ہندوستان میں نہ تھمنے والا کورونا وائرس کا قہر جاری؛ متاثرین کی تعداد 4122، ہلاکتیں بڑھ کر 117

Source: S.O. News Service | Published on 6th April 2020, 6:11 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،6؍اپریل (ایس او نیوز؍ایجنسی) تمل ناڈو، مہاراشٹر اور دہلی میں ایک دن میں کورونا وائرس (كووڈ -19) کے بالترتیب 74، 67 اور 59 نئے کیس سامنے آنے سے ملک میں متاثرین کی تعداد میں بے تحاشا اضافہ ہوا ہے اور یہ 4122 پر پہنچ گئی ہے ، اب تک 117 افراد کی موت ہو چکی ہے۔ یہ ادعداد و شمار کووڈ۔19 ٹریکر انڈیا کے مطابق ہے۔ 

حالانکہ وزارت صحت کی اتوار کو جاری رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس ملک کی 29 ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں پھیل چکا ہے اور اب تک اس کے 3374 کیسس کی تصدیق ہو چکی ہے۔ان میں 65 غیرملکی مریض بھی شامل ہیں۔ 

ملک میں کورونا وائرس سے مہاراشٹر میں سب سے زیادہ 490 افراد متاثر ہیں اور 24 افراد کی موت ہو چکی ہے، دوسرے مقام پر تمل ناڈو ہے جہاں 485 افراد متاثر ہیں اور تین لوگ کی موت ہوئی ہے۔ اس کے بعد دہلی میں سب سے زیادہ 445 لوگ متاثر ہیں اور 6 افراد کی موت ہوچکی ہے. کیرالہ میں 306 متاثرہیں اور2 افراد کی موت ہوچکی ہے. راجستھان میں 200 افراد اس وبا کے شکار ہیں لیکن اب تک کسی کی موت نہیں ہوئی ہے. اترپردیش میں 227 لوگ متاثر ہیں. آندھرا پردیش میں 161 اور کرناٹک میں 144 لوگ متاثر ہیں اور بالترتیب ان دونوں ریاستوں میں ایک اور چار افراد کی موت ہوئی ہے۔

تلنگانہ میں 269، مدھیہ پردیش میں 104 اور گجرات میں 105 لوگ متاثر ہیں اور بالترتیب 7، 6 اور 10 افراد کی موت ہوئی ہے. پنجاب میں 5، مغربی بنگال میں 3، کیرالہ، جموں و کشمیر اور اترپردیش میں 2۔2اور بہار اور ہماچل پردیش میں ایک ایک شخص کی موت ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

تبلیغی جماعت کے ارکان کے خلاف درج کیس میں کسی کی گرفتاری نہیں: دہلی پولیس نے ہائی کورٹ کو دیا جواب

دہلی پولیس نے دہلی ہائی کورٹ کو منگل کو بتایا کہ کووڈ19 لاک ڈاؤن کے دوران نظام الدین مرکز میں ہوئے مذہبی اجتماع میں حصہ لینے کے لئے تبلیغی جماعت کے ارکان کے خلاف درج کیس میں اس نے نہ تو کسی کو گرفتار کیا ہے اور نہ ہی کسی کو حراست میں لیا ہے۔

جموں کے ایک وکیل اور کشمیر کی ایک خاتون کورونا سے ہلاک، لوگ دہشت زدہ

 جموں سے تعلق رکھنے والے ایک وکیل اور جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کی ایک خاتون کی موت کے بعد کورونا ٹیسٹ مثبت آنے سے جموں و کشمیر یونین ٹریٹری میں اس وائرس سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 23 ہوگئی ہے۔ ان ہلاکتوں کے بعد لوگوں میں ایک دہشت کا ماحول بھی دیکھنے کو مل رہا ہے۔