ہبلی کے 4مسلم نوجوان تالاب میں ڈوب گئے،  میلا د النبی ﷺ کے دوسرے دن افسوسناک حادثہ 

Source: S.O. News Service | Published on 13th November 2019, 1:02 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ہبلی، 13/نومبر (ایس او نیوز) جشن میلا د النبی ﷺ کے دوسرے دن دوستوں کے ساتھ دعوت میں شرکت کرکے واپسی کے دوران تالاب میں ڈوب کر 4مسلم نوجوان جاں بحق ہوگئے۔ 

اطلا ع کے مطابق گوڈس شیڈ روڈ گنیش پیٹھ کلکرنی ہگل کے رہنے والے سہیل احمد مشتاق علی سید(17)، محمد ایان مولا صاب انکل (17)، سبحان احمد ہونیا (18) اور سید سبحان بلال بربری (18) ہلاک ہونے والے نوجوان ہیں۔

 بتایا جاتا ہے کہ میلاد النبی ﷺ کے دوسرے دن 7دوستوں کی گروپ کسی کے ہاں دعوت میں شریک ہونے گئے اور واپسی کے دوران دیور گڑی ہال گاؤں کے تالاب میں تیرنے کے لئے اترے۔ سید سبحان جب تالاب کے اندر تیرنے کے لئے اترا تو تیراکی کی نہ آنے سے ڈوبنے لگا جسے بچانے کے لئے بقیہ تینوں تالاب میں کود پڑے لیکن انہیں بھی تیراکی نہیں آتی تھی، لہٰذا چاروں ڈوب گئے۔ ان کے ساتھ موجود تین نوجوان اعجاز شیخ، جنیدکدم پور اور سہیل شکاری نے گاؤں والوں سے دوستوں کو بچانے کی منت و سماجت کی اور چند گاؤں والے بچانے کے لئے تالاب میں اترے اور آگے بڑھے لیکن ڈوب رہے نوجوانوں کی جانب سے بچانے والوں کو بھی اپنی جانب کھینچنے کی کوشش سے خوفزدہ افراد واپس آگئے۔ 

بعد میں ہبلی سے فائر بریگیڈ اور دیہی پولیس موقع واردات پر پہنچی اور شام 6بجے کے بعد چاروں کی لاشوں کو نکالا گیا۔ ہلاک شدہ سہیل کے ماموں محمد رفیع نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ تمام دوست دعوت میں شرکت کرنے کی اطلاع دے کر دوپہر ایک بجے کے قریب دیور گڑی ہال پہنچے تھے اور تراکی سے ناواقف تمام ڈوب گئے۔ 

 

ایک نظر اس پر بھی

کورونا پر قابو پانا عوام کے اپنے ہاتھ میں ہے۔ بھٹکل میں قائم کیے جارہے ہیں ’مِنی فیور کلینک‘۔ اسسٹنٹ کمشنر کا بیان

اسسٹنٹ کمشنر بھرت ایس نے بھٹکل میں بگڑتی ہوئی کووِڈ کی صورت حال پر ایک پریس کانفرنس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وباء کو قابو میں کرنا اب عوام کے اپنے ہاتھ میں ہے۔اور اگر عوام اس کو سنجیدگی سے لیں تو یہ کوئی مشکل کام بھی نہیں ہے۔