ہندوستان کے لیجنڈ فٹبالر چنی گوسوامی کا انتقال

Source: S.O. News Service | Published on 1st May 2020, 12:11 PM | اسپورٹس |

کولکاتا،یکم مئی(ایس او نیوز؍ایجنسی) ہندوستان کے لیجنڈ فٹبالر چنی گوسوامی کا جمعرات کو انتقال ہو گیا۔ وہ 82 سال کے تھے۔ چنی گوسوامی گزشتہ کافی عرصے سے بیمار چل رہے تھے۔

چنی گوسوامی بہترین فٹبالر ہونے کے ساتھ ساتھ اچھے کرکٹر بھی تھے۔ وہ 1982 کے ایشیائی کھیلوں میں طلائی تمغہ جیتنے والی ہندستانی فٹ بال ٹیم کے کپتان تھے۔انہوں نے فرسٹ کلاس کرکٹ ٹورنامنٹوں میں بنگال کی نمائندگی کی تھی۔

آل انڈیا فٹ بال فیڈریشن (اے آئی ایف ایف) سمیت کھیل کی دنیا نے اس افسانوی فٹبالر کے انتقال پر گہرا غم کا اظہار کیا ہے۔ چنی گوسوامی گزشتہ کئی مہینوں سے بیمار تھے۔ انہیں شوگر، پروسٹینٹ اور نرو مسائل تھیں اور مسلسل ان کا علاج چل رہا تھا۔ ان کے خاندان نے تصدیق کی کہ انہیں شہر کے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا اور انہوں نے شام پانچ بجے اپنی آخری سانس لی۔

ان کی کپتانی میں ہندوستان نے 1962 کے ایشیائی کھیلوں میں طلائی تمغہ جیتا تھا اور ٹیم 1964 کے ایشیا کپ میں رنر اپ رہی تھی۔کلب فٹ بال میں چنی گوسوامی ہمیشہ موہن بگان کے لئے کھیلے تھے۔ اپنے کالج کے دنوں میں انہوں نے کولکتہ یونیورسٹی کی ایک ہی سال میں فٹ بال اور کرکٹ دونوں میں کپتانی کی تھی۔ چنی گوسوامی نے اپنا بین الاقوامی کیریئر 1957 میں شروع کیا تھا اور وہ قومی ٹیم کے سب سے بڑے ستاروں میں سے ایک مانے جاتے تھے۔انہوں نے محض 27 سال کی عمر میں بین الاقوامی فٹ بال کو چھوڑ دیا تھا۔

وہ فٹ بال میں ہی نہیں بلکہ کرکٹ میں کافی کامیاب رہے تھے۔سال 1966 میں چنی گوسوامی اور سبرتو گوہا نے گیری سوبرس کی ویسٹ انڈیز ٹیم کو اننگز کی شکست کا سامنا کرنے پر مجبور کیا تھا۔ وسطی اور مشرقی علاقے کی مشترکہ ٹیم نے ہنومنت سنگھ کی قیادت میں اندور میں ویسٹ انڈیز کو شکست کا ذائقہ چكھايا تھا۔ گوسوامی نے اس میچ میں آٹھ وکٹ لئے تھے۔ چنی گوسوامی کو 1971-72 سیزن میں بنگال رنجی ٹیم کا کپتان بنایا گیا تھا۔ ٹیم ان کی کپتانی میں فائنل میں پہنچی تھی اور برابورن اسٹیڈیم میں بامبے سے ہاری تھی۔

ایک نظر اس پر بھی