ایپ پر مشتمل آٹو کرایہ مقرر کرنے4ہفتوں کا وقت، ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کو اولا اور اوبر کمپنیوں کے ساتھ اجلاس طلب کرنے ہدایت دی

Source: S.O. News Service | Published on 9th November 2022, 1:17 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 9؍نومبر(ایس او نیوز)ایپ پر مشتمل آٹو رکشا خدمات کو مناسب کرایہ عائد کرنے کے سلسلہ میں ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کو اولا اور اوبر کمپنیوں کے ساتھ اجلاس منعقد کرکے فیصلہ لینے دوبارہ4ہفتوں کا وقت دیا ہے۔ایپ پر مشتمل اولا اور اوبر آٹو رکشا خدمات پر روک لگائے ریاستی حکومت کی جانب سے جاری احکامات رد کرنے اے این آئی ٹکنالوجیس پرائیویٹ لمیٹیڈ اور انڈیا ٹکنالوجیس پرائیویٹ لمیٹیڈ کی جانب سے دائر علاحدہ عرضیوں پر جسٹس سی ایم پو نچا کی قیادت والی واحد رکنی بنچ نے سماعت کی۔

سماعت کے دوران سرکاری وکلاء اور عرضی گزاروں کے وکلاء کی گزارشات کو قبول کرتے ہو ئے بنچ نے بتا یا کہ اولا اور اوبر آٹو رکشا خدمات فراہم کرنے کے سلسلہ میں تمام کے ساتھ اجلاس کی اطلاع ریاستی حکومت نے دی ہے۔ بنچ نے بتا یا کہ اس درمیان عرضی گزاروں نے کرایہ میں اضافہ کی گزارش کی ہے، اس لئے مسئلہ حل کرنے حکومت کی گزارش کے تحت4ہفتوں ں کا وقت دیا گیا ہے۔

بنچ نے عرضی گزاروں کی جانب سے عبوری گزارش اور سماعت میں شامل کرنے بھارت مو ٹر ٹرانسپورٹ ڈرائیورس اسو سی ایشن کی جانب سے دائر عرضی پر حکومت کو ہدایت دی کہ5 دنوں کے اندر تکرار عرضی داخل کرے اور سماعت16نومبر تک ملتوی کی۔ سماعت کے دوران سرکاری وکلاء نے بنچ کو بتا یا کہ کرایہ کے مسئلہ پر تمام کے ساتھ محکمہ ٹرانسپورٹ کے کمشنر کی جانب سے طلب کر دہ اجلاس میں کو ئی فیصلہ نہیں کیا گیا، اس لئے دوبارہ 14اور15نومبر کو ٹرافک پو لیس کے ساتھ اجلاس منعقد کیا جا ئے گا۔

دریں اثنا ایپ پر مشتمل آٹو رکشا خدمات کو شروع کرنے اجازت طلب کرتے ہو ئے ہائی کورٹ کی جانب سے ہدایت دے کر ایک ماہ گزرنے کے باوجود کرایہ مقرر نہ کئے جانے سے یہ خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ کمپنیاں حکومت پر دبا ؤ ڈال رہی ہیں۔ گزشتہ29 اکتوبر کو اولا،اوبر آٹو یونینوں کے ساتھ محکمہ ٹرانسپورٹ کے چیف سکریٹری نے اجلاس طلب کیا تھا اور حتمی کرایہ کی فہرست7نومبر کو ہائی کورٹ میں داخل کرنے کا وعدہ کیا تھا، لیکن اب فہرست پیش نہ کرتے ہوئے ریاستی حکومت نے4ہفتوں کا وقت مانگا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے دوران ہندوؤں کا سب سے زیادہ قتل ہوا، یہی ان کا اصلی چہرہ ہے: سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس لیڈر ایس سدارامیا نے منگل کے روز ریاست میں برسراقتدار بی جے پی پر زوردار حملہ کیا۔ انھوں نے بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں بی جے پی حکومت میں سب سے زیادہ ہندوؤں کا قتل کیا گیا۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے دور میں نہ صرف ہندو، ...

بی جے پی کے ریاستی صدر نلین کمار کٹیل کی بھٹکل آمد؛ آنے والے انتخابات کو لے کر کٹیل نے کہا؛ ساورکر اور ٹیپو نظریات کے درمیان ہوگا الیکشن

اس بار ریاستی انتخابات کانگریس اور بی جے پی کے بجائے ساورکر اور ٹیپو  نظریات کے درمیان ہوں گے۔ یہ بات  بی جے پی ریاستی یونٹ کے صدر نلین کمار کٹیل نے کہی۔ شرالی میں منعقدہ بی جے پی پروگرام میں شریک ہوتے ہوئے  کٹیل نے سوال کیا کہ آپ کو محب وطن ساورکرچاہئے  یا جنونی ٹیپو  چاہئے ...

 اڈانی کمپنی کے خُرد بُرد معاملہ پر کانگریس کا بنگلورو میں احتجاج

ریاست کرناٹک کے دارلحکومت بنگلورو کے میسور بینک سرکل پر کانگریس کی جانب سے اڈانی کمپنی سے جڑے معاملات پراحتتجاج کیاگیا جس میں پارٹی کے رہنما و کارکنان شریک تھے۔ احتجاج کے دوران کانگریس کے رہنماؤں نے کہا کہ راہل گاندھی نے پہلے ہی اس معاملہ سے متعلق پیشن گوئی کی تھی۔

منگلورو: نیشنل ایجوکیشن پالیسی 'ہندوتوا راشٹرا' بنانے کا ٹوُل کِٹ ہے؛ ماہر تعلیم ڈاکٹر نرنجنارادھیا 

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کی آل انڈیا یوتھ فیڈریشن (اے آئی وائی ایف) جنوبی کینرا و اڈپی، سمدرشی ویدیکے منگلورو، کرناٹکا تھیولوجیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ منگلورو کے اشتراک سے 'نیشنل ایجوکیشن پالیسی (این ای پی) اور اسکولی تعلیم' کے عنوان پر شہر میں منعقدہ  سیمینار میں اپنے خیالات کا ...

پتور: آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کو شکست دینے کے لئے متحد ہوجائیں - کانگریس پارٹی کارکنان سے لیڈروں کی اپیل 

کانگریس پارٹی لیڈران نے  پتور کے نیلیاڈی سے  ملناڈ اور ساحلی علاقے کے لئے اپنی 'پرجا دھونی یاترا' کا دوسرا مرحلہ شروع کرتے ہوئے اپنی کارکنان کو آواز دی کہ وہ آپسی اختلافات بھول کر بی جے پی کی  "بد عنوان، غیر فعال، غیر مخلص، غیر موثر اور عوام سے دور" حکومت کو ہٹانے کے لئے متحد ...