گزشتہ 24 گھنٹے میں ریکارڈ 21 ہزار نئے کورونا کیسز سے ہندوستان میں دہشت

Source: S.O. News Service | Published on 3rd July 2020, 11:04 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،3؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) ہندوستان میں کورونا انفیکشن کا پھیلاؤ جاری ہے اور گزشتہ 24 گھنٹے میں ریکارڈ 20903 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔ اس سے قبل ایک دن میں نئے کیسز کی تعداد 20 ہزار سے نیچے ہی رہی تھی۔ اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ فی الحال کورونا بے قابو ہے اور اگر جلد اس پر کنٹرول نہیں کیا گیا تو حالات انتہائی خراب ہو جائیں گے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں اچھی بات صرف یہ رہی کہ کورونا وبا میں مبتلا مریضوں میں پہلی بار 20 ہزار سے زیادہ افراد اس انفیکشن سے پاک بھی ہو گئے۔

صحت و خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کے جمعہ کے روز جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق، ملک بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 20032 مریض انفیکشن سے پاک ہوچکے ہیں، جو ایک دن میں اب تک کی سب سے زیادہ تعداد ہے، جنہیں ملاکر 379892 افراد صحتمند ہوگئے ہیں۔ صحت یاب ہونے والوں میں سے بیشتر کا تعلق مہاراشٹر، تمل ناڈو اور دہلی سے ہے۔ مہاراشٹرا میں 8018 افراد، تمل ناڈو میں 3095 مریض اور دہلی میں 3015 مریض انفیکشن سے پاک ہوئے ہیں۔ ان تینوں ریاستوں میں بھی متاثرہ افراد کی تعداد ملک کے حصوں کے مقابلے سب سے زیادہ ہے۔

ہندوستان میں کورونا انفیکشن کے ریکارڈ 20903 نئے معاملوں کے ساتھ متاثرہ افراد کی کل تعداد 625544 ہوگئی ہے۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران 379 افراد اس انفیکشن کی وجہ سے ہلاک ہوئے ہیں جس سے ہلاک ہونے والوں کی کل تعداد 18213 ہوگئی ہے۔ اس وقت ملک میں کورونا انفیکشن کے 227439 فعال کیس ہیں۔ کورونا وبا نے سب سے زیادہ متاثر مہاراشٹرا میں، پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران انفیکشن کے 6328 اور 125 اموات کی اطلاع ملی۔ اس کے ساتھ ہی ریاست میں متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 186626 جبکہ مرنے والوں کی تعداد 8178 ہوگئی ہے۔

تمل ناڈو میں، جو انفیکشن کے معاملے میں دوسرے نمبر پر پہنچ گیا ہے، متاثرہ افراد کی تعداد 98392 اور مرنے والوں کی تعداد 13321 ہوگئی ہے۔ ریاست میں 56021 افراد کو علاج کے بعد اسپتالوں سے چھٹی دے دی گئی ہے۔ دارالحکومت دہلی میں کورونا کی وبا کا پھیلاؤ تیزی سے جاری ہے اور یہاں متاثرہ افراد کی تعداد 92175 اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد 2864 ہوگئی ہے۔ دارالحکومت میں 63007 مریضوں کو اسپتالوں سے چھٹی دی جاچکی ہے۔

ملک کی مغربی ریاست گجرات کووڈ 19 کے متاثرین کی تعداد کے لحاظ سے چوتھے نمبر پر ہے، لیکن اموات کی تعداد کے لحاظ سے یہ مہاراشٹر اور دہلی کے بعد تیسرے نمبر پر ہے۔ گجرات میں اب تک 33913 افراد اس وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور 1886 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ ریاست میں 24593 افراد بھی اس مرض سے صحتیاب ہوئے ہیں۔ آبادی کے لحاظ سے ملک کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش میں اب تک کورونا انفیکشن کے 24825 معاملے درج ہوئے ہیں اور یہان وائرس کی وجہ سے 735 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ 17221 مریض صحت مند ہوکر اپنے گھروں کو واپس جاچکے ہیں۔ مغربی بنگال میں، 19819 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور 699 افراد ہلاک اور 13037 افراد اب تک شفایاب ہوئے ہیں۔

