ہریانہ انتخابات: سابق ایم پی سشیل اندورا کانگریس میں شامل ہوئے، اے ڈی پی کا انضمام بھی کیا

Source: S.O. News Service | Published on 9th October 2019, 7:22 PM | ملکی خبریں |

چنڈی گڑھ،9اکتوبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) ریاست کی اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس کو بڑی کامیابی ملی ہے۔سابق ممبر پارلیمنٹ سشیل اندورا کانگریس میں شامل ہو گئے ہیں۔سشیل اندورا نے اپنا ڈیموکریٹک پارٹی کا بھی کانگریس میں ضم کرنے کا فیصلہ کیا۔2016 میں سشیل اندورا نے اپنا ڈیموکریٹک پارٹی تشکیل دی تھی۔اس سے پہلے سرسا سے ایک اور سابق ممبر پارلیمنٹ چرنجیت روڑی بھی کانگریس میں شامل ہو گئے۔سشیل اندورا 1998 اور 1999 میں انڈین نیشنل لوک دل کے ٹکٹ پر سرسا سے الیکشن جیت کر لوک سبھا پہنچے تھے، حالانکہ اس کے بعد وہ کانگریس میں شامل ہو گئے۔2014 میں سرسا سے ٹکٹ نہ ملنے کے بعد اندورا نے ہریانہ جن ہت کانگریس کے ٹکٹ پر لوک سبھا الیکشن لڑا، پر انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔دراصل، اشوک تنور کے کانگریس سے استعفیٰ دینے کے بعد سرسا سے سابق ایم پی رہے اندورا کے لئے امید کی ایک کرن جاگی ہے۔اشوک تنور گزشتہ تین انتخابات سے سرسا سے کانگریس کے امیدوار تھے۔مستقبل میں اندورا اس سیٹ پر اپنا دعوی ٹھوک سکتے ہیں۔اسی طرح چرنجیت روڑی بھی سرسا ہی ایم پی رہے ہیں، اس لیے انہوں نے بھی اسی امید کے ساتھ کانگریس جوائن کی ہے۔چرنجیت روڑی نے انیلو چھوڑنے کے بعد کہا کہ کانگریس ہی ریاست میں متبادل بن سکتی ہے۔گزشتہ سال جے جے پی کے الگ پارٹی بننے کے بعد ہی چوٹالہ کے نزدیک لیڈر ان کا ساتھ چھوڑ رہے ہیں۔چرنجیت روڑی انیلو لیڈر ابھے چوٹالہ کے قریبی رہے ہیں۔چرنجیت روڑی کے جانے سے انیلو کو اپنے گڑھ سرسا میں بڑا جھٹکا لگا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی