سعودی عرب کے متعدد علاقوں میں شدید بارش کے بعد سیلاب، کئی مقامات پر برف باری

Source: S.O. News Service | Published on 20th April 2021, 12:48 PM | خلیجی خبریں |

ریاض، 20؍اپریل (ایس او نیوز؍ایجنسی) سعودی عرب کے متعدد علاقوں میں شدید برف باری کے بعد سیلاب آگیا ہے۔حائل شہر اورعسیرریجن میں برفباری کے بعد پہاڑوں اور نخلستانوں نے موٹی سفیدچادر اوڑھ لی ہے۔

سعودی شہریوں اور مکینوں نے مکہ مکرمہ ،العقیق اور دوسرے علاقوں میں شدید بارش کے بعد سیلاب کی تصاویر اور ویڈیوز سوشل میڈیا پر شیئر کی ہیں۔

شمال مغربی صوبہ حائل اور جنوب مغربی ریجن عسیر میں شدید برف باری ہوئی ہے اور میدانوں اورپہاڑی علاقوں میں برف کی موٹی تہ جم چکی ہے۔ان علاقوں کے مکینوں نے بھی برفباری کے مناظرکی ویڈیوز سوشل میڈیا پر پوسٹ کی ہیں۔

ویڈیوز میں حائل میں واقع بحرہ بنی رشید کے پہاڑوں پر برف کی موٹی تہ جمی ہوئی دیکھی جاسکتی ہے۔سعودی عرب میں یہ سب سے بڑا آتش فشاں پہاڑ ہے۔

منطقہ عسیرمیں واقع ابھا ، خمیس مشیط ،تنومہ اور النماص سمیت متعدد گورنریوں اور شہروں میں شدید بارش کے ساتھ برف باری ہوئی ہے۔ سعودی عرب کے قومی موسمیات مرکز کی اطلاع کے مطابق جازان ، عسیر،الباحہ اور مکہ مکرمہ سمیت متعدد علاقوں میں شدید گرج چمک کے ساتھ طوفانی بارشیں متوقع ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

مسجد حرام کی نظافت کے لیے رمضان میں 70 ہزار لیٹر سے زیادہ مصفا مواد کا روزانہ استعمال

  رمضان المبارک کے دوران میں المسجد الحرام کی نظافت کے لیے روزانہ 70 ہزار لیٹر سے زیادہ جراثیم کش مصفا مائع مواد استعمال کیا جارہا ہے۔ الحرمین الشریفین کے امور کی ذمہ دار صدارت عامہ المسجدالحرام کی صفائی کا بھرپور اہتمام کررہی ہے تاکہ عبادت گزاروں کو کروناوائرس سے ہر طرح سے ...

حرمین شریفین میں ماہ صیام کے آخری عشرے کے دوران زائرین کے لیے خصوصی انتظامات

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین نے ماہ صیام کے تیسرے اور آخری عشرے کے موقعے پر حرم مکی اور مسجد نبوی میں زائرین، نمازیوں اور معتمرین کی سہولت کے لیےشایان شان انتظامات کیے ہیں۔ رمضان المبارک کے آخری عشرے میں حرم مکی میں نمازیوں اور معتمرین کی مدد کے لیے سات ہزار سے زاید رضا ...

مسجد نبوی ؐ میں رمضان کے آخری عشرہ میں عبادت گزاروں کے لیے تمام تیاریاں مکمل

مدینہ منورہ   میں مسجد نبوی ؐ   میں رمضان المبارک کے آخری عشرے میں عبادت گزاروں کے لیے تمام تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔توقع ہے کہ آخری عشرے میں بڑی تعداد میں فرزندانِ توحیدمسجد نبوی ؐ  میں آئیں گے۔