سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 21st April 2019, 6:41 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بھٹکل 21/اپریل (ایس او نیوز) اس بار کے انتخابات سب سے  اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ہو یا  کوئی بھی ادارہ ہو، آج محفوظ نہیں ہے۔ملک کی جمہوریت کو بچانا ہے، دستوری پامالیوں کو روکنا ہے تو پھر ملک کے تمام شہریوں کی  ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ آگے آئیں اور ملک کے   آئین  اور جمہوری اقدار کو  بچانے کے لئے کمربستہ ہوجائیں۔ یہ بات ملک کے سابق وزیراعظم اور جنتادل (ایس) کے  سربراہ  شری ایچ ڈی دیوے گوڈا نے بتائی۔ وہ یہاں بھٹکل میں  اُترکنڑا پارلیمانی  حلقہ کے اُمیدوار آنند اسنوٹیکر کی حمایت میں  تشہیر کرنے  پہنچے تھے۔

بھٹکل جے ڈی ایس لیڈر عنایت اللہ شاہ بندری کے ساتھ بھٹکل پہنچنے کے بعد  انہوں نے بھٹکل کے سماجی اداروں کے ذمہ داران کے ساتھ ملاقات کی اور اُنہیں تاکید کی کہ وہ بھٹکل میں سو فیصدی  پولنگ  کو یقینی بنائیں۔ ساحل آن لائن کے ساتھ خصوصی بات چیت میں  دیوے گوڈا نے  بتایا کہ بی جے پی کی بری نیتوں کو بھانپتے ہوئے  آج تمام سیکولر پارٹیاں متحد ہوکر ایک پلیٹ فارم پر آگئی ہیں،  ہر ریاست میں سیکولر ووٹوں کو اکٹھا کیاجارہا ہے تاکہ عوام  بھی متحد ہوکر  ملک کے لئے خطرہ بنی ہوئی پارٹیوں کو شکست دینے میں  اہم رول ادا کرسکیں۔  دیوے گوڈا نے بتایا کہ  چونکہ ہم کرناٹک میں مخلوط حکومت  کے شریک کار ہیں، اسلئے ہماری بھی ذمہ داری بنتی ہے کہ ہم  کانگریس کا بھرپور ساتھ دیں اور مودی کو ہرانے کے لئے ہرممکن کوشش کریں۔ ہم  ملک کی سبھی سیکولر پارٹیوں کو متحد کرنے کی کوششوں میں لگے ہوئے ہیں تاکہ  ملک کے  جمہوری اقدار  کو باقی رکھ سکیں ۔ ملک کا دستور ملک کا آئین اور ملک کا جمہوری اقدار باقی رہے گا تو یہ ملک بھی باقی رہے گا، ہم سب لوگوں کے لئے  ضروری ہے کہ ملک کے  حالات کی سنگینیوں کو دیکھتے ہوئے  سیکولر اُمیدوار کی کامیابی کو یقینی بنانے ہرممکن کوشش کریں۔

شری دیوے گوڈا نے بتایا کہ  کرناٹک کے انتخابات کے بعد جب راجستھان اور مدھیہ پردیش میں انتخابات ہوئے تو  عوام نے  15 اور 20 سالوں سے اقتدار پر راج کرنے والوں کی گدی چھین لی اور کانگریس کو اقتدار سونپا، جس کے ساتھ ہی کانگریس کی ملک میں شاندار واپسی ہوئی ہے  اور یہ سلسلہ آگے بڑھ رہا ہے۔مزید بتایا کہ  کسی نے سوچا بھی نہیں تھا کہ  راہول گاندھی اس طرح آگے آئے گا اور مودی کو ٹکر دے گا، مگر انہوں نے  ثابت کردکھایا ہے کہ وہ   مودی  کا مقابلہ کرسکتے ہیں۔

اُترکنڑا کے بی جے پی  اُمیدوار  اور حالیہ رکن پارلیمان آننت کمار ہیگڈے  کے تعلق سے گفتگو کرتے ہوئے شری دیوے گوڈا نے اُسے غیر ذمہ دار قرار دیا  جس نے ضلع کی ترقی کے لئے کچھ بھی نہیں کیا ہے۔ دیوے گوڈا نے بتایا کہ ہیگڈے صرف  اشتعال دلانے والے  بھاشن دے سکتے ہیں ۔ دیوے گوڈا صاحب نے  توقع ظاہر کی کہ  اس بار ضلع میں آنند اسنوٹیکر کی جیت یقینی ہے اور وہ بھاری اکثریت کے ساتھ جیت درج کرنے والے ہیں۔

اس موقع پر ان کے ہمراہ جے ڈی ایس لیڈر جناب فاروق باوا بھی موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔ 

بی جے پی کے سینئر لیڈر آر اشوک نے سدارامیا اور کمار سوامی سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا

