کرناٹک بحران: رہا ہونے کے بعد  ڈی کے شیوکمار سخت برہم 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th July 2019, 11:41 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

نئی دہلی 10جولائی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کرناٹک میں سیاسی بحران کے درمیان حراست میں لئے گئے کانگریس کے قدآور لیڈر ڈی کے شیو کمار کو ممبئی پولیس نے رہا کر دیا ہے۔ حراست سے رہا ہونے کے بعد ڈی کے شیو کمار نے بی جے پی اور ممبئی پولیس پر جم کر حملہ بولا۔ انہوں نے کہا کہ ممبئی پولیس کو شرم آنی چاہئے انہوں نے مجھے میرے شہری حقوق کے استعمال سے روکا ہے۔ ہوٹل میں میری بکنگ تھی لیکن مجھے ہوٹل کے عملے نے بتایا کہ ان پر بھی دباؤ بنایا جا رہا ہے۔ میں صرف اتنا کہنا چاہتا ہوں کہ جمہوریت میں حکومت آتی اور جاتی ہے، لیکن کسی کو بھی قانون کا غلط استعمال نہیں کرنا چاہئے۔ میں قانون پر انحصار کرنے والا شہری ہوں، یہاں اپنے دوستوں اور پارٹی سے وابستہ لوگوں سے ملنے آیا تھا، لیکن وہ مجھے ان سے ملنے نہیں دے رہے ہیں، جبکہ پارٹی کے ممبر اسمبلی مجھ سے ملنا چاہتے ہیں۔ میں آپ کو صاف کر دینا چاہتا ہوں کہ ممبئی پولیس نے جو دلیل دی ہے وہ حقیقت سے کوسوں دور ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی باغیوں کو تحفظ فراہم کر رہی ہے۔

غور طلب ہے کہ اس سے پہلے کانگریس کے باغی اراکین اسمبلی سے ملنے آئے ڈی کے شیو کمار کو ممبئی پولیس نے حراست میں لے لیا تھا۔ ڈی کے شیو کمار ، ملند دیوڑا کے ساتھ مل کر کانگریس ممبران اسمبلی سے ملنے جا رہے تھے۔ کانگریس کے وزیر ڈی کے شیو کماراور جے ڈی ایس ممبر اسمبلی شوا لنگا گوڑا بدھ کو اسپیشل فلائٹ سے بنگلور سے ممبئی پہنچے تھے۔ دونوں لیڈر باغی ممبران اسمبلی سے ملاقات کرنے کے لئے ممبئی پہنچے تھے۔ اگرچہ ممبئی کے جس ہوٹل میں باغی ممبر اسمبلی ٹھہرے ہیں،وہاں کی سیکورٹی بڑھا دی گئی تھی۔ 

ایک نظر اس پر بھی

بنگلور میں احتجاجیوں اور پولس کے درمیان زبردست جھڑپ؛ پولس فائرنگ میں دو کی موت؛ فیس بُک پر توہین آمیز پوسٹ پرعوام نے کیا تھا پولس تھانہ کا گھیراو

 فیس بُک پر مبینہ طور پر  پیغمبر اسلام حضرت محمد ﷺ کے خلاف توہین آمیز مسیج پوسٹ کرنے پر سخت برہمی ظاہر کرتے ہوئے بنگلور کے جی ہلی پولس تھانہ کے باہر  جمع ہوکرایک فرقہ کے لوگوں نے جب احتجاج کیا تو یہی احتجاج بعد میں تشدد میں تبدیل ہوگیا جس کے نتیجے میں بتایا جارہا ہے کہ ...

اننت کمار ہیگڈے نے لگایابی ایس این ایل میں دیش دروہی افسران موجود ہونے کا الزام

اپنے متنازعہ بیانات کے لئے پہچانے جانے والے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے الزام لگایا کہ بھارت سنچار نگم لمیٹڈ کے اندر دیش دروہی افسران بیٹھے ہوئے جس کی وجہ سے اس کے کام کاج میں کوئی ترقی نہیں ہورہی ہے۔ اس لئے آئندہ دنوں میں اس کی نج کاری (پرائیویٹائزیشن) کیا جائے گا۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...

کرناٹک میں موسلادھاربارش سے 4000کروڑروپئے کا نقصان، فوری طورپرمناسب امداد ی رقم جاری کرنے ریاستی حکومت کی مرکزی حکومت سے اپیل

ریاست میں پچھلے چنددنوں سے ہورہی موسلادھاربارش کے نتیجہ میں سیلابی صورتحال سے 4000کروڑ روپئے نقصان کااندازہ لگایاگیاہے۔ اس سلسلہ میں ریاستی حکومت نے مرکزی حکومت سے درخواست کرتے ہوئے اپیل کی ہے کہ ریاست کرناٹک بارش اورسیلاب متاثرین کی بازآبادکاری اور تباہ فصلوں کی تلافی کے ...

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

راجستھان میں سیاسی صلح، بی جے پی کے منھ پر زور کا طمانچہ: کانگریس

کانگریس نے راجستھان یونٹ میں کئی دنوں سے جاری تنازعہ کے سلجھنے پر ریاست کے عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے اسے پارٹی اعلیٰ کمان کے ’سب کو ساتھ لے کر چلنے‘ کی پالیسی کا نتیجہ بتایا کہ اور کہا کہ یہی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو کرارا جواب ہے۔

یو جی سی امتحانات معاملے میں سماعت جمعہ تک ملتوی

سپریم کورٹ نے پیر کے روز حکومت سے یہ جاننے کی کوشش کی کہ کیا اسٹیٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) کی ہدایت کو متاثر کر سکتا ہے؟ ۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے معاملے کی سماعت 14 اگست تک ملتوی کردی ۔