ہوں گے۔

مہاراشٹر: پٹاخہ فیکٹری میں دھماکہ سے افرا تفری، کئی کلو میٹر تک گھروں کو پہنچا نقصان

مہاراشٹر کے پالگھر ضلع واقع ڈھانو میں ایک پٹاخہ فیکٹری میں زوردار دھماکہ کی وجہ سے آگ لگ گئی ہے۔ یہ فیکٹری ڈھانو ہائیوے سے تقریباً 15 کلو میٹر دور جنگل میں موجود ہے۔ دھماکہ کے بعد لگی آگ سے تقریباً 10 سے 12 کلو میٹر تک کے علاقے میں موجود گھروں میں نقصان ہونے کی خبر سامنے آ رہی ...

ریاستوں کے پاس کورونا کے 2.18 کروڑ سے زیادہ ٹیکے دستیاب: وزارت صحت

 صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت نے جمعرات کے روز کہا کہ ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ابھی بھی کووڈ-19 کے ٹیکے کے 21828483 ڈوز دستیاب ہیں۔ وزارت نے کہا کہ ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں اگلے تین دنوں میں کم از کم 5671350 اور ڈوز مل جائیں گے۔ آج صبح کے اعداد و شمار ...

مایاوتی نے پھر سماج وادی پارٹی کو تنقید کا نشانہ بنایا

بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سپریمومایاوتی نے جمعرات کو ایک بار پھر پارٹی سے نکالے گئے باغی اراکین اسمبلی سے ایس پی سربراہ کی ملاقات اور ان کو پارٹی میں شامل کرنے کی چہ مہ گوئیوں کے درمیان ایس پی کو اپنی سخت تنقیدوں کا نشانہ بنایا۔

دہلی فساد: آصف اقبال تنہا اور نتاشا ناروال سمیت تینوں سماجی کارکنان کو راحت، عدالت کا فوری رہائی کا حکم

دہلی تشدد سے متعلق معاملہ میں جامعہ کے طالب علم آصف اقبال تنہا اور پنجرا توڑ کی سماجی کارکن نتاشا ناروال اور دیونگنا کالیتا کو بڑی راحت حاصل ہوئی ہے۔ دہلی کی کڑکڑڈومہ عدالت نے ان تینوں کو ؎فوری رہا کرنے کا حکم صادر کیا ہے۔ دہلی ہائی کورٹ سے درخواست ضمانت منظور ہونے کے بعد بھی ...

ٹیکہ کاری کے معاملہ میں دنیا کے 89 ممالک ہندوستان سے آگے: کپل سبل

 کانگریس لیڈر کپل سبل نے بی جے پی پر ٹیکہ کاری کے معاملہ میں سیاست کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور ہندوستان کو ٹیکہ کاری کے معاملہ میں دنیا میں 89 ممالک سے پیچھے قرار دیا۔ اس سے قبل اس معاملہ پر پی اے سی (پبلک اکاؤنٹ کمیٹی) میں بحث کرنے کی برسراقتدار جماعت کے ارکان پارلیمنٹ نے ...