آزادی کا امرت مہوتسو: کرناٹک میں کامگاروں کو بے روزگاری کا ڈر، 27 جولائی کو کرناٹک کے مختلف علاقوں میں دھرنا دینے کا اعلان

Source: S.O. News Service | Published on 26th July 2022, 1:53 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی،26؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) مودی حکومت نے آزادی کے 75ویں سال میں داخل ہونے پر اُتسو یعنی تہوار منانے کے لیے ’ہر گھر ترنگا‘ مہم چلانے کا اعلان کیا ہے۔ اسے ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کہا جا رہا ہے۔ لیکن اسی اُتسو کے درمیان کرناٹک کھادی گرام اُدیوگ کی مختلف یونٹس سے منسلک تقریباً 45000 کامگاروں پر بے روزگاری کا بحران بھی منڈلا رہا ہے۔ ان کامگاروں کی تنظیم کرناٹک کھادی گرام اُدیوگ سنیوکت سنگھا نے نیشنل فلیگ کوڈ میں تبدیلی کے خلاف تحریک کا اعلان کیا ہے۔ کامگاروں نے اعلان کیا ہے کہ وہ 27 جولائی کو کرناٹک کے مختلف علاقوں میں دھرنا دیں گے۔

واضح رہے کہ مودی حکومت نے قومی پرچم کے کوڈ میں ترمیم کی ہے جس کے بعد اب ترنگے کو کھادی سے ہی بنانے کی لازمیت ختم کر پالسٹر سے بنانے کا راستہ ہموار کیا گیا ہے۔ اس کوڈ میں 20 جولائی کو جاری ایک پیغام جاری کر حکومت نے یہ بھی طے کر دیا ہے کہ اب ملک کے سبھی لوگ ترنگے کو دن اور رات ہر وقت لگا سکتے ہیں۔ کھادی گرامودیوگ کے کامگاروں کا کہنا ہے کہ پالسٹر سے ترنگا بنانے کی شروعات کیے جانے سے ان کے سامنے بے روزگاری کی تلوار لٹکنے لگی ہے۔

نیشنل ہیرالڈ سے بات چیت میں تنظیم کے جنرل سکریٹری شیوانند متھاپتی نے کہا کہ پالسٹر کے ترنگے کا پروڈکشن شروع ہونے کے بعد کامگار تیزی سے بے روزگار ہوں گے کیونکہ پالسٹر سے تیار ترنگا سستا ہوتا ہے اور مشینوں کا استعمال کر اس کا پروڈکشن بڑے پیمانے پر کیا جا سکتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ فلیگ کوڈ میں ترمیم کے بعد آنے والے وقت میں بڑی کمپنیاں کھادی ہتھ کرگھوں کی جگہ لے لیں گی۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ انھیں ہر سال جتنے آرڈر ٹرنگا بنانے کے لیے ملتے تھے، اس کے نصف آرڈر بھی اس سال نہیں ملے ہیں۔ ان کے مطابق جولائی ختم ہوتے ہوتے کھادی گرامودیوگ تقریباً 2.5 کرڑ ترنگے بھیج دیا کرتا تھا، لیکن اس سال ابھی تک صرف 1.2 کروڑ ترنگے کے ہی آرڈر ملے ہیں۔

