اترکنڑا ضلع کو سیلاب سےمتاثرضلع قرار دینے پر ضلع نگراں کار سکریٹری کی تحصیلداروں کے ساتھ وڈیوکانفرنس میٹنگ : فوری راحت کاری اقدامات کرنےکی ہدایت

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 10th August 2019, 9:39 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:10؍اگست(ایس اؤ نیوز)ریاستی حکومت کی طرف سے17اضلاع کے 80تعلقہ جات کو  سیلاب سے متاثرہ علاقے قرار دینے والی فہرست میں  اترکنڑا ضلع کے 10تعلقہ جات کو شامل کرتے ہی اترکنڑا ضلع نگراں کار سکریٹری منیش مڈگل نے وڈیوکانفرنس کے ذریعے ضلع کے ڈی سی سمیت سبھی تحصیلدار وں سے میٹنگ کرتے ہوئے فوری اقدامات کرنےکی ہدایات جاری کی ہیں۔

وڈیوکانفرنس میں نگراں کار سکریٹری نے بتایا کہ سیلاب سےمتاثرہ علاقوں میں اب تک جو راحت کاری کےکام ہوئے ہیں وہ بہتر بتاتے ہوئے افسران سے کہاکہ  سیلاب کے بعد متاثرین کو معاوضہ اور معمول پر لانے کے لئے تمام ضروری اقدامات کرنے ہیں۔ اس سلسلےمیں سنجیدگی سے معائنہ کرنے کے بعد اگلے 24گھنٹوں میں عملی اقدام کریں اور ا س سلسلےمیں کیا کیاکام ہوئے ہیں ان کی رپورٹ دینےکاحکم جاری کیا ہے۔

فی الحال اترکنڑا ضلع میں جاری  116گنجی کیندر(راحت کاری مرکز ) کے حالات کاجائزہ لےکر واضح رپورٹ بنائیں۔ سیلاب سے متاثرہ علاقوں کے گھروں کو پہنچے نقصانات ،زیر آب علاقوں کے لئے ضروری کپڑے، برتن ، سامان کی تفصیل ، غذا کی کمی یا نقصان کی جانکاری ، جانی نقصان، جانوروں کی ہلاکت زراعت کا کل نقصان ، عمارات ، سڑکیں وغیرہ کے نقصانات اور ان کی باز آبادکاری کے متعلق عملی نقشہ تیارکرکے اگلے 24گھنٹوں میں رپورٹ دینے کی ہدایت کی ہے۔ بقیہ دنوں میں جو کچھ کام کرنے ہیں اس کی تفصیلی رپورٹ بعد میں لینے کی بات کہی۔ میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار، ضلع پنچایت سی ای اؤ محمدر وشن سمیت ضلع کے سبھی تحصیلدار شریک تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: مرڈیشور میں راہ چلتی خاتون کو اغوا کرنے کی کوشش ہوگئی ناکام؛ علاقہ میں تشویش کی لہر

تعلقہ کے مرڈیشور میں ایک خاتون کو اغوا کرنے کی کوشش اُس وقت  ناکام ہوگئی جب اُس نے ہاتھ پکڑ کھینچتے وقت چلانا اور مدد کے لئے پکارنا شروع کردیا،  وارات  منگل کی شب قریب نو بجے مرڈیشور کے نیشنل کالونی میں پیش آئی۔واقعے کے بعد بعد نہ صرف مرڈیشور بلکہ بھٹکل میں بھی تشویش کی لہر ...

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

ساگر مالا منصوبہ: انکولہ سے بیلے کیری تک ریلوے لائن بچھانے کے لئے خاموشی کے ساتھ کیاجارہا ہے سروے۔ سیکڑوں لوگوں کی زمینیں منصوبے کی زد میں آنے کا خدشہ 

انکولہ کونکن ریلوے اسٹیشن سے بیلے کیری بندرگاہ تک ’ساگر مالا‘ منصوبے کے تحت ریلوے رابطے کے لئے لائن بچھانے کا پلان بنایا گیا اور خاموشی کے ساتھ اس علاقے کا سروے کیا جارہا ہے۔

ماڈرن زندگی کا المیہ: انسانوں میں خودکشی کا بڑھتا ہوا رجحان۔ ضلع شمالی کینرا میں درج ہوئے ڈھائی سال میں 641معاملات!

جدید تہذیب اور مادی ترقی نے جہاں انسانوں کو بہت ساری سہولتیں اور آسانیاں فراہم کی ہیں، وہیں پر زندگی جینا بھی اتنا ہی مشکل کردیا ہے۔ جس کے نتیجے میں عام لوگوں اور خاص کرکے نوجوانوں میں خودکشی کا رجحان بڑھتا جارہا ہے۔

منگلورو پولیس نے ایک اور مشکوک کار کو پکڑا؛ پنجاب نمبر پلیٹ والی کار کے تعلق سے پولس کو شکوک و شبہات

دو دن دن پہلے لٹیروں اور جعلسازوں کی ایک ٹولی کے قبضے سے منگلورو پولیس نے ایسی کار ضبط کی تھی جس پر نیشنل کرائم انویسٹی گیشن بیوریو، گورنمنٹ آف انڈیا لکھا ہوا تھا۔اب مزید ایک مشکوک کار کو پولیس نے اپنے قبضے میں لیا ہے۔ جس پر بھی گورنمینٹ آف انڈیا لکھا ہوا ہے۔