اقوام متحدہ کے رول کو كووڈ -19 نے اہم بنادیا: وولكن بوذكر

Source: S.O. News Service | Published on 17th May 2020, 2:07 PM | عالمی خبریں |

اقوام متحدہ،17؍مئی (ایس او نیوز؍ایجنسی)  اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے آئندہ 75 ویں اجلاس کی صدارت کرنے والے وولكن بوذكر کا خیال ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس (كووڈ -19) کی موجودہ مشکل صورتحال نے اقوام متحدہ اور اس کی ایجنسیوں کے کردار كو کافی اہم بنا دیا ہے۔

وولكن بوذكر نے گزشتہ روز اقوام متحدہ کے رکن ممالک کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے بحث کے دوران یہ بات کہی۔ انہوں نے اس سال ستمبر میں منعقد ہونے والے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے تاریخی 75 ویں اجلاس کے دوران صدر کے طور پر اپنی ترجیحات کا بھی ذکر کیا۔

وولكن بوذكر نے کہا ’’کورونا وائرس (كووڈ -19) انفیکشن کا پھیلنا اور اسی دوران اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا 75 ویں اجلاس ہونا ایک کنکشن ہے، یہ کثیر الجہتی مؤثر تصور کو یاد دلاتا ہے جس میں خاص طور پر اقوام متحدہ اور اس کی ایجنسیوں کا اہم کردار شامل ہے۔ کورونا وائرس کا انفیکشن حدود میں تمیز نہیں کرتا، اس کے خلاف جنگ میں الزام، ناانصافی اور عدم مساوات کی جگہ نہیں ہونی چاہیے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کو كووڈ -19 سے پاک بنانے کے لئے پوری دنیا میں وسیع سطح پر عوامی صحت کی دیکھ بھال اور سماجی اصلاحات کی ضرورت ہو گی۔

وولكن بوذكر نے موجودہ كووڈ -19 بحران کے دوران اقوام متحدہ کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی ستائش کی جس میں تعاون اور یکجہتی کی روح پر زور دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا’’مجھے پورا یقین ہے کہ جنرل اسمبلی اپنی عالمگیر رکنیت اور اپنے تمام ارکان کی یکساں حیثیت کے ساتھ ان کے جمہوری اقدار کا احترام کرتے ہوئے اس وبا سے نمٹنے کے لئے سیاسی رہنمائی فراہم کرنے کے لئے بہترین اور مناسب پلیٹ فارم ہے‘‘۔

وولكن بوذكر نے ترکی کی وزارت خارجہ میں تقریباً 40 سال تک کام کیا ہے اور اس بار 193 ارکان پر مشتمل تنظیم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی صدارت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے بڑے گروپوں اور بین الاقوامی تنظیموں کے درمیان اعتماد پیدا کرنا اور ان کے درمیان تعاون کے احساس کو فروغ دینا ان کی ترجیح ہو گی تاکہ دنیا میں محروم طبقے کے لوگوں کو اپنی آواز اٹھانے کا موقع مل سکے۔

وولكن بوذكر نے اپنی مدت کار کے بارے میں کہا کہ اقوام متحدہ کی تنظیموں اور گروپوں کے درمیان مختلف ایشوز پر اتفاق رائے بنانا ان کے کام کا اہم حصہ ہو گا۔ افریقی ممالک کی ضرورتوں اور ان کے مسائل کی طرف خصوصی توجہ دی جائے گی۔ 2030 تک مسلسل ترقی کے اہداف کو حاصل کرنے کی سمت میں ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

امریکہ: ٹرمپ کی فوج تعیناتی کی دھمکی پر فسادات میں شدت، ایئرفورس بیس میں فائرنگ سے 2 اہلکار ہلاک

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ملک میں فوج تعینات کرنے کی دھمکی پر امریکہ بھر میں فسادات میں مزید شدت آگئی۔ پوسٹمارٹم رپورٹ میں سیاہ فام جارج فلائیڈ کی موت کو قتل قراردیدیا گیا جبکہ ریاست ڈکوٹا میں ایئر فورس بیس میں فائرنگ کے نتیجہ میں 2 اہلکار ہلاک ہوگئے ۔

پوری دنیا میں کورونا کا قہر جاری، متاثرین کی تعداد 63 لاکھ سے تجاوز

پوری دنیا میں عالمی وبا کورونا وائرس کا قہر جاری ہے اور ہر روز متاثرین اور اس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد میں مستقل اضافہ ہو رہا ہے۔تازہ اعداد و شمار کے مطابق کورونا متاثرین کی تعداد 63لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ اس وبا سے اب تک 3.73لاکھ سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔

عراق: فضائی حملے میں دو فوجی اور دو دہشت گردوں کی موت

عراق کے صوبہ نینوا اور دييالہ میں پیر کو ایک فضائی حملے اور ایک بم دھماکے میں دو فوجی ہلاک ہو گئے جبکہ دو دہشت گرد بھی مارے گئے۔ عراق کے جوائنٹ آپریشن کمانڈ کے میڈیا آفس نے ایک بیان میں بتایا کہ ایک حملہ میں دوعراقی فوجی ہلاک اور دو دیگر زخمی ہو گئے۔

انگلینڈ میں لاک ڈاؤن میں نرمی، 10 ہفتوں بعد کھلے اسکول

10 ہفتوں کے بعد برطانیہ کے انگلینڈ ریجن میں لاک ڈاؤن کے بعد اسکول کھول دیئے گئے، مگر نصف کے قریب والدین نے اپنے بچوں کو اسکول بھیجنے سے گریز کیا ہے۔ برطانوی حکومت نے گزشتہ روز لاک ڈاؤن میں نرمی کرنے کا اعلان کیا تھا جس میں اسکولوں کا کھولا جانا بھی شامل تھا، کچھ علاقوں میں ...