اٹلی میں کورونا وائرس کا قہر جاری، 24 گھنٹوں میں 133 کی موت

Source: S.O. News Service | Published on 9th March 2020, 8:27 PM | عالمی خبریں |

اٹلی،9؍مارچ(ایس او نیوز؍ایجنسی) ایک دن میں 133 لوگوں کی جان جانے کے بعد اٹلی میں کورونا وائرس کا خوف بہت بڑھ گیا ہے۔ اس کی وجہ سے تمام سنیما ہال، تھیئٹر، اوپیرا ہاؤس سمیت وہ تمام جگہ بند کر دیئے گئے ہیں جہاں زیادہ تعداد میں لوگ جمع ہو سکتے ہیں۔ اٹلی میں اس وائرس کے 1492 نئے معاملات سامنے آئے ہیں۔ کورونا وائرس کے اس قہر کے بعد اٹلی حکومت نے دو کروڑ ماسک آرڈر کر دیئے ہیں۔

یہاں یہ بات غور کرنے کی ہے کہ چین کے بعد اٹلی وہ ملک ہے جہاں کورونا وائرس کے سب سے زیادہ معاملات سامنے آئے ہیں اور یہاں پر ہی چین کے بعد سب سے زیادہ لوگوں کی جان گئی ہے۔ اٹلی میں ابھی تک 366 لوگوں کی جان جا چکی ہے اور کورونا وائرس سے متاثر لوگوں کی تعداد 7375 ہو گئی ہے۔ اٹلی سے ملنے والی خبروں کے مطابق زیادہ تر اموات اٹلی کے لوبارڈی شہر میں ہوئی ہیں اور اٹلی حکومت پوری طرح سے ایلرٹ موڈ میں ہے اور مستقل پبلک مقامات پر لوگوں کو جمع ہونے سے روک رہی ہے اور ان مقامات کو سینیٹائز کیا جا رہا ہے۔

اٹلی کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے تقریباً ڈیڑھ کروڑ لوگ گھروں میں قید ہیں۔ اٹلی حکومت نے تمام اسکول اور پب بند کر دیئے ہیں۔ کورونا وائرس کا قہر دنیا کے کئی ممالک میں جاری ہے اور زندگی کا ہر شعبہ اس سے بری طرح متاثر ہے۔ ہندوستانی حکومت بھی اس کو لے کر پوری طرح الرٹ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ووٹنگ کے ذریعے ہانگ کانگ میں علامتی احتجاج

ہانگ کانگ میں لاکھوں شہریوں نے چین کے سرکاری انتباہ کے باوجود ووٹ ڈالے۔ جس کا مقصد جمہوریت نواز لیڈروں کا انتخاب کرنا تھا جو ستمبر میں ہونے والے انتخابات میں اپنے اپنے حلقوں کی نمائندگی کریں گے۔