کیرالہ میں سیلاب سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 123 ہوئی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th August 2019, 9:47 PM | ملکی خبریں |

ترواننت پورم،20؍اگست(ایس او نیوز؍یو این آئی) کیرالہ میں شدید بارش کی وجہ سے سیلاب اور تودے گرنے کے واقعات میں مرنے والوں کی تعداد منگل کو بڑھ کر123ہوگئی جبکہ 19لوگ اب بھی لاپتہ ہیں۔

سرکاری ذرائع کے مطابق ریاست کے مختلف اضلاع میں آٹھ اگست سے شروع ہوئی شدید بارش اور اس کے بعد سیلاب اور تودے گرنے کی وجہ سے بےگھر ہوئے 4008خاندانوں کے 13286لوگ اب بھی 113راحت کیمپوں میں رہ رہے ہیں۔اس کے علاوہ پانی کی سطح کم ہونے کے بعد کئی مراکز سے لوگ اپنے اپنے گھروں کو لوٹ بھی چکےہیں۔

ذرائع کے مطابق ملپوم ضلع میں 58، کوہزیکوڈ میں 17، وائناڈ میں 14، تریشور اور کنور میں نو نو، الپوجھا میں چھ، اڈوکی میں پانچ، کوٹایم اور کسار گوڈ میں دو دو اور پلاکڑ میں ایک شخص کی موت ہوگئی ہے۔ اس کے علاوہ ملپورم سے 13، وائناڈ سے پانچ اور کوٹائم سے ایک شخص سمیت 19 لوگ لاپتہ ہیں۔

کیرالہ حکومت کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق سیلاب کی وجہ سے جتنے بھی لوگ لاپتہ ہوئے ہیں جب تک انہیں تلاش نہیں کر لیا جاتا یا ان کی لاش برآمد نہیں ہو جاتی، سرچ آپریشن جاری رہے گا۔

ذرائع نے بتایا کہ سیلاب اور تودے گرنے کی وجہ سے 1789 مکان پوری طرح تباہ ہوگئے اور 14548 مکان اور عمارت جزوی طور پر تباہ ہو گئے ہیں۔

کیرالہ کے علاوہ جنوبی ہند کی ایک اور ریاست کرناٹک میں بھی بارش اور سیلاب میں بھاری جانی و مالی نقصان ہوا ہے اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد 76 سے تجاوز کر گئی ہے۔ اس دوران تقریباً 992 مویشیوں کی بھی ہلاکت ہوئی۔ ریاست کے 22 اضلاع کے 103 تعلقہ میں تقریباً 6.9 لاکھ ہیکٹیئر زمین پر کھڑی فصل برباد ہو گئی ہے۔ دریں اثنا، تقریباً 75317 رہائشی مکانوں کو نقصان پہنچا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں آر ایس ایس کارکن گرفتار، پوچھ تاچھ میں ہوئے حیرت انگیز انکشافات

پڑوسی ریاست کیرالہ  کے کنور میں آر ایس ایس دفتر کے پاس واقع پولس پوسٹ پر بم پھینکے جانے کے الزام میں پولس نے آر ایس ایس کارکن کو گرفتار کرنے کی خبر موصول ہوئی ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق تمل ناڈو کے کوئمبٹور سے آر ایس ایس کا یہ ورکر بدھ کے روز گرفتار ہوا جس کے بعد اس سے سختی کے ...

اندرا جے سنگھ کے بیان پر کنگنا کا نازیبا تبصرہ؛ ایسی خواتین کی کوکھ سے عصمت دری کرنے والے پیدا ہوتے ہیں

نربھیا عصمت دری معاملہ مستقل خبروں میں بنا ہوا ہے اور اب مجرموں کو پھانسی دینے کا معاملہ سرخیوں میں ہے۔ نربھیا کے والدین ذرائع ابلاغ کے لئے سیلیبریٹی سے کم نہیں ہیں اور اسی وجہ سے حال ہی میں دہلی اسمبلی انتخابات میں یہ بات بہت تیزی کے ساتھ پھیلی کہ نربھیا کی والدہ اسمبلی چناؤ ...

راجستھان: کوٹہ میں بھی خواتین نے بنایا ’شاہین باغ‘، احتجاج کا سلسلہ 9 دنوں سے جاری

دہلی کے شاہین باغ سے تحریک لیکر ملک کے مختلف طول و عرض میں شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف خواتین کے مظاہروں کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ ت تکنیکی تعلیمی اداروں کے لیے مشہور راجستھان کے شہر کوٹہ میں بھی خواتین نے ایک ’شاہین باغ‘ قائم کر لیا ہے اور گذشتہ 9 روز سے ...

میری بیٹیوں پر مقدمہ درج ہوا تو امت شاہ پر کیوں نہیں؟ منور رانا

شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف مظاہرے میں شامل ہونے کی پاداش میں اپنی بیٹیوں کے خلاف مقدمہ درج لکھے جانے کے بعد اردو کے نامور شاعر منور رانا نے امت شاہ کی لکھنؤ ریلی پر سوال اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جلسہ عام سے خطاب کر کے انتظامیہ کی طرف سے ...

ملک گیر احتجاج: ’شاہین باغ کی دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے ایل جی کے پاس لے جایا گیا‘

قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ مظاہرین انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ احتجاج جاری رہے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے لیفٹننٹ گورنر سے ملاقات کرائی گئی تھی اور جو لوگ انہیں وہاں لے کر گئے تھے وہ شاہین باغ خواتین مظاہرین کی ...