بھٹکل کے شرالی میں زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز  کا قیام : کچرے کا دوبارہ استعمال کے لئے لائق بنانے والا مثالی منصوبہ :سی ای اؤ محمد روشن

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 22nd January 2020, 6:53 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل؍کاروار:22؍جنوری(ایس اؤ نیوز) گھر گھر سے جمع کئے جانے والے کچرے کو مقامی طورپر ہی دوبارہ استعمال کرنے کا مقصد لے کر زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز کا بھٹکل تعلقہ کے شرالی میں قائم کئے جانے کی اترکنڑا ضلع پنچایت کے  سی ای اؤمحمدر وشن نےجانکاری دی ہے۔ پورے ملک میں یہ پہلی تجرباتی کوشش ہے جس کے لئے شرالی گرام پنچایت کو منتخب کیاگیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ عوامی نج کاری کے اشتراک سے (پی پی پی) قریب 30 لاکھ روپئے کے لاگت سے مختلف قسم کے کچروں کو الگ الگ طریقوں سے علاحیدہ کرنے اور اس کا دوبارہ استعمال کرنے کا منصوبہ تشکیل دیاگیا ہے۔ کچا کچرا، سوکھا کچرااس کے علاوہ پرانے کپڑے ، شوز، چپل، الکٹرانک کچرا، نامیاتی کچرا، کانچ ،شیشے کی اشیاء ، پلاسٹک ، سیانیٹری پیاڈ وغیرہ گرام پنچایت کی سطح پر ہی نکاسی کی جائے گی۔ جس کے لئے جدید ٹکنالوجی کے مشینوں کا استعمال کیا جائے گا۔ کچے کچرے کو کھاد میں تبدیل کرکے زراعت کے لئے استعمال کریں گے تو سیانیٹری پیاڈ انسنیٹر مشین کا استعمال کرتے ہوئے اس کو جلا دیا جائے گا۔ کانچ، شیشوں کی اشیاء کو مٹی میں منتقل کیا جائے گا اور پلاسٹک سول کاموں کے لئے خام اشیاء کے طورپر استعمال کئے جانے کی سی ای اؤ روشن نے جانکاری دی۔

زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز کے لئے گرام پنچایت کی طرف سے عمارت کی نشاندہی کی جاچکی ہے، گھر گھر کچرا جمع کرنے کی ذمہ داری گرام پنچایت کرے گی۔ مشینوں کی نصب کاری، نگرانی صنعت کار کرشنانند نائک کی ملکیت والی ایس ایم انجنئیرس اینڈ ٹریڈرس کمپنی کرے گی۔ اس سلسلے میں کمپنی کے ساتھ  ضلع پنچایت نے اصول و ضوابط کے مطابق معاہدہ کر لیا ہے۔  اس سلسلے میں سوچھ بھارت مشن کے ضلع سنچالک سوریا نارائن بھٹ نے بتایا کہ ضلع پنچایت سی ای اؤ محمد روشن کی دور اندیشی کے چلتے عوام کو سہولت فراہم  کرنےو الے اس منصوبہ  کو تشکیل دیا گیا ہے۔

زیرو ویسٹ مینجمنٹ کے نفاذ سے مقامی اداروں کے مراکز پرنہ  ملنے والے مشینوں کو شرالی گرام پنچایت کو مہیا کی جارہی ہیں۔ جس میں الکٹرانک کچرے کو پروسس کرنے سے لے کر پلاسٹک اور کانچ کو بھی دوبارہ استعمال کرتےہوئے خام مواد میں منتقل کرنے والی مشینیں شامل ہیں۔ عوامی استعمال کے بعد یوں ہی پھینکی ہوئی کانچ کی بوتلیں جمع کرکے ان کو چورا کرنےکے بعد مٹی میں منتقل کیا جائے گااور اس کو متعلقہ علاقوں میں ہونے والے تعمیراتی کاموں میں استعمال کرنے کے لئے پنچایت راج انجنئیرنگ شعبہ کو ہدایت دی جائے گی۔ پلاسٹک کو سڑک تعمیراتی کاموں میں استعمال کیا جائےگا۔ 9فی صد خام مواد ان مراکز سے حاصل کرنے کا حکم جاری کیاجائے گا۔ جس کے نتیجے میں نہ صرف کچرے کا دوبارہ استعمال ہوگا بلکہ سرکار پر معاشی بوجھ بھی کم ہونے کی سی ای اؤ روشن نے جانکاری دی ۔

منصوبے کو لے کر ضلع پنچایت کے سی ای اؤ محمدر وشن نے بتایا کہ ’’ایک مثالی منصوبے کے تحت ضلع کو صفائی میں آگے صف میں لاکھڑا کرنے کا ارادہ ہے، تجرباتی طورپر بھٹکل کے شرالی گرام پنچایت میں زیرو ویسٹ مینجمنٹ مرکز کا قیام ہوگا، اگلے چند دنوں میں کاروار کی چتاکول گرام پنچایت میں مرکز قائم کرنے کا فیصلہ لیاگیا ہے، منصوبے کی کامیابی کے لئے عوامی تعاون کی ضرورت ہے‘‘۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