آسٹریلیائی کرکٹر نے مجھے’اسامہ‘ کہا، یہ واحد ٹیم ہے جو مجھے پسند نہیں: معین علی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th September 2018, 1:31 PM | اسپورٹس |

ملبورن،17؍ستمبر (ایجنسی)  انگلینڈ کے آل راؤنڈر معین علی کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا کو میں اس لیے ناپسند نہیں کرتا کہ وہ ہمارا روایتی حریف ہے، بلکہ اس کو ناپسند کرنے کی وجہ اس کے کھلاڑیوں کا رویہ ہے جو کسی کو عزت نہیں دیتے۔

انگلینڈ ٹیم کے مشہور و معروف کرکٹ کھلاڑی معین علی نے آسٹریلیائی کرکٹروں کے رویے اور ان کے ذریعہ اپنے اوپر کیے گئے قابل اعتراض کمنٹ کے تعلق سے انتہائی اہم انکشاف کیا ہے۔ کرکٹ ویب سائٹ ’کرک انفو‘ نے اس سلسلے میں معین علی کے حوالے سے کہا ہے کہ 2015 میں ایشیز سیریز کے دوران آسٹریلیا کے ایک کھلاڑی نے انھیں ’اوسامہ‘ کہہ کر بلایا جس سے انھیں بہت تکلیف ہوئی۔

معین علی نے 2015 میں کارڈف میں ہوئے ایشیز سیریز کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ پہلے ٹیسٹ میچ میں ان کے خلاف قابل اعتراض تبصرہ کیا گیا جس سے وہ بہت پریشان ہوئے۔ علی نے بتایا کہ اس میچ میں انھوں نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور پہلی اننگ میں 77 رن بنانے کے علاوہ 5 وکٹ بھی لیے تھے۔ اس کارکردگی کی وجہ سے انگلینڈ کو اس ٹیسٹ میں 169 رنوں سے فتح بھی حاصل ہوئی تھی۔ علی کا کہنا ہے کہ ’’ذاتی کارکردگی کے اعتبار سے میرے لیے وہ ایشیز سیریز بہت کامیاب رہی لیکن اس دوران ایک واقعہ ایسا ہوا جس نے میرا ذہن منتشر کر دیا۔‘‘

واقعہ کے تعلق سے علی بتاتے ہیں کہ ’’میچ کے دوران میدان پر ایک آسٹریلیائی کھلاڑیہ میری طرف مڑا اور بولا ’ٹیک دیٹ اسامہ‘۔ میں یہ سن کر حیران رہ گیا اور مجھے یقین نہیں ہوا۔ میں غصے سے لال ہو گیا۔ اس واقعہ سے پہلے مجھے میدان پر اتنا غصہ کبھی نہیں آیا۔‘‘ وہ مزید کہتے ہیں کہ ’’میں نے اپنی ٹیم کے کئی ساتھیوں کو بتایا اور میں سمجھتا ہوں کہ کوچ ٹریور بیلس نے آسٹریلیائی کوچ ڈیرن لیہمن کے سامنے اس بات کو رکھی ہوگی۔ لیکن لیہمن نے جب آسٹریلیائی کھلاڑی سے اس سلسلے میں پوچھا تو اس نے یہ کہتے ہوئے منع کر دیا کہ اس نے مجھے ’ٹیک دیٹ پارٹ ٹائمر‘ کہا تھا۔‘‘

معین علی کا کہنا ہے کہ یہ بات سن کر انھیں بہت حیرانی ہوئی، لیکن میں کچھ نہیں کر سکتا تھا کیونکہ آپ کو کھلاڑی کی بات ماننی ہوتی ہے۔ اس واقعہ سے معین علی اس قدر پریشان ہوئے کہ پورے میچ کے دوران غصے اور ذہنی انتشار کی حالت میں رہے۔ لیکن انگلینڈ کے لیے اچھی بات یہ ہوئی کہ وہ 2015 میں ہوئے اس ایشیز سیریز میں 2-3 سے فتحیاب ہوئی۔

علی نے اپنے اوپر قابل اعتراض کمنٹ کرنے والے آسٹریلیائی کرکٹر کا نام تو ظاہر نہیں کیا لیکن یہ ضرور کہا کہ صرف وہ کھلاڑی نہیں بلکہ آسٹریلیا کا تقریباً ہر کھلاڑی اپنے سامنے والے کی عزت نہیں کرتا۔ انھوں نے آسٹریلیائی ٹیم کو غیر مہذب قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’’یہ تنہا ٹیم ہے جو مجھے پسند نہیں۔ میں جتنی بھی ٹیموں کے ساتھ کھیلا ہوں ان میں سے آسٹریلیا مجھے بالکل بھی پسند نہیں۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

آئی پی ایل فائنل میں چنئی نے دی کولکاتا نائٹ رائڈرس کو شکست، چنئی بنا چوتھی مرتبہ آئی پی ایل چیمپئن

سلامی بلے باز ڈو پلیسسز (86) کی بہترین نصف سنچری کے ساتھ روبن اتھپا کے (31) اور معین علی کے (ناٹ آؤٹ37) کی جارحانہ اننگز کے نتیجے میں چنئی سپر کنگس نے کولکاتا نائٹ رائڈرس کو  27 رنوں سے شکست دے دی اور چوتھی بار آئی پی ایل چمپئن بننے کا فخر حاصل کرلیا۔ 

آئی پی ایل 2021: کولکاتہ تیسری مرتبہ آئی پی ایل کے فائنل میں ، راہل ترپاٹھی نے چھکا لگا کر دلائی جیت

)  آئی پی ایل 2021 کا خطابی مقابلہ اب کولکاتہ نائٹ رائیڈرس اور چنئی سپرکنگس کے درمیان کھیلا جائے گا ۔ کے کے آر نے کوالیفائر 2 کے میچ میں دہلی کیپیٹلز کو 3 وکٹوں سے شکست دیدی ہے ۔ دہلی کی ٹیم پوائنٹس ٹیبل پر سرفہرست رہی تھی اور اس کو کوالیفائر 1 میں چنئی سپرکنگس نے شکست دی تھی ۔ میچ ...

چنئی نے ریکارڈ بنایا، نویں بار آئی پی ایل کے فائنل میں پہنچی، دہلی کو دی شکست

دبئی میں کھیلے گئے کوالیفائنگ مقابلہ میں چنئی سپر کنگس (سی ایس کے) نے دہلی کیپیٹلس کو شکست دے کر فائنل میں اپنی جگہ بنا لی ۔ سی ایس کے کپتان دھونی نے ایک شاندار پاری کھیلتے ہوئے چھہ گیندوں میں 18 رن بنائے اور آخری گیند پر چوکا لگاکر ٹیم کو جیت دلائی۔رابن اتھپا اور رتو راج ...