سعودی عرب: کرونا وائرس کے 140 نئے کیس ،جدہ کے سات علاقے قرنطینہ میں تبدیل

Source: S.O. News Service | Published on 4th April 2020, 11:42 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،4؍اپریل(ایس او نیوز؍ایجنسی) سعودی عرب میں گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کے 140 نئے کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں جبکہ حکومت نے جدہ گورنری کے سات علاقوں کو اس مہلک وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے قرنطینہ میں تبدیل کردیا ہے۔

سعودی وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد عبدالعالی نے ہفتے کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ مملکت میں کرونا وائرس کے کل کیسوں کی تعداد 2179 ہوگئی ہے۔ان میں 420 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں اور اب تک اس مہلک وائرس سے 29 اموات ہوئی ہیں۔

سعودی وزارت داخلہ کے ایک بیان کے مطابق جدہ گورنری کے سات علاقوں کو کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے قرنطینہ کردیا گیا ہے۔ان علاقوں میں کیلو14 شمال ، کیلو14 جنوب ،المہاجر ، غلیل ، القریات ،کیلو 13 اور بیترومین (پیٹرومین) شامل ہیں۔

ان علاقوں میں پہلے ہی کرفیو نافذ ہے اور ان کے مکین صبح چھے بجے سے سہ پہر تین بجے تک اشیائے ضروریہ کی خریداری کے لیے گھروں سے باہر نکل سکتے ہیں۔

سعودی حکومت نے گذشتہ اتوار کو جدہ گورنری میں لوگوں کے داخلے اور وہاں سے خروج پر پابندی عاید کردی تھی اور تاحکم ثانی کرفیو نافذ کردیا تھا۔

تاہم سکیورٹی فورسز ،فوج اور میڈیا سمیت اہم سرکاری اور نجی شعبوں میں کام کرنے والے اہلکار اور شعبہ صحت میں خدمات انجام دینے والے ڈاکٹر حضرات اور معاون طبی عملہ کو کرفیو کی پابندیوں سے مستثنا قرار دیا گیا ہے۔

سعودی حکومت نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے گذشتہ ماہ مختلف اقدامات کا اعلان کیا تھا۔ حکومت نے مملکت میں کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے تیرہ صوبوں میں شہریوں اور مکینوں پر سفری پابندیاں عاید کررکھی ہیں۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک فرمان کے تحت (کرونا وائرس کا شکار) تمام شہریوں ، مکینوں اوراقامے کی خلاف ورزی کے مرتکبین کو علاج معالجے کی مفت سہولت مہیا کرنے کا حکم دیا تھا۔

سعودی حکومت نے گذشتہ جمعرات کو مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں تاحکم ثانی 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ کردیا تھا۔قبل ازیں حکومت نے 23 مارچ کو مکہ مکرمہ ، مدینہ منورہ اور دارالحکومت الریاض میں سہ پہر تین بجے سے صبح چھے بجے تک کرفیو نافذ کیا تھا۔ اس کے تحت ان شہروں سے خروج یا ان میں دخول پر پابندی عاید ہے۔

ایک نظر اس پر بھی