دہلی میں لاک ڈاؤن 5.0 سے متعلق وزیر اعلیٰ کیجریوال نے کیے کئی اعلانات

Source: S.O. News Service | Published on 1st June 2020, 9:14 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،یکم جون (ایس او نیوز؍ایجنسی) ہندوستان میں آج سے لاک ڈاؤن 5.0 کا آغاز ہو چکا ہے اور اس کے ساتھ ہی کئی ریاستوں نے 'اَن لاک 1.0' کی بھی شروعات کر دی ہے۔ اس درمیان دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے لاک ڈاؤن 5.0 کے مدنظر راجدھانی کے لیے کئی نئے اعلانات کیے اور رہنما ہدایات بھی جاری کیے۔ کیجریوال نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ آئندہ ایک ہفتے تک دہلی کے بارڈر سیل رکھے جائیں گے اور اس دوران صرف ضروری خدمات سے جڑے لوگوں کو ہی آمد و رفت کی اجازت ملے گی۔ انھوں نے مزید کہا کہ اب تک جن دکانوں کو کھولنے کی اجازت دہلی میں دی گئی تھی، ان کے علاوہ نائی کی دکانیں اور سیلون بھی کھولے جائیں گے، لیکن اسپا فی الحال بند رہیں گے۔

وزیر اعلیٰ نے لاک ڈاؤن 5.0 میں نرمی سے متعلق تذکرہ کرتے ہوئے میڈیا سے کہا کہ آٹو رکشہ میں ایک سواری پر سے پابندی ہٹائی جا رہی ہے۔ پہلے دو پہیہ اور چار پہیہ گاڑیوں پر جو سواریوں کی پابندیاں تھیں، وہ بھی ہٹائی جا رہی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم بازاروں میں دکانیں کھولنے کے لیے آڈ-ایون (طاق-جفت) ضابطہ پر عمل کر رہے تھے، لیکن مرکزی حکومت نے ایسا کوئی ضابطہ نہیں رکھا ہے، اس لیے اب سے سبھی دکانیں کھل سکتی ہیں۔

اپنی بات آگے بڑھاتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ "اَن لاک کے لیے مجھے آپ کے مشوروں کی ضرورت ہے۔ آپ اپنے مشورے جمعہ 5 بجے تک وہاٹس ایپ نمبر 8800007722 پر بھیج سکتے ہیں یا پھر [email protected] پر ای میل کر سکتے ہیں۔ اگر آپ کے پاس وہاٹس ایپ نہیں ہے تو آپ 1031 پر فون کریں، آپ کے مشورے ریکارڈ کر لیے جائیں گے۔"

یہ بھی پڑھیں : چین نے ہندوستان کو دی دھمکی، کہا ’چین-امریکہ تنازعہ میں مداخلت برداشت نہیں‘

قابل ذکر ہے کہ اس سے قبل وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا تھا کہ فی الحال کورونا وائرس کا کوئی علاج نہیں ڈھونڈا جا سکا ہے اور لاک ڈاؤن میں معیشت کی حالت خستہ ہوتی جا رہی ہے اس لیے کچھ سخت قدم اٹھانے کی ضرورت ہے۔ کیجریوال نے اشارہ دیا تھا کہ دھیرے دھیرے بازار کھولے جائیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی کا انتقال

 کوہ کن کے معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ء ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی نے سنیچر کے روز مختصر علالت کے بعد 84 سال کی عمر میں داعی اجل کو لبیک کہہ دیا۔ موصوف قدیم دینی و علمی درسگاہ دار العلوم حسینیہ شری وردھن ضلع رائے گڑھ (مہاراشٹرا) کے مہتمم بھی تھے۔

’کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے؟ مودی جی کو بتانا چاہیے‘

 کانگریس نے کہا ہے کہ چین نے وادی گلوان میں ہندوستانی حدود میں دراندازی کی ہے اور اس کے فوجی دستے ملک کے اسٹریٹجک نقطہ نظر سے متعدد اہم علاقوں میں تعینات ہیں، اس لیے اب وزیر اعظم نریندر مودی کو یہ بتانا چاہiے کہ کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے۔