ہاتھرس سانحہ: سی بی آئی جانچ کی نگرانی سپریم کورٹ کرے، یوپی حکومت کا حلف نامہ

Source: S.O. News Service | Published on 14th October 2020, 4:48 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،14؍اکتوبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) ہاتھرس میں دلت لڑکی کی اجتماعی عصمت دری اور قتل کے معاملہ میں سپریم کورٹ میں کل ہونے جا رہی سماعت سے قبل اتر پردیش حکومت نے حلف نامہ داخل کیا ہے۔ عدالت عظمیٰ نے ریاستی حکومت سے متاثرہ کے کنبہ کو تحفظ اور وکیل فراہم کرنے کے حوالہ سے جواب طلب کیا تھا۔ ریاستی حکومت نے ان پہلؤں کا جواب دینے کے علاوہ سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ سی بی آئی جانچ کی نگرانی وہ ہی کرے اور جانچ مکمل کرنے کے لئے مدت بھی طے کر دی جائے۔

گزشتہ ہفتہ ہاتھرس معاملہ پر دائر کی گئی مفاد عامہ کی عرضیوں پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ایس اے بوبڑے کی سربراہی والی بنچ نے حکومت سے تین پہلؤں پر جواب طلب کیا تھا۔ عدالت عظمیٰ نے کنبہ اور گواہان کی سلامتی کے بارے میں پوچھا تھا۔ عدالت نے یہ بھی پوچھا تھا کہ آیا متاثرہ کے کنبہ نے وکیل مقرر کر لیا ہے یا نہیں؟ نیز کیا انہیں اس مسئلہ پر کسی اور مدد کی ضرورت ہے؟ علاوہ ازیں ریاستی حکومت سے مقدمہ کی موجودہ صورت حال کے بارے میں بھی پوچھا گیا تھا۔

یوپی حکومت نے جواب میں بتایا کہ اس نے متاثرہ کنبہ کے گاؤں اور گھر پر حفاظت کے پورے انتظامات کیے ہیں۔ پولیس اور ریاستی نیم فوجی دستوں کی کئی ٹیمیں تعینات کی گئی ہیں۔ گھر کے باہر پی اے سی کی ایک ٹیم مستقل طور پر قیام کر رہی ہے۔ متاثرہ کے والد، ماں، دو بھائیوں، بھابی اور دادی کو نجی محافظ فراہم کیے گئے ہیں۔ گھر کے باہر فائر بریگیڈ کی ایک گاڑی مستقل طور پر تعینات کی گئی ہے۔ گھر کے باہری حصہ میں 8 سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے گئے ہیں۔ ایسا کرتے وقت اس بات کا دھیان رکھا گیا ہے کہ کنبہ کی رازداری کی خلاف ورزی نہ ہو۔ یوپی حکومت نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ متاثرہ کنبہ نے اپنی طرف سے وکیل سیما کشواہا اور راج رتن کو مقرر کیا ہے اور دونوں ان کی طرف سے پیش ہو رہے ہیں۔

اپنے گزشتہ حلف نامہ میں یوپی حکومت نے اس بات کا اعادہ کیا تھا کہ وہ متاثرہ کو انصاف دلانے کے تئیں سنجیدہ ہے اور اس کی سفارش کے بعد معاملہ کی جانچ سی بی آئی نے شروع کر دی ہے۔ سپریم کورٹ خود اس جانچ کی نگرانی کرے اور جانچ کی مدت طے کر دی جائے۔ سی بی آئی سے کہا جائے کہ وہ ہر 15 دن میں ریاستی حکومت کو صورت حال سے آگاہ کرائے اور یوپی حکومت یہ رپورٹ سپریم کورٹ میں داخل کرتی رہے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

'ریپبلک ٹی وی' کے ادارتی عملہ کے خلاف ایف آئی آر، ممبئی پولس کو بدنام کرنے کا الزام

ممبئی پولس نے آج ریپبلک ٹی وی کے متعدد ادارتی عملے کے خلاف محکمہ پولس کی بدنامی اور اشتعال انگیزی کے الزامات کے تحت ایف آئی آر درج کی ہے۔ این ایم جوشی مارگ پولس اسٹیشن میں ممبئی سی آئی ڈی کے اسپیشل برانچ میں تعنیات پولس سب انسپکٹر ششکانت پوار کی شکایت پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

لاک ڈاؤن کے دوران مودی اور نتیش نے مہاجر مزدوروں کو بے سہارا چھوڑ دیا: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے جمعہ کے روز سے بہار انتخابات کے لئے تشہیر کا آغاز کر دیا۔ تیجسوی یادو کے ساتھ نوادا میں مشترکہ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے وزیر اعظم مودی اور بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار پر زبردست حملہ بولا۔

پاکستان سے لوٹی گیتا کو خودکفیل بنانے کی کوششیں جاری

 پاکستان سے ہندوستان لائی گئی قوت گویائی سے محروم لڑکی گیتا کو مدھیہ پردیش کے اندور میں پانچ سالوں تک ادارہ جاتی بازآبادکاری میں رکھنے کے بعد اب اسے یہیں معاشی طور سے خودکفیل اور معاشرتی بحالی کی جانب لے جانے کی کوشش شروع کردی گئی ہے۔