مہاراشٹر بی جے پی میں انتشار، پنکجا منڈے کے بعد ایکناتھ کھڑسے نے دکھائے تلخ تیور

Source: S.O. News Service | Published on 10th December 2019, 8:43 PM | ملکی خبریں |

ممبئی، 10/دسمبر (ایس او نیوز/ایجنسی) مہاراشٹر بی جے پی میں زبردست انتشار کے آثار نظر اانے لگے ہیں۔ بی جے پی لیڈر پنکجا منڈے کی بغاوت کے بعد اب سینئر لیڈر ایکناتھ کھڑسے نے بھی پارٹی کے کئی لیڈروں کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ ایکناتھ کھڑسے نے کہا کہ ’’انتخابات میں ہماری پارٹی کے کچھ اہم لیڈروں اور کارکنان نے ہمارے خلاف کام کیا۔ میں نے چندرکانت پاٹل (مہاراشٹر بی جے پی صدر) کو کچھ آڈیو اور ویڈیو ثبوت کے طور پر دیے ہیں اور ان سے ایسے لوگوں کے خلاف کارروائی کی گزارش کی ہے۔‘‘

ایکناتھ کھڑسے نے اس سے قبل ہفتہ کے روز پارٹی قیادت کو متنبہ کیا تھا کہ اگر ان کی بے عزتی جاری رہی تو وہ دوسرے متبادل کی تلاش کریں گے۔ اس کے بعد سینئر بی جے پی لیڈر اور سابق وزیر ایکناتھ کھڑسے نے پیر کے روز دہلی میں این سی پی سربراہ شرد پوار سے ملاقات کی۔

ایکناتھ کھڑسے نے اس سے پہلے بھی پارٹی کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔ گزشتہ 5 دسمبر کو انھوں نے اپنی بیٹی روہنی اور سابق وزیر پنکجا منڈے کی شکست کے لیے پارٹی کے کچھ سینئر لیڈروں پر الزام عائد کیا تھا۔ انھوں نے دیویندر فڑنویس پر اشاروں اشاروں میں نشانہ سادھتے ہوئے کہا تھا کہ بی جے پی نے اقتدار دوبارہ حاصل کر لیا ہوتا گار پارٹی نے اپنی سابق اتحادی پارٹی شیوسینا کی نئی حکومت میں وزیر اعلیٰ عہدہ بانٹنے کی گزارش مان لی ہوتی۔

غور طلب ہے کہ بی جے پی نے اس سال اکتوبر میں ہوئے اسمبلی انتخاب میں ایکناتھ کھڑسے کو ٹکٹ دینے سے انکار کر دیا تھا۔ حالانکہ پارٹی نے ان کی بیٹی کو جلگاؤں ضلع میں ان کے آبائی علاقہ مکتائی نگر سے ٹکٹ دیا تھا۔ لیکن روہنی کھڑسے شیوسینا کے باغی چندرکانت پاٹل سے انتخاب ہار گئیں۔

گزشتہ دنوں بی جے پی نے قدآور لیڈر رہے گوپی ناتھ منڈے کی بیٹی پنکجا منڈے نے بی جے پی کے خلاف آواز اٹھائی تھی۔ پہلے انھوں نے سوشل میڈیا ہینڈل سے بی جے پی ہٹایا اور بعد میں ایک فیس بک پوسٹ میں لکھا تھا کہ وہ آٹھ سے دس دن میں اپنا آگے کا راستہ منتخب کرنے کے بارے میں فیصلہ کریں گی۔

ایک نظر اس پر بھی

ملک میں کورونا سے 95542 افراد ہلاک، متاثرین کی تعداد 60.74 لاکھ

 ملک میں گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران متاثرہ افراد کے 82 ہزار سے زیادہ نئے معاملے سامنے آنے سے متاثرین کی تعداد 60.74 لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے جبکہ کورونا کے انفیکشن سے 74 ہزار سے زائد افراد صحت مند ہوچکے ہیں جس کے نتیجے میں صحت مند افراد کی تعداد 50.16 لاکھ ہوگئی ہے۔

بہار اسمبلی انتخابات میں ٹکٹ کے لئے بی جے پی کے دفتر میں ہنگامہ

بہار اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کے بعد سے ٹکٹ کے دعویداروں کی سرگرمیاں اس قدر بڑھ گئی ہیں کہ ان کے حامی کارکنان ہنگامہ آرائی اور ہاتھاپائی کرنے تک آمادہ ہیں اور کل ایسا ہی نظارہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ریاستی دفتر میں دیکھا گیا۔

بالاسبرامنیم اس ملک کے موسیقی اورلسانی ثقافت کی ایک عمدہ مثال تھے: سونیا گاندھی

کانگریس  کی  چیئرپرسن سونیا گاندھی نے موسیقی کی دنیا کی ایک عظیم ہستی بالاسبرامنیم کے انتقال پراپنے گہرے رنج  وغم  کا اظہار کرتےہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کی  موسیقی اور لسانی  ثقافت کے عمدہ مثال تھے اور ان کے نہیں رہنے  سے آرٹ اور کلچرل کی دنیا پھیکی پڑگئی ہے۔