برطانوی پارلیمنٹ میں ہندوستانی زرعی قوانین پر بحث ،ہندوستان کا سخت اعتراض، ہائی کمشنر وزارت خارجہ میں طلب

Source: S.O. News Service | Published on 10th March 2021, 11:32 AM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

نئی دہلی،10؍مارچ(ایس او نیوز؍ایجنسی)ہندوستان نے منگل کے روز برطانوی ہائی کمشنر کو طلب کیا تاکہ وہ برطانوی پارلیمنٹیرینز کو اس پر سخت اعتراض کرے کہ وہ گذشتہ سال نافذ ہونے والے تینوں فارم قوانین پر بحث کر رہی ہے۔

وزارت خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سکریٹری خارجہ ہرش وردھن شرنگلا نے واضح کیا کہ برطانیہ کی پارلیمنٹ میں ہونے والی بحث کسی دوسرے ملک کی سیاست میں مجموعی مداخلت کی نمائندگی کرتی ہے۔ شرنگلا نے اس بحث کو ووٹ بینک کی سیاست قرار دیا اور اس بات پر بھی روشنی ڈالی کہ واقعات کی غلط بیانی ہو رہی ہے۔

برطانوی پارلیمنٹ میں ہندوستان میں زرعی اصلاحات کے بارے میں غیرمنظور اور متنازعہ گفتگو کی سخت مخالفت کی۔برطانوی ممبران پارلیمنٹ کے ایک گروپ نے ہندوستان میں کسانوں کے احتجاج میں طاقت کے استعمال پر بحث کی جو لندن میں ہندوستان کے ہائی کمیشن کی طرف متوجہ ہوا۔ہندوستانی کمیشن نے کہا کہ یہ بحث یک طرفہ تھی اور چونکہ برطانوی میڈیا بھی ہندوستان میں کسانوں کے احتجاج کے مقام پر رپورٹنگ کیلئے موجود تھا،ہندوستان میں میڈیا کی آزادی کی کمی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔اس بحث میں حصہ لیتے ہوئے جس میں خارجہ، دولت مشترکہ اور ترقیاتی دفتر کے وزیر نجیل ایڈمز نے نوٹ کیا کہ ہندوستان نے برقرار رکھا ہے کہ زرعی اصلاحات گھریلو معاملہ ہیں۔

وزیر نے کہاکہ جب تک کہ یہ برطانیہ اور ہندوستان کی شراکت کیلئے ایک دلچسپ وقت ہے، لیکن یہ ہمیں مشکل معاملات اٹھانے میں رکاوٹ نہیں ڈالتا،وزیر نے یہ بھی کہا کہ یہ مسئلہ برطانیہ کے وزیر اعظم بورس جانسن اور ہندوستان کے وزیر اعظم نریندرمودی کے مابین واضح گفتگو میں شامل ہوسکتا ہے۔ مودی جب مستقبل میں ملتے ہیں۔اس مباحثے میں برطانوی پارلیمنٹ کے متعدد اراکین پارلیمنٹ کی شرکت دیکھی گئی۔ مغربی لندن میں ایلنگ ساتھل کے حزب اختلاف کے لیبر کے رکن پارلیمنٹ وریندر شرما نے کہاکہ دونوں فریقوں کو پیچھے ہٹنا اور کسی معاہدے پر آنے کی ضرورت کو تسلیم کرنے کی ضرورت ہے مجھے امید ہے کہ حکومت اس مقصد کی مدد کرنے کا عہد کرے گی اور مذاکرات اور معاہدے میں برطانوی مہارت کی پیش کش کرے گی۔دہلی کی سرحد پر 100 دن سے جاری کسانوں کا احتجاج اب بنیادی طور پر لال قلعے کے تشدد کے بعد بین الاقوامی توجہ حاصل کرچکا ہے جب مظاہرین کا دہلی پولیس سے آمنے سامنے تھا جس کے نتیجے میں ایک مظاہر کی ہلاکت ہوئی تھی۔ اس واقعے کے بعد دارالحکومت میں چند مقامات پر انٹرنیٹ سروسز ختم کردی گئیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کورونا کا خاتمہ جولائی تک نہیں ہوگا: ایکسپرٹ

جس طرح کورونا کے نئے معاملوں کی تعداد میں کمی درج ہو رہی ہے اس سے یہ امید بنی ہے کہ ہندوستان میں کورونا کی دوسری لہر کا خاتمہ جلد ہو جائے گا لیکن وبائی بیماریوں کے ماہر شاہد جمیل کا کہنا ہے کہ بھلے ہی ابھی کچھ ریاستوں میں کورونا کے کیس کم ہوتے نظر آ رہے ہوں لیکن دوسری لہر کا ...

سادگی کے ساتھ عید منائیں اور چھوٹی جماعت کے ساتھ عید کی نماز ادا کریں ، سرکردہ مسلم رہنماوں کی مسلمانوں سے اپیل

آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے صدر مولانا رابع حسنی ندوی ۔ جمعیت علماءہند کے صدر مولانا ارشد مدنی ۔ جماعت اسلامی ہند کے امیر سید سعادت اللہ حسینی سمیت دیگر سرکردہ علماء اور مسلم قائدین مسلمانوں نے اپیل کی ہے کہ وہ کرونا کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر احتیاط کریں اور مختصر جماعت ...

لاک ڈاؤن پر ہو سختی سے عمل: اشوک گہلوت

راجستھان میں عالمی وبا کورونا کی دوسری لہر کی چین توڑنے کے لئے آج صبح 5بجے سے لے کر 24 مئی تک سخت لاک ڈاؤن نافذ ہوگیا ہے۔ اس مدت کے دوران، ہنگامی اور ضروری خدمات، میڈیکل، دودھ اور دیگر ضروری خدمات کے لئے رعایت رہے گی۔

افغانستان کے کابل کی مسجد میں دھماکہ، امام سمیت 12 نمازی جاں بحق

افغانستان کے دارالحکومت کابل کی مسجد میں دھماکے کے نتیجے میں امام سمیت 12 نمازی جاں بحق ہوگئے، دھماکہ   جمعہ  کی نماز کی ادائیگی کے دوران کیا گیا۔افغان پولیس  ترجمان کے مطابق کابل کے ضلع شکر درہ میں مسجد کے اندر دھماکہ کیا گیا جس میں مسجد کے امام مفتی نعمان  سمیت ۱۲ نمازی جاں ...

فلسطین میں اسرائیلی فضائی حملے جاری؛ شہید ہونے والوں کی تعداد 119 کو پہنچ گئی؛ بمباری کے باوجود قبلہ اول میں فرزندان توحید نے ادا کی عید الفطر کی نماز

اسرائیل کے غزہ کی پٹی پر جاری فضائی حملوں میں گذشتہ چار روز میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد بڑھ کر113 ہوگئی ہے جن  میں 31 بچے بھی شامل ہیں۔ میڈیا رپورٹوں کے مطابق ایک طرف بمباری جاری تھی اور دوسری طرف غزہ پر بمباری کے دوران  قبلہ اول میں ایک لاکھ سے زائد فرزاندن توحید  عید ...