سرکاری اسکولوں کو ترقی دینے کیلئے محکمہ تعلیم کا منصوبہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th June 2019, 12:02 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11؍جون(ایس او نیوز)  ریاست بھر کی سرکاری اسکولوں میں بنیادی سہولیات کی عدم موجودگی کی وجہ سے نہ صرف طلباء کے نئے داخلوں میں کمی واقع ہو رہی ہے بلکہ پہلے سے موجود طلباء بھی بڑی تعداد میں اسکول چھوڑتے جا رہے ہیں، یہی وجہ ہے کہ محکمہ برائے تحتانوی و ثانوی تعلیم سرکاری اسکولوں میں کلاس رومس، استنجاء خانے و بیت الخلا وغیرہ کی تعمیر، پینے کے صاف پانی کی فراہمی، اسمارٹ کلاسس کی ابتداء، کتب خانوں کا قیام اور دیگر سہولیات کی فراہمی کے ذریعہ ان اسکولوں کو ترقی دینا چاہتا ہے-محکمہ برائے تعلیم کے ایک اعلیٰ افسر کا کہنا ہے کہ سرکاری اسکولوں میں بنیادی سہولیات کے موجود نہ ہونے کی وجہ سے غریب والدین کو اپنے بچوں کی عمدہ تعلیم کے لئے خانگی اسکولوں کے بھاری اخراجات مجبوراً برداشت کرنے پڑتے ہیں -پرائمری اور سکینڈری تعلیم محکمہ کے ایک اعلیٰ افسر نے بتایا کہ ”اس صورت حال پر قابو پانے کے لئے، ریاستی حکومت نے ترقی یافتہ تعلیمی نظام کی طرف قدم بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے اورسرکاری اسکولوں کو اعلیٰ اور بین الاقوامی معیار کی سہولیات کے ساتھ قوت اور مضبوطی و ترقی فراہم کرنے کے لئے کارپوریٹ کمپنیوں، عوامی معاونین اور غیر سرکاری تنظیموں اور اداروں کو محکمہ کے ساتھ جڑنے اور تعاون کرنے کے لئے تیار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے، تاکہ کسی بھی بچہ کو اس کے والدین کی مالی پریشانیوں اور پسماندگی کی وجہ سے معیاری اور عمدہ تعلیم سے محروم نہ ہونا پڑے“-ذرائع کے مطابق ریاست کے تقریباً 37خانگی اداروں نے محکمہ برائے تعلیم کے ساتھ اشتراک کرنے کے سلسلہ میں اپنی رصامندی کا اظہار کیا ہے اور ان کمپنیوں کی طرف سے یہ تعاون مختلف شعبہ جات میں ہوگا-

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری؛ پھر 1498 نئے معاملات، صرف بنگلور سے ہی سامنے آئے 800 پوزیٹیو

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری ہے اور ریاست  میں روز بروز کورونا کے معاملات میں اضافہ دیکھا جارہا ہے، ریاست کی راجدھانی اس وقت  کورونا کا ہاٹ اسپاٹ بنا ہوا ہے جہاں ہر روز  سب سے زیادہ معاملات درج کئے جارہے ہیں۔ آج منگل کو پھر ایک بار کورونا کے سب سے زیادہ معاملات بنگلور سے ہی ...

کورونا: ہندوستان میں ’کمیونٹی اسپریڈ‘ کا خطرہ، اموات کی تعداد 20 ہزار سے زائد

  ہندوستان میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملوں کے درمیان کمیونٹی اسپریڈ یعنی طبقاتی پھیلاؤ کا  اندیشہ بڑھتا نظر آرہا ہے۔ بالخصوص کرناٹک  میں کورونا انفیکشن کے کمیونٹی اسپریڈ کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ کرناٹک کے علاوہ گوا، پنجاب و مغربی بنگال کے نئے ہاٹ اسپاٹ بننے کے ...

منگلورو:گروپور میں منڈلارہا ہے مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ۔ قریبی گھروں کو کروایا گیاخالی۔ مکینوں میں مایوسی اور دہشت کا عالم

گروپور میں اتوار کے دن بنگلے گُڈے میں پہاڑی کھسکنے سے جہاں  تین  مکان زمین بوس اور دو بچے، صفوان (16سال) اور سہلہ (10سال) جاں بحق ہوگئے تھے وہاں پر مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ لوگوں کے سر پر منڈلا رہا ہے۔

ساری توجہ کورونا پر ہے تو کیا دیگر مریض مرجائیں۔۔۔ ؟؟ اسپتالوں میں علاج دستیاب نہ ہونے کے سبب غیر کورونا مریضوں کی اموات میں بے تحاشہ اضافہ

شہر بنگلورو میں کورونا وائرس جس تیزی سے پھیل رہا ہے اس کے ساتھ شہر میں صحت کا انفرسٹرکچر سرکاری سطح پر کس قدر ناقص ہے وہ سامنے آرہا ہے اس کے ساتھ ہی یہ بات بھی سامنے آرہی ہے کہ بڑے بڑے اسپتال کھول کر انسانیت کی خدمت کرنے کا دعویٰ کرنے والے تجاری اداروں کے دعوے کورونا وائرس کے ...