سرکاری حکم نامے کے بعد نوکری کھونے کے خطرہ کے پیش نظرمینگلور میں ہوم گارڈ س نے دیا دھرنا

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 1st June 2020, 8:42 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو :یکم جون (ایس اؤ نیوز) سرکاری حکم نامے سے مصیبت میں پھنسے ہوم گارڈ س نے سیکڑوں کی تعدا میں جمع ہوکر میری ہیل کے ہوم گارڈ دفتر کے سامنے دھرنا دیا اور  سرکاری حکم نامے پر  سخت  اعتراض جتاتےہوئے حکم نامے کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق ریاستی حکومت نے لاک ڈاون کی وجہ سے ہوم گارڈس کی تعداد کو کم کرنے کا فرمان جاری کیا تھا جس کے نتیجے میں  سیکڑوں ہوم گارڈس کو اپنا روزگار کھونے کا خطرہ پیدا ہوگیا۔ بتایا گیا ہے کہ  مینگلور میں ایس پی کے  زیر ماتحت 250 ہوم گارڈس اورہ پولس کمشنر کے زیر ماتحت 153 ہوم گارڈس کام کرتے ہیں۔ اب حکومت کے اس نئے فرمان سے 223 لوگوں کی نوکری جانے کا اندیشہ ہے، جس پر ناراض سینکڑوں  ہوم گارڈس نے آج احتجاج کرتے ہوئے ہوم گارڈ دفتر کے سامنے دھرنا دے دیا۔

اس موقع پر ڈسٹرکٹ ہوم گارڈ کے کمانڈر مُرلی موہن چُنٹارو نے  احتجاجیوں کو دھرنا ختم کرنے کی اپیل کی اور اعلیٰ حکام تک ان کی آواز پہنچانے کا یقین دلایا۔ انہوں نے اس بات کا مشور ہ بھی دیا کہ آدھی تنخواہ پر    تمام لوگوں کی ملازمت بحال رکھنے   روٹیشنل بنیاد پر کام کیا جائے، مگر گارڈس نے ان کی بات کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے اپنے مطالبے پر ہی آڑ گئے کہ تمام گارڈس کو  فُل ٹائم ملازمت بحال رکھتے ہوئے پوری تنخواہ دینی ہوگی۔

اس موقع پر ایک خاتون ہوم گارڈ نے بتایا کہ  ہائی کورٹ نے حکومت کو ہوم گارڈس کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کا حکم دیا تھا، لیکن ہم  پرانی تنخواہ پر ہی کام کرنے کے لئے تیار ہیں، اور ہم اپنی تنخواہ بڑھانے کے تعلق سے کوئی بات نہیں کررہے ہیں۔ہمارا ایک ہی مطالبہ ہے کہ ہمیں ماہ میں پورے 30 دن کی ملازمت دی جائے، اس خاتون نے یہ بھی بتایا کہ ہمیں آدھی تنخواہ پر کام کرنے کی پیش کش کی جارہی ہے حالانکہ ہماری تنخواہ ہی اتنی کم ہے کہ گھر کا گذارہ مشکل سے چلتا ہے، اس میں بھی آدھی تنخواہ کی بات کریں گے تو ہم کہاں جائیں گے ؟ اس نے یہ بھی بتایا کہ لاک ڈاون کے دوران ہمیں اپنی تنخواہ بھی نہیں دی گئی ہے۔

خیال رہے کہ دکشن کنڑا ضلع میں کل ایک ہزار سے زائد ہوم گارڈس اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ حکم نامے کے تحت ایس پی کے دائرہ کار میں کام کرنے والے 250میں صرف 80ہوم گارڈ س کو ہی کام دیاجائے گا بقیہ سب کو گھر روانہ کیا جائے گے۔ اسی طرح کمشنریٹ کے تحت 153اہلکار کام کرتے ہیں ان میں 100ہوم گارڈ س کو باقی رکھتے ہوئے بقیہ سبھی کو نکال دینے کا حکم دیا گیا ہے۔

مظاہرین اعلیٰ آفسران کے انتظار میں دھرنے پرہی بیٹھے ہوئے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل:کورونا سے متاثرہ لوگ سونارکیری اسکول سے ویمن سینٹر منتقل؛ جےڈی نائیک سمیت کئی لیڈران کی رپورٹ آنی باقی

بھٹکل میں  کورونا کے تیسرے حملے میں جہاں ایک طرف دو لوگ جاں بحق ہوگئے وہیں   اب تک  بھٹکل میں 63 لوگ کورونا سے متاثر پائے گئے ہیں، بھٹکل کی ایک معروف  شخصیت مینگلور اسپتال میں ایڈمٹ ہیں تو دیگر لوگ بھٹکل سونارکیری اسکول اور بھٹکل تعلقہ سرکاری اسپتال میں داخل کئے گئے تھے ۔ اب ...

آج 16 پوزیٹیو آنے والوں میں تین دبئی سے اور آٹھ وجے واڑہ سے لوٹے لوگ شامل

بھٹکل کے آج جن 16 لوگوں کی رپورٹ کورونا  پوزیٹیو آئی ہے، اُن میں سے تین لوگ دبئی سے آئے ہوئے لوگ ہیں، آٹھ لوگ وجئے واڑہ ،  تین لوگ  اُترپردیش  اور مہاراشٹرا سے لوٹا ہوا ایک شخص بھی آج کی لسٹ میں شامل ہیں۔

کورونا اَپ ڈیٹ:جنوبی کینرامیں آج صبح سے اب تک ہوئی 2افراد کی موت۔ضلع میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد ہوئی 22

جنوبی کینرا میں کورونا وباء کے اثرات بہت زیادہ سنگین صورت اختیار کرتے جارہے ہیں۔ آج صبح سے اب تک کووِڈ کے 2 مریض موت کا شکار ہوگئے ہیں جس کے بعد ضلع میں وباء کی وجہ سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 22ہوگئی ہے۔

بھٹکل میں نجی اسپتال کی نرس کو لگ گیا کورونا کا مرض۔ایس ایس ایل سی کی طالبہ نرس کی بیٹی کو کیا گیا ہوم کوارنٹین

ایک نجی اسپتال میں خدمات انجام دینے والی نرس کو کووِڈ کا مرض لاحق ہونے کے بعدایس ایس ایل سی کا امتحان دے رہی اس کی بیٹی کو امتحان سے باز رکھتے ہوئے ہوم کوارنٹین کیا گیا ہے۔

بھٹکل ٹاؤن، ہیبلے پنچایت اور جالی پنچایت علاقوں میں لاگو رہے گارات کا کرفیو۔سیل ڈاؤن کیے جارہے ہیں ’ہاٹ اسپاٹس‘

بھٹکل تعلقہ میں کورونا وباء کی بدلتی صورتحال پر قابو پانے کے لئے ضلع انتظامیہ نے لاک ڈاؤن قوانین میں دوبارہ کچھ سختی برتنے کافیصلہ کیا ہے۔اسی کے تحت جمعہ کے دن شام میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر بھرت ایس نے عوام کے لئے جو ہدایات جاری کیں اس کے مطابق ...

بھٹکل سے 200 سے زائد تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ 16 کی رپورٹ پوزیٹیو آنے کی خبر

حال ہی میں بھٹکل میں   کورونا کے  جو تازہ معاملات سامنے آئے ہیں، اُس  میں مزید اضافہ کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق  اب تک 184 لوگوں کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے گئے ہیں جس میں سے بعض کی رپورٹ آچکی ہیں، اور بعض کی رپورٹس شام تک    آنے کی توقع ہے۔