مہاراشٹر میں گورنربی جے پی کی کٹھ پتلی بن کر کام کر رہے ہیں: کانگریس

Source: S.O. News Service | Published on 14th November 2019, 11:35 AM | ملکی خبریں |

ممبئی،14/نومبر(ایس ا ونیوز/یو این آئی) کانگریس نے الزام لگایا ہے کہ مہاراشٹر میں حکومت سازی کے معاملے میں گورنر بھگت سنگھ کوشیاری آئینی قدروں پر عمل کرنے کے بجائے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی کٹھ پتلی بن کر کام کر رہے ہیں۔

کانگریس میڈیا سیل کے انچارج رندیپ سنگھ سرجےوالا نے پریس کانفرنس میں کہا کہ مہاراشٹر میں صدر راج لگانا غلط اور غیر آئینی ہے۔ گورنر آئینی نظام کو نظرانداز کرکے دہلی کے اپنے حکمرانوں کے اشارے پر کٹھ پتلی بن کر کام کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کو برازیل کے دورے پر جانا تھا لہذا جلدی بازی میں کابینہ کی میٹنگ بلائی گئی اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کو حکومت بنانے کے لئے دیا گیا وقت مکمل ہونے سے پہلے گورنر نے فیصلہ دیا کہ کوئی بھی پارٹی حکومت نہیں بنا پا رہی ہے۔گورنر نے آئین کی دھجیاں اڑادي ہے۔

ترجمان نے کہا کہ گورنر نے ہر پارٹی کو الگ الگ اکثریت ثابت کرنے کا موقع دیا تو پھر کانگریس کو کیوں نہیں دیا۔ اس کے علاوہ اکثریت ثابت کرنے کے لئے الگ الگ وقت کی حد کیوں مقرر کی گئی۔ بی جے پی کو 48 گھنٹے کا وقت دیا گیا جبکہ شیو سینا کو 24 گھنٹے کا وقت دیا گیا۔ این سی پی کو محض دس گھنٹے کا بھی وقت نہیں ملا اور کانگریس کو تو ایک منٹ کا بھی وقت نہیں دیا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

ریپ کے معاملے پرسوال سے بھاگ جانے والے سشیل مودی نے زبان کھولی،راہل کو چیلنج کرتے ہوئے ٹویٹ کیا، اپنے آپ پر اعتماد کرو، اپنے حقیقی نام پر الیکشن لڑو

پٹنہ سیلاب کے موقعہ پربھاگ جانے والے اورریپ کے واقعے پرسوال سے فرارہوجانے والے نائب وزیراعلیٰ سوشیل کمارمودی کی زبان راہل گاندھی پرکھل گئی ہے۔بے چارے نے ان معاملات پرچپی کے بعدکچھ توبولاہے۔