متھاپتی نے اس بات کو نشان زد کیا کہ گرامودیوگ سنگھ کے پاس تقریباً 5 کروڑ روپے کے ترنگا سپلائی کرنے کا خام مال پڑا ہے جو اب بے کار ہو جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ اس کے علاوہ کامگاروں کا ماننا ہے کہ پالسٹر کا ترنگا بنائے جانے سے ترنگے کا وقار بھی کم ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ ’’کھادی کا ایک وقار ہے، اور یہ خود کفیلی کی علامت ہے۔ کہنا ضروری نہیں کہ مہاتما گاندھی، پنڈت نہرو، سردار پٹیل اور دیگر مجاہدین آزادی نے کھادی اپنانے کی اپیل کی تھی۔ ہم جب بھی کارخانے میں آتے ہیں تو اپنی چپل اتار کر آتے ہیں تاکہ قومی پرچم کی بے حرمتی نہ ہو۔ لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ اس حکومت کو ترنگے کے احترام اور وقار کی پروا ہے ہی نہیں۔‘‘ متھاپتی نے کہا کہ ترنگے کو پالسٹر سے بنانا صرف ایک کپڑے کی بات نہیں ہے بلکہ اس وقار کی بھی بے عزتی ہے جس کے لیے ترنگے کو شان سے لہرایا جاتا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ کرناٹک کھادی گرامودیوگ سنگھ کے ذریعہ تیار کیے گئے ترنگے کو ہی لال قلعہ، پارلیمنٹ اور راشٹرپتی بھون کے علاوہ تمام سرکاری عمارتوں پر 15 اگست اور 26 جنوری کو لہرایا جاتا رہا ہے۔ کرناٹک کھادی گرامودیوگ سنگھ صرف 9 سائز کے ترنگے ہی بناتا ہے جو کہ نیشنل فلیگ کوڈ میں مذکور ہیں۔ کھادی سنگھ نے نیشنل فلیگ کوڈ میں ترمیم کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو خط بھی لکھا ہے، لیکن انھیں اس کا ابھی تک کوئی جواب نہیں ملا ہے۔ اس خط کی ایک کاپی مرکزی وزیر برائے پارلیمانی امور پرہلاد جوشی کو بھی بھیجی گئی ہے جو کرناٹک کی دھارواڑ لوک سبھا سیٹ سے رکن پارلیمنٹ ہیں۔ اسی ضلع میں ترنگے کے پروڈکشن کی یونٹس موجود ہیں۔ لیکن پرہلاد جوشی نے بھی اس سلسلے میں اب تک ایک بھی لفظ نہیں بولا ہے۔ اس رویہ سے کھادی سنگھ کے کامگار بہت ناراض ہیں۔

متھاپتی نے بتایا کہ 27 جولائی کو ہونے والے بھوک ہڑتال کے دوران ہبلی ضلع میں سنیوکت کامگار سنگھ سے منسلک خواتین بھی حصہ لیں گی۔ یہ پوچھنے پر کہ اگر ترمیم کو واپس نہیں لیا گیا تو کیا 15 اگست کو بھی بھوک ہڑتال کیا جائے گا، متھاپتی نے کہا کہ تحریک کو مزید تیز کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

”آؤ پیغامِ نبیؐ عام کریں“ کے تعارف کیلئے جماعت اسلامی ہند، کرناٹک کی سیرت مہم

جماعت اسلامی ہند کے زیر اہتمام ربیع الاول کے اس مقدس ماہ میں 10روزہ ”آؤ پیغام نبیؐ عام کریں“ کے عنوان پر ریاستی سطح کی مہم کا آغاز کیا جا رہا ہے۔اس سلسلہ میں اخباری کانفرنس کے دوران تفصیلات پیش کر تے ہو ئے حلقہ کرناٹک کے سکریٹری مولانا وحیدالدین خان عمری مدنی نے بتایا کہ اس ...

انکولہ - ہبلی ریلوے لائن منصوبہ : مرکزی حکومت کے وفد نے کیا مختلف مقامات کا معائنہ

ریاستی ہائی کورٹ کے حکم کے مطابق انکولہ - ہبلی ریلوے منصوبے پر عمل پیرائی کے سلسلے میں مثبت اور منفی پہلووں کا جائزہ لینے کے  مرکزی حکومت کے ایک وفد نے انکولہ اور یلاپور تعلقہ جات میں مختلف جنگلاتی علاقوں کا معائنہ کیا۔

صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور و کے دس روزہ دسہرہ تقریبات کا افتتاح کیا

دوماہ کی تیاریوں کے بعد آج بروز پیر صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور کے چامنڈی پہاڑ پر دس روزہ دسہرہ تقریبات کا چامنڈیشوری دیوی کی مورتی پر پھول نچھاور کرکے افتتاح کیا۔ پہلے صدر جمہوریہ نے چامنڈیشوری دیوی کے درشن کئے اور اس مندر کی تاریخ کے تعلق سے تفصیل سے جانکاری حاصل کی۔

ذہنی دباؤ بیسویں صدی کا ایک مہلک مرض؛ آئیٹا گلبرگہ کے ورک شاپ سے ڈاکٹر عرفان مہا گا وی کا خطاب

