کورونا مریضوں کو اسپتال سے ڈسچارج کی پالیسی میں تبدیلی؛ ہلکی علامت والے مریضوں کو 10 دنوں میں چھٹی

Source: S.O. News Service | Published on 10th May 2020, 3:22 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی، 10؍مئی (ایس او نیوز؍ایجنسی) وزارت صحت نے کورونا مریضوں کو اسپتال سے چھٹی دینے کی پالیسی میں تبدیلی کی ہے ۔ ایسے مریض جنہیں بہت ہلکی ہلکی یا پھرانفکیشن سے قبل کی علامت ہیں انہیں کو ڈکیئر فیسلٹی میں داخل کیا جائے گا۔ ان کے جسم کا درجہ حرارت اور آکسنج کی سطح کی لگاتار جانچ ہوگی۔ ایسے مریضوں کو 10 دنوں بعد چھٹی دی جاسکتی ہے۔ شرط یہ ہے کہ انہیں 3 دنوں سے بخار نہیں آیا ہو۔  ڈسچارج سے قبل کورونا ٹیسٹ ضروری نہیں ہوگا لیکن گھر جانے کے بعد 7 دنوں تک آئسولیشن میں رہنا پڑے گا۔ کورونا کی اوسط علامت والے مریض آکسیجن بیڈ والے  ڈیڈی کیٹیڈ کوڈ ہیلتھ سنٹر میں بھرتی کئے جائیں گے ۔ اگر بخار 3 دنوں میں اتر جاتا ہے اور اگلے چار دونوں تک آکسیجن لیول 95 فیصد سے زیادہ رہتا ہے تو 10 دنوں بعد چھٹی دی جاسکتی ہے لیکن سانس لینے میں وقت اور آکسیجن کی ضرورت نہیں ہونی چاہئے۔ اوسطً علامت والے معاملے میں بھی اسپتال سے چھٹی سے قبل ٹیسٹ ضروری نہیں ہوگا۔ ایسے مریض جو آکسیجن سپورٹ پر ہیں اور 3 دنوں میں بخار نہیں اترتا انہیں بیماری کی علامت پوری طرح ختم ہونے پر ہی چھٹی دی جائے گی۔ لیکن لگاتار 3 دنوں تک بلڈ میں آکسیجن کی سطح مینٹن ہونا چاہئے۔ ان مریضوں کو پوری طرح صحت مند ہونے کے بعد ہی چھٹی دی جائے گی۔ ڈسچارج سے قبل ایسے مریضوں کا کورونا ٹیسٹ بھی ہوگا۔ ان کی رپورٹ نیگیٹو آنی چاہئے ۔سنگین معاملوں میں کورونا شامل ہوں گے جن میں پہلے سے کسی سنگین بیماری کی وجہ سے امیونٹی کی کمی ہے جیسے ایچ آئی وی مریض ، آرگن ٹرانسپلانٹ والے یا کسی اور سنگین بیمار والے مریض ہوں۔

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر میں بی جے پی کارکنان کو ایک منصوبہ کے تحت نشانہ بنایا جارہا: الطاف ٹھاکر

 بی جے پی جموں و کشمیر یونٹ کے ترجمان الطاف ٹھاکر نے پارٹی کارکنوں پر ہونے والے حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر میں بی جے پی کے کارکنوں کو ایک منصوبہ بند سازش کے تحت نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

مرکزی حکومت کا ہتھیاروں کی درآمد پر پابندی کا فیصلہ ناقابل فہم: سوگت رائے

مرکزی حکومت کے ذریعہ 101ملٹری ہتھیاروں کی درآمدگی پر پابندی عاید کیے جانے پر ترنمول کانگریس نے سوال کھڑے کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ قدم اٹھانے سے قبل ملک میں اسلحہ سازی کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کی ضرورت تھی اور اس کے لئے روڈ میپ تیار کیا جانا چاہیے۔

کشمیر: ڈاکٹر شاہ فیصل نے اٹھایا حیرت انگیز قدم، پارٹی کے صدارتی عہدہ سے دیا استعفیٰ

 کشمیری قوم کے لئے نیلسن منڈیلا بننے کی تمنا رکھنے والے 36 سالہ سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر شاہ فیصل نے گزشتہ برس مارچ میں 'ہوا بدلے گی' نعرے کے تحت لانچ کردہ اپنی جماعت 'جموں و کشمیر پیپلز موومنٹ' کے صدارتی عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ان کی جگہ پر پارٹی کے نائب صدر فیروز پیرزادہ کو ...

یلاپورکے دیہات میں محکمہ جنگلات کے افسران اور عملے کی طرف سے مسلسل ہراسانی کے خلاف بھٹکل میں دیا گیا میمورنڈم

ضلع شمالی کینرا کے یلاپور تعلقہ میں گولاپور نامی دیہاتی علاقے میں رہائش پزیر ایک 70سالہ خاتون اوراس کے خاندان کو محکمہ جنگلات کے افسران اور عملے کی جانب سے مسلسل ہراساں کیے جانے کا الزام لگاتے ہوئے جنگلاتی زمین پر بسنے والے لوگوں کے حقوق کے لیے جدوجہد میں مصروف تنظیم نے وزیر ...

کرناٹک کے وزیر صحت بی سری راملو کورونا پوزیٹیو

کرناٹک کے وزیرصحت بی سری راملوکے کورونا وائرس (کووڈ-19) سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے - سری راملو نے اتوار کو ٹوئٹ کرکے یہ اطلاع دی-انہوں نے بتایا کہ ہلکا بخار ہونے کے بعد کورونا جانچ کرائی گئی تھی، جس میں ان کی رپورٹ پوزیٹیوآئی ہے - وزیر کو بورنگ اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے ۔