پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافہ

Source: S.O. News Service | Published on 23rd January 2021, 11:23 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،23؍جنوری (ایس او نیوز؍یو این آئی) دو دن تک مستحکم رہنے کے بعد جمعہ کو پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافہ ہوا-ملک میں پٹرول کی قیمتیں اس وقت ریکارڈ سطح پر ہیں - ڈیزل کی قیمتیں دہلی کے علاوہ تاریخی لحاظ سے اعلیٰ سطح پر ہیں -

گھریلو مارکیٹ کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق قومی دارالحکومت دہلی میں آج پٹرول 25مہنگا ہوا اور اس کی قیمت85.45روپے فی لیٹر تک پہنچ گئی-

چنئی میں اس کی قیمت میں 22پیسہ ضافہ ہوا اور ایک لیٹر پٹرول88.07 روپے میں فروخت ہوا-

پٹرول نے ممبئی میں پہلی بار 92روپے اور چنئی میں پہلی بار 88روپے فی لیٹر کو عبور کیا ہے -

بنگلور ومیں ڈیزل کی قیمت79.94جبکہ پٹرول کی قیمت 99.33 روپے فی لیٹر ہوگئی ہے-

ایک نظر اس پر بھی

ہماچل: نابالغ کے ٹرانسپورٹ ضابطہ توڑنے پر گاڑی مالک کو ہوگی 3 سال کی جیل

 ہماچل پردیش میں اب نابالغ کی جانب سے ٹرانسپورٹ ضابطے کی خلاف ورزی پر گارجین یا گاڑی مالک کو مجرم مانا جائے گا اور انھیں 25 ہزار روپیے کے جرمانے کے ساتھ تین سال کی سزا ہو سکتی ہے۔ نابالغ پر زیبونائل جسٹس ایکٹ کے تحت مقدمہ ہوگا اور متعلقہ گاڑی کا رجسٹریشن بھی مسترد ہوگا۔

مودی حکومت کی کھرب پتیوں کے لیے بیٹنگ، عوام کمر توڑ مہنگائی سے دو چار، پرینکا گاندھی کا کرکٹ کی زبان میں حملہ

 گجرات میں واقع موٹیرا کرکٹ گراؤنڈ کا نام نریندر مودی اسٹیڈیم رکھے جانے کے ایک دن بعد گھریلو گیس سلنڈر کے داموں میں اضافہ ہونے پر کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے مودی حکومت پر کرکٹ کی زبان میں حملہ بولا ہے۔

بی جے پی سرکار ٹیکس پر ٹیکس لگا کر لوگوں کو خوف زدہ کر رہی ہے: غلام احمد میر

جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر کا الزام ہے کہ بی جے پی سرکار ٹیکس پر ٹیکس لگا کر لوگوں کو خوف زدہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت لوگوں کو بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے بجائے غریبوں کے جیب کاٹ کر امبانی اور اڈانی کے جیب گرم کر رہی ہے۔

ہوناور کے ٹونکا میں تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف ماہی گیروں کا بڑے پیمانے پر احتجاج

تجارتی بندرگاہ کی تعمیری منصوبے کے خلاف ہوناور کے ٹونکا میں ماہی گیروں نے بہت بڑےپیمانےپر احتجاج کیا۔اترکنڑا، اُڈپی اور منگلورو میں ماہی گیروں نے مچھلی شکار کے لئے سمندر میں نہ اترتےہوئے ٹونکا کے ماہی گیروں کی طرف سے اعلان کئے گئے بند کی حمایت کی۔