کرونا وائرس کے بحران کو پہلے ہی سنجیدگی سے لینا چاہئے تھا: راہل گاندھی

Source: S.O. News Service | Published on 24th March 2020, 8:39 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،24/مارچ (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کرونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہوئے بحران سے نمٹنے کے لئے حکومت پر سوال کھڑے کرتے ہوئے منگل کو کہا کہ اس وائرس کے خطرے کو پہلے ہی سنجیدگی سے لینا چاہئے تھا۔

انہوں نے ماسک اور گلبس کی کمی سے منسلک، ایک ڈاکٹر کے ٹویٹس کوری ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے دکھ ہو رہا ہے کیونکہ اس صورتحال سے بچا جا سکتا تھا۔

راہل گاندھی نے کہاکہ ہمارے پاس تیاری کا وقت تھا۔ ہمیں اس خطرے کو زیادہ سنجیدگی سے لینا چاہئے تھا اور بہتر تیاری کر لینی چاہیے تھی۔

پارٹی کے مرکزی ترجمان رندیپ سرجیوالا نے اس ڈاکٹر کے ٹویٹس کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ وزیر اعظم کرونا وائرس سے لڑنے کی آپ کی حکمت عملی میں یہی غلطی ہے۔ ڈاکٹروں اور نرسوں کو تالی نہیں بلکہ صحت کے تحفظ سے منسلک آلات کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو طبی عملے کی آواز سننی چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر کی پہلی وائرس متاثرہ خاتون روبہ صحت ہوکر ہسپتال سے رخصت

وادی کشمیر میں کورونا وائرس کے مثبت کیسز میں اضافے کے بیچ سری نگر کے خانیار علاقے سے تعلق رکھنے والی وادی کی پہلی وائرس متاثرہ خاتون مکمل طور پر صحت یاب ہوئی ہے اور اس کو شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ سے ڈسچارج بھی کیا گیا ہے۔

تبلیغی جماعت کے خلاف کیس واپس لینے کا مطالبہ تبلیغی مرکز سے متعلق پیدا شدہ حالات پر سرکردہ مسلم دانشوروں کا بیان

 تبلیغی مرکز سے متعلق پیداشدہ صورتحال پر سرکردہ دانشوروں اور صحافیوں نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یہاں جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف جاری جنگ میں ہم حکومت کو اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلاتے ہوئے اس سے یہ اپیل بھی کرنا چاہتے ہیں