مہاراشٹر بی جے پی میں انتشار، پنکجا منڈے کے بعد ایکناتھ کھڑسے نے دکھائے تلخ تیور

Source: S.O. News Service | Published on 10th December 2019, 8:43 PM | ملکی خبریں |

ممبئی، 10/دسمبر (ایس او نیوز/ایجنسی) مہاراشٹر بی جے پی میں زبردست انتشار کے آثار نظر اانے لگے ہیں۔ بی جے پی لیڈر پنکجا منڈے کی بغاوت کے بعد اب سینئر لیڈر ایکناتھ کھڑسے نے بھی پارٹی کے کئی لیڈروں کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ ایکناتھ کھڑسے نے کہا کہ ’’انتخابات میں ہماری پارٹی کے کچھ اہم لیڈروں اور کارکنان نے ہمارے خلاف کام کیا۔ میں نے چندرکانت پاٹل (مہاراشٹر بی جے پی صدر) کو کچھ آڈیو اور ویڈیو ثبوت کے طور پر دیے ہیں اور ان سے ایسے لوگوں کے خلاف کارروائی کی گزارش کی ہے۔‘‘

ایکناتھ کھڑسے نے اس سے قبل ہفتہ کے روز پارٹی قیادت کو متنبہ کیا تھا کہ اگر ان کی بے عزتی جاری رہی تو وہ دوسرے متبادل کی تلاش کریں گے۔ اس کے بعد سینئر بی جے پی لیڈر اور سابق وزیر ایکناتھ کھڑسے نے پیر کے روز دہلی میں این سی پی سربراہ شرد پوار سے ملاقات کی۔

ایکناتھ کھڑسے نے اس سے پہلے بھی پارٹی کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔ گزشتہ 5 دسمبر کو انھوں نے اپنی بیٹی روہنی اور سابق وزیر پنکجا منڈے کی شکست کے لیے پارٹی کے کچھ سینئر لیڈروں پر الزام عائد کیا تھا۔ انھوں نے دیویندر فڑنویس پر اشاروں اشاروں میں نشانہ سادھتے ہوئے کہا تھا کہ بی جے پی نے اقتدار دوبارہ حاصل کر لیا ہوتا گار پارٹی نے اپنی سابق اتحادی پارٹی شیوسینا کی نئی حکومت میں وزیر اعلیٰ عہدہ بانٹنے کی گزارش مان لی ہوتی۔

غور طلب ہے کہ بی جے پی نے اس سال اکتوبر میں ہوئے اسمبلی انتخاب میں ایکناتھ کھڑسے کو ٹکٹ دینے سے انکار کر دیا تھا۔ حالانکہ پارٹی نے ان کی بیٹی کو جلگاؤں ضلع میں ان کے آبائی علاقہ مکتائی نگر سے ٹکٹ دیا تھا۔ لیکن روہنی کھڑسے شیوسینا کے باغی چندرکانت پاٹل سے انتخاب ہار گئیں۔

گزشتہ دنوں بی جے پی نے قدآور لیڈر رہے گوپی ناتھ منڈے کی بیٹی پنکجا منڈے نے بی جے پی کے خلاف آواز اٹھائی تھی۔ پہلے انھوں نے سوشل میڈیا ہینڈل سے بی جے پی ہٹایا اور بعد میں ایک فیس بک پوسٹ میں لکھا تھا کہ وہ آٹھ سے دس دن میں اپنا آگے کا راستہ منتخب کرنے کے بارے میں فیصلہ کریں گی۔

ایک نظر اس پر بھی

یوم جمہوریہ کے موقع پر پس مرگ پدما وبھوشن ایوارڈ پانے والوں میں شامل ہیں اڈپی پیجاورمٹھ سوامی اور جارج فرنانڈیز

یوم جمہوریہ کے موقع پر مرکزی حکومت کی طرف سے مختلف شعبہ ہائے زندگی میں نمایاں خدمات انجام دینے والی شخصیات کو پدما بھوشن اور پدماوبھوشن جیسے اعزازات سے نوازا جاتا ہے۔ امسال جن شخصیات کو پس مرگ پدماوبھوشن ایوارڈ سے نوازا گیا ہے اس میں پیجاور مٹھ کے سوامی اور سابق مرکزی وزیر ...

شاہین باغ وہ انقلاب ہے جو اب تھمنے والا نہیں ... آز:ظفر آغا

شاہین باغ اب محض ایک پتہ نہیں بلکہ ایک تاریخ ہے۔ یہ وہ تاریخ ہے جس کا سلسلہ 1857 سے ملتا ہے۔ جی ہاں، 1857 میں جس طرح انگریزوں کے مظالم اور ناانصافی کے خلاف بہادر شاہ ظفر کی قیادت میں ایک بغاوت پھوٹ پڑی تھی، ویسے ہی نریندر مودی کے خلاف شاہین باغ سے ایک بغاوت کا نقارہ بج اٹھا ہے اور ...

دہلی کے شاہین باغ میں لاکھوں مظاہرین نے منایا پورے جوش وخروش کے ساتھ یوم جمہوریہ؛ شہریت قانون کی سخت مخالفت

شہریت قانون کی مخالفت کرنے والے احتجاجیوں نے آج 26 جنوری کے موقع پر پورے جوش و خروش کے ساتھ یوم جمہوریہ کی تقریب منائی اور لاکھوں لوگوں کی موجودگی میں  شاہین باغ میں ہی ترنگا جھنڈا لہراتے ہوئے  ملک میں نئے انقلاب  کی جھلک دکھائی۔

شہریت قانون اور این آر سی ملک کے دلتوں، غریبوں اور پسماندہ طبقہ کے خلاف ہے؛ سیتامڑھی میں انسانی زنجیر کے ذریعے احتجاج

  سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کے خلاف احتجاجی مظاہرے اب شہروں سے نکل کر گاوں اور دیہاتوں میں بھی پھیل چکے ہیں اور ملک کے تقریبا ہر علاقوں سے بڑے پیمانے پر ریلیاں اور احتجاج کئے جانے کی خبریں موصول ہورہی ہیں، اسی طرح ایک خبر بہار  کےضلع سیتامڑھی کے سونبر سا بلاک کے مہولیا ...

شہریت قانون کی مخالفت میں اب شیموگہ میں نظر آرہا ہے شاہین باغ ؛26 جنوری کی رات کو پبلک پارک میں عورتوں کا جم غفیر!

جیسے جیسے شہریت قانون کی مخالفت میں اُٹھنے والی آوازوں کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے، یہ اُتنی ہی تیزی کے ساتھ اُبھرتی نظر آرہی ہے، اب تازہ خبر ریاست کرناٹک کے شہر شموگہ سے سامنے آئی ہے جہاں 25 جنوری کی شام سے ہی  آر ایم نگر میں موجود پبلک پارک میں خواتین کی بھیڑ جمع ہونی شروع ...

جدوجہد کرنے والے نوجوان گاندھی جی کے عدم تشدد کے پیغام کو ہمیشہ یاد رکھیں: صدر جمہوریہ رامناتھ کووند کا قوم کو پیغام

صدر جمہوریہ رامناتھ کووند نے جمہوریت کے لئے حکمراں اور اپوزیشن دونوں فریقوں کو اہم قرار دیتے ہوئے عوام خاص طورپر نوجوانوں کو بابائے قوم مہاتما گاندھی کے عدم تشددے کے منتر کو ہمیشہ یاد رکھنے کی تلقین کی۔