نئے دور کی شدید ترین بیماریوں میں ذہنی دباؤ اور اس سے پیدا ہونے والے اثرات کو مہلک امراض میں شمار کیا جاتا ہے ۔ روز مرہ کی مشینی زندگی میں ذہنی دباؤ  میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے ۔ لیکن اس کو کیسے کم کیا جائے اس پر غور کر نے اور اس سلسلے میں کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔

گیان واپی مسجد معاملہ پر الہ آباد ہائی کورٹ میں سماعت، وارانسی عدالت کے فیصلہ پر 31 اکتوبر تک روک

  الہ آباد ہائی کورٹ نے وارانسی کی ایک عدالت کے گیانواپی مسجد کا اے ایس آئی سروے کرانے کے حکم پر لگی روک میں 31 اکتوبر تک توسیع کر دی ہے۔ متعلقہ فریقوں کے دلائل سننے کے بعد جسٹس پرکاش پاڈیا نے معاملے کی اگلی سماعت کے لیے 18 اکتوبر کی تاریخ مقرر کی ہے۔

انکیتا بھنڈاری کے ملزمین کی پیروی کرنے سے وکیلوں کا انکار، ضمانت عرضی پر سماعت ملتوی، سی بی آئی جانچ کا مطالبہ تیز

اتراکھنڈ کے رشی کیش کی رہنے والی انکیتا بھنڈاری قتل واقعہ کے ملزمین پلکت آریہ، انکت اور سوربھ بھاسکر کی عدالت میں پیروی کرنے سے کوٹ دوار کے وکلا نے انکار کر دیا ہے۔ ک

نوٹ بندی کی آئینی درستگی کو چیلنج کرنے والی 59 عرضیوں پر سپریم کورٹ میں 12 اکتوبر کو ہوگی سماعت

مودی حکومت کی جانب سے 2016 میں نافذ کی گئی نوٹ بندی کے آئینی جواز کے خلاف دائر کی گئی عرضیوں پر سپریم کورٹ میں پانچ ججوں کی آئینی بنچ میں 12 اکتوبر کو سماعت ہوگی۔ نوٹ بندی کے خلاف عرضیوں پر سپریم کورٹ نے سوال کیا ہے کہ اب اس معاملے میں کیا باقی ہے؟ کیا اس معاملے کی جانچ کرنے کی ضرورت ...

یوپی: لکھیم پور کھیری میں دلخراش سڑک حادثہ، بس اور ٹرک کے تصادم میں 8 افراد ہلاک، 25 سے زائد زخمی

 اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری میں آج صبح ایک بڑا حادثہ پیش آیا۔ معلومات کے مطابق بس اور ٹرک کے درمیان تصادم میں 8 افراد جاں بحق، جب کہ 25 زخمی ہوئے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ لکھیم پور کھیری ضلع کے عیسی نگر تھانہ علاقے کی کھماریا پولیس چوکی کے نزدیک شاردا ندی کے پل پر درجنوں مسافروں ...

بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ روی کشن کو لگا چونا! کاروباری پر عائد کیا 3.25 کروڑ کی ٹھگی کرنے کا الزام، پولیس میں درج کرائی شکایت

 بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ اور اداکار روی کشن مبینہ طور پر 3.25 کروڑ روپے کی ٹھگی کا شکار ہو گئے ہیں، اس واقعہ کی اطلاع پولیس نے دی ہے۔ گورکھپور صدر سے رکن پارلیمنٹ روی کشن نے گورکھپور کینٹ تھانہ میں ایک بلڈر کے خلاف 3.25 کروڑ کی ٹھگی کا الزام عائد کرتے ہوئے مقدمہ درج کرایا ہے۔

مرکزی حکومت کے ملازمین کو ملی سوغات، مہنگائی بھتہ میں 4 فیصد کا اضافہ

مرکزی حکومت نے ایک کروڑ سے زیادہ سرکاری ملازمین اور پنشن حاصل کرنے والے افراد کو تہواروں کے موقع پر سوغات پیش کی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی میں منعقد ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں مہنگائی بھتہ میں اضافہ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