جب جب ملک جذباتی ہوا، فائلیں غائب ہوئیں: راہل گاندھی

Source: S.O. News Service | Published on 9th August 2020, 11:01 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،8؍ اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) سپریم کورٹ سے وجے ملیا کیس میں فائلیں غائب ہونے پر کانگرس کے صدر راہل گاندھی نے مودی حکومت کو ہدف تنقید بنایا ہے۔ راہل گاندھی نے ٹویٹ کیا کہ جب جب ملک جذباتی ہوا، فائلیں غائب ہوئیں۔ ملیا ہویا رافیل، مودی ہو یا چوکسی، گمشدہ فہرست میں تازہ ترین ہے چینی تجاوزات والی دستاویز۔ یہ کوئی اتفاق نہیں ہے، یہ مودی حکومت کا جمہوریت مخالف استعمال ہے۔غور طلب ہے کہ سپریم کورٹ میں وجے ملیا سے متعلق فائلوں کے غائب ہونے کا معاملہ سامنے آیا، جس کے بعد سماعت 20/ اگست تک ملتوی کردی گئی۔بتادیں کہ مفرور شراب کاروباری وجے ملیا کیس میں سپریم کورٹ میں سماعت نہیں ہوسکی ہے۔ دراصل، ملیا کے کیس جڑی فائلیں غائب ہونے کی وجہ سے عدالت عالیہ کو سماعت ملتوی کرنی پڑی۔ ملیا اس وقت لندن میں مقیم ہے۔ سپریم کورٹ کے حکم کی خلاف ورزی کے سبب سپریم کورٹ کی توہین کیس میں وجے ملیا کی نظر ثانی کی درخواست پر سماعت 20 / اگست تک ملتوی کردی گئی ہے۔ تین سال پہلے، ملیا نے ایک نظرثانی درخواست دائر کی تھی جو اب سماعت کے لئے لسٹڈ ہے۔ملیا 2 مارچ 2016 کو چپکے سے ہندوستان سے فرار ہو گیا تھا۔ برطانیہ کی پولیس اسکاٹ لینڈ یارڈنے اسے 18/ اپریل 2017 کو گرفتار کیا تھا۔ تاہم، لندن کی ایک عدالت نے انہیں چند گھنٹوں کے اندر ضمانت پر رہا کردیا۔ حکومت ملیا کو ہندوستان کے حوالے کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ہندوستان کے 17 بینکوں پر ملیا کے پاس 9 ہزار کروڑ روپے بقایا ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بالاسبرامنیم اس ملک کے موسیقی اورلسانی ثقافت کی ایک عمدہ مثال تھے: سونیا گاندھی

کانگریس  کی  چیئرپرسن سونیا گاندھی نے موسیقی کی دنیا کی ایک عظیم ہستی بالاسبرامنیم کے انتقال پراپنے گہرے رنج  وغم  کا اظہار کرتےہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کی  موسیقی اور لسانی  ثقافت کے عمدہ مثال تھے اور ان کے نہیں رہنے  سے آرٹ اور کلچرل کی دنیا پھیکی پڑگئی ہے۔

الطاف بخاری کا راجوری کے تین متاثرہ کنبوں کو معقول معاوضہ و نوکریاں فراہم کرنے کا مطالبہ

اپنی پارٹی کے صدر سید محمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ پولیس کی فارنسک رپورٹ میں امشی پورہ شوپیاں انکاؤنٹر میں ہلاک ہونے والے راجوری ضلع کے 3 مقتول مزدوروں کی شناخت کی تصدیق سے قانون کے تحت سزا یقینی ہے