نصاب پر نظر ثانی سیاسی رسہ کشی نہیں ہے ،ہم سب مل کر تعلیمی نظام تباہ کرنے پر تلے ہیں:وشواناتھ

Source: S.O. News Service | Published on 23rd May 2022, 5:18 PM | ریاستی خبریں |

میسورو،23؍مئی (ایس او نیوز)نصاب پر نظر ثانی سیاسی رسہ کشی نہیں ہے،ہم سب مل کر تعلیمی نظام تباہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں،جو آئندہ نسل کیلئے نقصادہ اور ملک کیلئے خطرناک ثابت ہوسکتاہے۔یہ بات سابق ریاستی وزیر ورکن کونسل ایچ وشواناتھ نے کہی۔

انہوں نے یہاں گذشتہ روز اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ روہت چکرتیرتھ آخر کون ہے؟سنگھ پریوار کا ایک کارکن۔ ماہر تعلیم نہ ہونے والے ہی نصابی کتابیں تیار کرنے کی کمیٹی کے صدر ہیں،اس سے بڑا المیہ کیاہوسکتاہے۔اسکولی نصاب میں زعفرانیت شامل کرنے کی کوشش خطرناک ثابت ہوسکتاہے۔مذہب کی بنیاد پراسباق نصاب میں کسی بھی صورت میں شامل نہ کئے جائیں۔

وشواناتھ نے کہاکہ نارائن گروسماجی انقلا ب کے روح رواں ہیں ان کے تعلق سے سبق شامل کرناغلط نہیں ہے، مگر انہیں نصاب سے نکالاجاناغلط ہے۔ہیڈ گیوار کون ہے؟ اس سے ہمیں کوئی مطلب نہیں ہے،من مانی سے کسے چاہئیں اسے اسکولی نصاب میں شامل کرنا کہاں کا انصاف ہے؟ ہیڈگیوار کا ٹیپو سلطان سے ہر گز موازنہ نہیں کیاجاسکتا،ٹیپوسلطان کی ایک تاریخ ہے اور وہ ایک بہادر بادشاہ اور مجاہد آزادی ہیں اور انہوں نے انگریزوں کے خلاف جنگیں لڑی ہیں،مگر ہیڈگیوار نے کیاکیاہے؟اس کی تاریخ کیاہے یہ کسی کو معلوم نہیں ہے۔ایسے شخص کو نصاب میں شامل کرناغلط ہے اور اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔

وشواناتھ نے مزید کہاکہ میسور ضلع میں بارش کی وجہ سے بڑے پیمانے پر تباہی مچی ہوئی ہے،ضلع نگران کار وزیر کوچاہئے کہ خود دورہ کرکے جائزہ لیں اور متاثرین کو معاوضہ دلانے میں اہم کردار اداکریں۔وزیر اعلیٰ ہر جگہ جاکر مسائل سن رہے ہیں،ضلع نگران کار وزیر لاپتہ ہوچکے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ضلع نگران کا ر وزیر عوامی منتخب نمائندوں کا اجلاس طلب کریں اور مسائل کے فوری حل کیلئے اقدامت اکریں۔وشواناتھ نے کہاکہ اس سے قبل مودی نے اپنے دورہئ میسور کے دوران میسورکو پیریس بنانے کا اعلان کیاتھا،مگر میسو ر اب سلم علاقہ بن چکاہے،مودی کی اس مرتبہ آمد کے دوران یہ بات یاد لائی جائے اور میسور کا دورہ کرایاجائے۔سدارامیاجس وقت ریاست کے وزیراعلیٰ تھے،انہوں نے بنگلور کے برساتی نالوں پر ہوئے قبضے ہٹانے کیلئے مہم شروع کی تھی،ا ن برساتی نالوں پر بارسوخ سیاستدانوں،صنعت کاروں،فلم اداکاروں اور دولتمند بلڈروں کا قبضہ ہونے کی وجہ سے کارروائی روک دی گئی تھی،اس کے برخلاف غریبوں کو گھروں سے نکالاگیاتھااور دولتمندوں کو چھوڑ دیاگیاتھا۔

ایک نظر اس پر بھی

گرام پنچایتوں کیلئے آئین کی نقل تقسیم: وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی

وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا کہ ریاست کے تمام گرام پنچایتوں کی لائبریریوں میں آئین کی نقل کے ساتھ گرام پنچایت 73اور 74ویں ترمیم، پنچایت راج قوانین کی نقول بھی روانہ کرکے وہاں بھی آئین پر مبنی انتظامیہ فراہم کرنا حکومت کا مقصد ہے۔

ووٹر ڈاٹا چوری معاملہ: 4 بی بی ایم پی افسروں سمیت اب تک11افراد گرفتار

ووٹرلسٹوں میں مبینہ ہیراپھیری،چھیڑ چھاڑ اور چیلومے نامی ادارے کے کارکنوں کو سرکاری عہدیداروں کا فرضی شناختی کارڈ دینے کے معاملے کی سختی سے جانچ کرتے ہوئے شہر کی پولیس نے اب تک اس کیس میں 11 افراد کو گرفتار کیا ہے -

بنگلورو: بی بی ایم پی بجٹ میں عوام کو شامل کرنے”مائی سٹی۔مائی بجٹ“ مہم

بروہت بنگلور مہا نگر پالیکے(بی بی ایم پی) بجٹ میں عوامی مشوروں کو شامل کرنے کے مقصد سے جنا گراہا نامی رضاکارانہ ادارے کی جانب سے ہر سال ”مائی سٹی۔مائی بجٹ“(اپنا شہر۔اپنا بجٹ) مہم چلائی جاتی ہے جس کے تحت بی بی ایم پی کے تمام وارڈز میں مہم کے دوران مقامی افراد سے مشورے حاصل کر کے ...

بیلگاوی کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے: کمارسوامی

سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے بی جے پی کوشدیدتنقیدکانشانہ بناتے ہوئے کہاکہ یکساں سیول کوڈ نافذ کرنے جا رہے بی جے پی والو، کیا آپ یہ نہیں کہہ رہے کہ ہم سب ہندوستانی ہیں؟ اگر ایسا ہے تو بیلگام یہاں کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے،ہم سب ہندوستانی ہیں؟

بیلگام: مدرسہ کی 4طالبات سیلفی لینےکے دوران ندی میں غرق؛ ایک کو بچالیا گیا

بیلگام سرحد سے متصل ، مہاراشٹرا کے کتواڑ فالس میں سیلفی لینے کے دوران مدرسہ میں زیر تعلیم  4طالبات توازن کھو کر غرق ہوگئیں  اور اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔ واقعہ سنیچر کو پیش آیا۔ حادثے میں ایک طالبہ کو بچالیا گیا ہے، مگر اس کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔

پونے : پھر گرم ہوا کرناٹکا - مہاراشٹرا سرحدی تنازعہ - کرناٹکا کی بسوں پر پوتا گیا کالا رنگ - مہاراشٹرا کی حمایت میں لکھے گئے نعرے

کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے بیچ جو سرحدی تنازعہ ہے اس پر کرناٹکا کے وزیر اعلیٰ بسوا راج بومئی نے جو بیان دیا تھا اس کے خلاف مہاراشٹرا کے کئی علاقوں میں مراٹھا تنظیموں نے احتجاجی مظاہرے کیے ۔ اسی کے ساتھ  کے ایس آر ٹی سی  کی بین الریاستی بسوں پر بعض جگہ کالا رنگ پوتا گیا اور اس پر ...