3باربہار کے وزیراعلی رہے جگن ناتھ مشرا کا انتقال، لمبے عرصہ سے بیمار تھے 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 19th August 2019, 7:34 PM | ملکی خبریں |

پٹنہ، 19 اگست (آئی این ایس انڈیا) بہار کے سابق وزیر اعلی جگن ناتھ مشرا کا پیر کو انتقال ہو گیا۔پچھلے کئی دنوں سے جگن ناتھ مشرا کا دہلی کے ایک ہسپتال میں علاج چل رہا تھا۔82 سال کے جگن ناتھ مشرا تین بار بہار کے وزیر اعلی رہے تھے۔1975 میں وہ پہلی بار بہار کے وزیر اعلی بنے تھے۔دوسری بار 1980 اور آخری بار 1989 سے 1990 تک بہار کے وزیر اعلی رہے۔انہیں 90 کے دہائی کے دوران مرکزی کابینہ میں بھی جگہ ملی تھی۔ان کے انتقال پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے افسوس ظاہر کیا ہے۔جگن ناتھ مشرا نے ایک لیکچرر کے طور پر اپنا کیریئر شروع کیا تھا اور بعد میں بہار یونیورسٹی میں معاشیات کے پروفیسر بنے تھے۔ان کی سیاست میں کافی دلچسپی تھی،ان کے بڑے بھائی للت نارائن مشرا ریلوے کے وزیر تھے۔بتا دیں کہ دیوگھر چارہ گھوٹالہ کیس میں لالو یادو کو کورٹ نے مجرم قرار دیا اور جگن ناتھ مشرا کو بری کر دیا تھا۔ماضی میں انڈین نیشنل کانگریس میں ایک اعلی سطح پر شامل ہونے کے بعد انہیں تین بار بہار کا وزیر اعلی منتخب کیا گیا تھا۔کانگریس چھوڑنے کے بعد وہ نیشنلسٹ کانگریس پارٹی میں شامل ہوئے اور بعد میں جنتا دل میں شامل ہو گئے تھے۔30 ستمبر 2013 کو رانچی کی ایک خصوصی عدالت نے انہیں چارہ گھوٹالے میں 44 دوسروں کے ساتھ سزا سنائی تھی۔اس وقت انہیں چار سال قید اور 200000 روپے کا جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

ممتا بنرجی کا پی ایم مودی پر حملہ، موجودہ وقت کو ’سپر ایمرجنسی‘ کا دور قرار دیا

مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے عالمی یوم جمہوریت کے موقع پر اتوار کو مرکز کی نریندر مودی حکومت پر شدید حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ’سپر ایمرجنسی‘ کے اس دور میں لوگوں کو ان کے حقوق اور آزادی کی حفاظت کے لئے ہر ممکن کوشش کرنی چاہیے۔

سنگھ پریوار زبان کے نام پر لوگوں کو تقسیم کرنے پر آمادہ: وزیر اعلی پنارائی وجين

کیرالہ کے وزیر اعلی پنارائی وجين نے ہندی زبان پر مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے بیان پر نکتہ چینی کرتے ہوئے اتوار کو کہا کہ سنگھ پریوار نے زبان کے نام پر لوگوں کو تقسیم کرنے کے لئے ایک نئی جنگ کا میدان تیار کر دیا ہے۔