راجستھان میں بھی کورونا کے پھیلاؤ کا عمل زوروں پر ہے اور اس سے اب تک متاثرہ افراد کی تعداد 18662 تک پہنچ چکی ہے اور اب تک 430 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں، جبکہ 14948 افراد پوری طرح سے صحت یاب ہوچکے ہیں۔ جنوبی ہندوستان کی ریاستوں میں تلنگانہ میں کورونا کا وبا کا پھیلاؤ جاری ہے، متاثرہ افراد کی تعداد 18570 تک پہنچ چکی ہے، 275 افراد فوت ہوگئے ہیں اور 9069 افراد اب تک اس بیماری سے ٹھیک ہوچکے ہیں۔

کرناٹک میں 18016 افراد اور آندھرا پردیش میں 16097 افراد متاثر ہوئے ہیں اور ان ریاستوں میں تعداد اموات بالترتیب 272 اور 198 ہے۔ ہریانہ میں، 15509 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور اب تک 251 افراد ہلاک اور 11019 افراد شفایاب ہوئے ہیں۔ اس وبا کی وجہ سے، مدھیہ پردیش میں 589، پنجاب میں 152، جموں و کشمیر میں 115، بہار میں 77، اتراکھنڈ میں 42، اڈیشہ میں 27، کیرالا میں 25، جھارکھنڈ میں 15، چھتیس گڑھ میں، 14، آسام میں 12، پڈوچری مئں 12، ہماچل پردیش میں 10، چندی گڑھ میں6، گوا میں چار اور تریپورہ، لداخ اور میگھالیہ میں ایک ایک شخص ہلاک ہوا۔

ایک نظر اس پر بھی

بے لگام میڈیا پر جمعیۃ کی عرضی: جب تک عدالت حکم نہیں دیتی حکومت خود سے کچھ نہیں کرتی: چیف جسٹس

مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار اور ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان نفرت کی دیوارکھڑی کرنے کی دانستہ سازش کرنے والے ٹی وی چینلوں کے خلاف داخل کی گئی

دہلی فسادات: پروفیسر اپوروانند کی حمایت میں سامنے آئے ملک و بیرون ملک کے دانشوران

 ملک اور بیرون ملک کے ایک ہزار سے زائد معروف دانشوروں، نوکر شاہوں، صحافیوں، مصنفوں، ٹیچروں او اسٹوڈنٹس نے دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند سے مشرقی دہلی میں فسادات کے معاملے میں پوچھ گچھ کئے جانے اور انکا موبائل فون ضبط کرنے کے واقعہ کی شدید مذمت کی ہے اور پولیس کے ذریعہ ...

کالعدم چینی کمپنیوں سے بی جے پی کے گہرے رشتے ہیں: کانگریس

 کانگریس نے الزام عائد کیا ہے کہ حکومت نے قومی سلامتی کے لیے خطرہ بتاتے ہوئے جن چینی کمپنیوں پر پابندی لگائی ہے ان میں سے کئی کے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) سے گہرے رشتے ہیں اور گزشتہ عام انتخابات میں ان کمپنیوں نے اس کے لیے تشہیری مہم کا کام کیا تھا۔

ریا چکرورتی کا سوشانت کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد ان کی جائیداد ہڑپنا تھا: بہار پولیس کا حلف نامہ

 بہار پولیس نے اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کی مبینہ خودکشی کے معاملے میں سپریم کورٹ میں دائر حلف نامے میں کہا کہ کلیدی ملزمہ ریا چکرورتی اور اس کے اہل خانہ کا اداکار کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد اس کی جائیداد ہڑپنا تھا۔