وکھے درخت کے پتوں کی مانند جھڑرہے کانگریس اراکین اسمبلی کی آنکھوں میں اندھیراچھا گیا ہے۔ انہیں آگے کوئی راستہ نظر نہیں آرہا ہے۔ ریاست کے عوام نے مخلوط حکومت کی چڈی پھاڑدی ہے۔ اس قسم کی طنزیہ باتیں بی جے پی کے سینئر قائدآر اشوک نے کہیں۔

کرناٹک پبلک اسکولوں میں سرکاری اسکولوں کو ضم نہیں کیا جائے گا

سرکاری اسکولوں کو ضم کئے بغیر ہی کرناٹک پبلک اسکول چلانے کی تجویز محکمہ تعلیمات کے زیر غور ہے ۔ سرکاری نظام کے تحت ایک ہی پلاٹ فارم پر پہلی سے بارھویں جماعت تک کی تعلیم کی سہولت فراہم کرنے کے مقصد سے کرناٹک پبلک اسکولوں کا انعقاد 2018-19 سے ہی شروع ہوگیا تھا ۔

کمارسوامی نے وزیراعلیٰ کا عہدہ دیش پانڈے کو سونپنے کی رکھی تھی شرط ، کانگریس لیڈران رہ گئے دنگ؛ کماراسوامی کی قیادت پر ہی ظاہر کیا گیا اعتماد

لوک سبھا انتخابات میں کانگریس جے ڈی ایس اتحاد کی رسواکن شکست کے بعد کل وزیراعلیٰ کمار سوامی کی قیادت میں طلب کی گئی غیر رسمی کابینہ میٹنگ کے دوران وزیراعلیٰ کمار سوامی کی طرف سے استعفے کی پیش کش کے متعلق چند نئے انکشافات سامنے آئے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات کے نتائج کے بعد دیناکرن کا الیکشن کمیشن سے سوال؛ ڈالے گئے ووٹ پارٹی کو کیوں نہیں ملے ؟

 لوک سبھا انتخابات کے نتائج آنے کے بعد اپوزیشن پارٹیاں  ا ی وی ایم پر سوال اٹھانے لگے ہیں۔پہلے بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے سوال کھڑے کرتے ہوئے کہا تھا کہ سپریم کورٹ کو اپوزیشن جماعتوں کے مطالبے پر غور کرنا چاہئے۔

سنئیر لیڈران کا بیٹوں کو آگے بڑھانے پر راہول کو اعتراض؛ راجستھان، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ میں پارٹی کے صفایاپر راہل ناراض؛ استعفیٰ دینے پر بضد

کانگریس کے بعض سنئیر لیڈران اور بعض وزراء اعلیٰ کا اپنے بیٹوں کو ہی آگے بڑھانے میں لگے ہونے پر اعتراض جتاتے ہوئے راہول گاندھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دینے پر بضد ہیں۔ ذرائع کی مانیں تو  لوک سبھا انتخابات میں خراب کارکردگی کے بعد کانگریس صدر راہل گاندھی  اپنے عہدے سے استعفیٰ ...

وائی ایس آر کانگریس کے سربراہ کی وزیراعظم مودی سے ملاقات، آندھرا کو خصوصی درجہ دینے پر زور

 وائی ایس آر کانگریس کے سربراہ جگن موہن ریڈی نے وزیر اعظم نریندر مودی سے اتوار کو دہلی میں ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔اس کے بعد انہوں نے بغیر کسی طے پروگرام کے بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ سے ملاقات کی۔

گذشتہ دس سالوں سے جیل میں مقید مسلم نوجوان کو قانونی کی تعلیم جاری رکھنے کی اجازت، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد کے ساتھ ساتھ تعلیمی وظیفہ بھی دیا، پہلے مرحلہ کا نتیجہ اطمنان بخش: گلزار اعظمی

ممبئی کی خصوصی مکوکا(این آئی اے) عدالت نے جھوٹے دہشت گردانہ معاملے کا سامنا کررہے ایک مسلم نوجوان کو قانون کی تعلیم جاری رکھنے اور اسے امتحان میں شرکت کرنے کی مشروط اجازت دی۔13-7 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکہ معاملے کا سامنا کررہے ملزم ندیم اختر کو ایل ایل بی پہلے سال کے دوسرے مرحلہ ...

مرکز نے سپریم کورٹ سے کہا، رافیل معاہدہ میں پی ایم اوکادخل نہیں، تمام عرضیاں ہوں مسترد

لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن نے رافیل لڑاکا طیارے معاہدے میں بے ضابطگیوں کا الزام لگاتے ہوئے اسے سب سے بڑا مسئلہ بنایا۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے اس معاہدے کے لئے براہ راست طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کو ذمہ دار بتایا۔