کانپور انکاؤنٹر: وکاس دوبے مدھیہ پردیش کے اجین سے گرفتار

Source: S.O. News Service | Published on 9th July 2020, 11:39 AM | ملکی خبریں |

اجین،9؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) اتر پردیش کے کانپور میں 8 پولس اہلکاروں کے قتل کا اہم ملزم وکاس دوبے بالآخر پولس کی گرفت میں آ ہی گیا۔ اسے مدھیہ پردیش کے اجین میں مہاکال مندر سے گرفتار کیا گیا اور پھر اجین پولس اسٹیشن لے جایا گیا۔ ایک ہندی نیوزی پورٹل کے مطابق مہاکال مندر کے سیکورٹی گارڈی کی وکاس دوبے پر نظر پڑی تھی اور پھر خاموشی کے ساتھ اس نے پولس کو خبر دے دی۔ خبر ملتے ہی اجین کی پولس نے بہت احتیاط کے ساتھ وہاں پہنچی اور اپنی گرفت میں لے لیا۔ ایک تصویر میں وکاس دوبے مندر کے اندر صوفہ پر بیٹھا ہوا نظر آ رہا ہے اور امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ یہ اس وقت کی تصویر ہے جب پولس نے مندر میں اسے گھیر لیا تھا۔

وکاس کی گرفتاری کے بعد مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے کہا کہ "جن کو لگتا ہے کہ مہاکال کے قدموں میں جانے سے ان کے گناہ مٹ جائیں گے، انھوں نے مہاکال کو جانا ہی نہیں۔ ہماری حکومت کسی بھی مجرم کو بخشنے والی نہیں ہے۔" ساتھ ہی مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ دفتر نے میڈیا کو خبر دی ہے کہ شیوراج سنگھ چوہان نے وکاس دوبے کی گرفتاری سے متعلق اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے بات کی ہے اور بہت جلد مدھیہ پردیش پولس اسے یو پی پولس کے حوالے کر دے گی۔

ہسٹری شیٹر وکاس کی گرفتاری کے بعد مدھیہ پردیش کے وزیر نروتم مشرا کا بھی بیان سامنے آیا ہے۔ انھوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "کانپور قتل واقعہ کے بعد سے ہی ہم نے پورے مدھیہ پردیش اور پولس کو الرٹ پر رکھا تھا، جیسے ہی اندیشہ ہوا اسے اجین کے مہاکال مندر سے گرفتار کر لیا گیا۔" کچھ میڈیا ذرائع کا کہنا ہے کہ وکاس دوبے کے ساتھ اس کا دو ساتھی بھی گرفتار ہو ئےہے۔

قابل ذکر ہے کہ اس سے قبل آج وکاس دوبے کا دو سرا ساتھی پولس انکاؤنٹر میں مارا گیا۔ ایک کا نام پربھات مشرا اور دوسرے کا رنبیر شکلا ہے۔ پربھات مشرا کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ وکاس دوبے کا قریبی تھا اور پولس نے اسے گزشتہ روز فرید آباد کے ہوٹل سے گرفتار کیا تھا۔ وہ حراست سے بھاگنے کی کوشش کر رہا تھا جب پولس نے اس پر گولی چلائی۔ زخمی حالت میں اسے اسپتال لے جایا گیا تھا لیکن وہ بچ نہیں سکا۔ دوسری طرف رنبیر شکلا کو پولس نے ایٹاوا میں ہوئے ایک تصادم کے دوران ہلاک کر دیا۔

ایک نظر اس پر بھی

راجستھان: ’جے شری رام‘ نہ کہنے پر بزرگ مسلم ڈرائیور کے ساتھ مار پیٹ، پاکستان جانے کو کہا!

 راجستھان کے سیر میں ایک 52 سالہ آٹو رکشہ ڈرائیور غفار احمد کچاوا کو ’مودی زندہ آباد‘ اور ’جے شری رام‘ نہ بولنے پر بے رحمی سے پیٹا گیا۔ پولیس نے ہفتہ کے روز یہ اطلاع دی۔ متاثرہ ڈرائیور نے بتایا کہ ان پر حملہ کرنے والے دو لوگوں نے ان کی داڑھی کھینچی اور پاکستان جانے کو کہا۔

ہندوستان: کورونا کے نئے معاملہ ایک دن میں65 ہزار سے پار، اب تک کے سب سے زیادہ

ملک میں کورونا وائرس کی دن بدن خراب ہوتی صورتحال کے درمیان سنیچر کی دیر رات تک65,156نئے معاملے سامنے آنے سے متاثرین کی تعداد 21.50لاکھ سے زیادہ ہوگئی اور 875مزید لوگو کی موت سے مرنے والوں کی تعداد 43,446تک پہنچ گئی لیکن راحت کی بات یہ ہے کہ مریضوں کے صحت یاب ہونے کی شرح 69فیصد کے قریب پہنچ ...

ایئر انڈیا کا طیارہ گرنے کی ایک نہیں کئی وجوہات

ماہرین کا ماننا ہے کہ کیرالہ کے کوزی کوڈ میں جمعہ کی رات ہوئے جہاز حادثے میں تیز بارش کے ساتھ کئی وجوہات رہی ہوں گی۔ائر انڈیا ایکسریس کا بوئنگ 737-800 جہاز جب کوزی کوڈ پہنچا اس وقت وہاں تیز بارش ہورہی تھی۔ جب رن وے گیلا ہوتا ہے تو جہاز کو اترنے کے بعد رکنے کے لئے رن وے پر معمول کے ...