مصر: پارلیمنٹ نے لیبیا میں فوجی مداخلت کی منظوری دے دی

Source: S.O. News Service | Published on 21st July 2020, 5:17 PM | عالمی خبریں |

قاہرہ، 21/جولائی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) مصر کی پارلیمنٹ نے صدر عبدالفتاح السیسی کو لیبیا میں ممکنہ فوجی مداخلت کا اختیار دے دیا ہے۔

مصر کی پارلیمنٹ نے پیر کو ایک بل کی منظوری دی ہے جس کے تحت مصر کی سیکیورٹی فورسز کو ملک سے باہر 'دہشت گرد تنظیموں' اور 'ملیشیاؤں' کے خلاف لڑنے کے لیے تعینات کیا جا سکے گا۔

پارلیمنٹ نے یہ بِل ایسے موقع پر منظور کیا ہے جب لیبیا میں اقوامِ متحدہ کی تسلیم شدہ حکومت (جی این اے) کے خلاف فوجی کمانڈر خلیفہ حفتر کی فورسز برسرِ پیکار ہیں جنہیں مصر کی حمایت حاصل ہے۔

سرکاری فورسز کی کارروائیوں میں شدت آنے کے بعد حفتر مسلسل مصر سے لیبیا میں فوجی مداخلت کی درخواست کر رہے ہیں۔

صدر السیسی نے گزشتہ ہفتے کہا تھا کہ مصر یا اس کے پڑوسی ملک لیبیا کی قومی سلامتی کو کوئی خطرہ درپیش ہوا تو مصر خاموش نہیں رہے گا۔

مصر کی پارلیمنٹ سے بل کی منظوری کے بعد لیبیا میں غیر ملکی طاقتوں کے درمیان لڑائی کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔

مصری پارلیمنٹ نے کہا ہے کہ اُن کے ملک کی فوج مغربی محاذ پر غیر ملکی دہشت گرد عناصر اور ملیشیا کے خلاف قومی سلامتی کا دفاع کرے گی۔

تیل کے ذخائر سے مالا مال ملک لیبیا 2011 میں سابق فوجی حکمران معمر قذافی کی حکومت کا تختہ الٹے جانے کے بعد سے خانہ جنگی کا شکار ہے اور ملک میں 2015 سے اقتدار کے لیے رسہ کشی جاری ہے۔

ایک جانب اقوامِ متحدہ کی تسلیم شدہ حکومت ہے جب کہ دوسری جانب فوجی کمانڈر خلیفہ حفتر عبد الرحمٰن کی فورسز لیبین نیشنل آرمی (ایل این اے) ہیں۔ دونوں فریقوں کے درمیان گزشتہ کئی ماہ سے جھڑپوں میں شدت آگئی ہے۔

ترکی جی این اے کی حکومت کا حامی ہے اور اسے مسلسل فوجی امداد فراہم کر رہا ہے۔ ترک فوج نے گزشتہ ماہ لیبیا میں حفتر اور اس کے اتحادیوں کے خلاف فضائی کارروائی بھی کی تھی۔ دوسری جانب خلیفہ حفتر کی فورسز کو مصر، متحدہ عرب امارات اور روس کی حمایت حاصل ہے۔

اقوامِ متحدہ کی تسلیم شدہ حکومت کی حمایت یافتہ فورسز لیبیا کے وسطی شہر سرت پر دوبارہ قبضہ کرنے کے لیے مسلسل دباؤ بڑھا رہی ہیں جو حفتر کی لیبین نیشنل آرمی کے کنٹرول میں ہے۔

صدر السیسی لیبیا کے شہر سرت کو مصر کے لیے 'سرخ لکیر' قرار دے چکے ہیں اور انہوں نے خبردار کیا ہے کہ اگر سرت پر حملہ ہوا تو مصر لیبیا میں اپنی فوج داخل کرسکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بحرین کی اسرائیل سے ڈیل،علاقائی سلامتی کو تقویت ملے گی: شیخ سلمان کی نیتن یاہو سے گفتگو

بحرین کے ولی عہد شیخ سلمان بن حمد آل خلیفہ نے اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو سے ٹیلی فون پر بات چیت کی ہے۔انھوں نے عالمی سلامتی اور امن کو مضبوط بنانے اور امن ، استحکام اور خوش حالی کے فروغ کے لیے مسلسل کوششیں جاری رکھنے کی ضرورت پر زوردیا ہے۔

ایردوآن نے یو این میں اٹھایا مسئلہ کشمیر، ’اندرونی معاملات میں دخل نہ دے ترکی‘ انڈیا کی تاکید

 جموں و کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن کے بیان پر اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ ٹی ایس ترومورتی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو دوسرے ممالک کی خودمختاری کا احترام کرنا سیکھنا چاہئے۔