کورونا کرفیو کی وجہ سے لاری ڈرائیوروں کو سفرکے دوران کھانے پینے اور لاری کی مرمت کا مسئلہ درپیش:ڈرائیور، کلینر اور گیاریج والوں کی زندگی پنکچر

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 15th May 2021, 6:37 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل:15؍ مئی (ایس اؤ نیوز)کورونا وائرس پر لگام لگانے کے لئے حکومتوں کی طرف سے  نافذ کئے گئے سخت کرفیو کی وجہ سے ہوٹل ، ڈھابے ،گیاریج ، پنکچر کی دکانیں وغیرہ بند ہیں ، جس کے نتیجے میں  ضروری اشیاء سپلائی کرنےوالی لاریوں کے ڈرائیوروں کو سفر کے دوران کئی مشکلات درپیش ہیں۔

دور دراز کا سفر کرنےوالے لاری ڈرائیوروں کو راستے میں ہوٹل  بند ہونے سے کھانا نہیں مل رہاہے۔ پنکچر کی دکانیں اور گیاریج بھی کھلی نہ  رہنے سے دودو تین تین دن ایک ہی جگہ کھڑے رہنے پر مجبور ہیں۔ سواری کی خرابی کی درستگی  کے لئے  میکانک کی تلاش  بھی ایک سوال بن گیا ہے۔

ان حالات کی وجہ سےریاست کے کئی لاریوں کےڈرائیور ضروری اشیاء لے جانے سے پس وپیش کررہے ہیں۔ لاری مالکان اور ڈرائیور اسوسی ایشن حکومت سے کئی مرتبہ اپیل کرچکی ہے کہ سڑکوں کےدرمیان  دو تین ہوٹلوں اور ڈھابوں کو کھولنےکی اجازت دیں۔ لیکن حکومت کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی ہے حکومت کی خاموشی پر ڈرائیور سخت برہمی کا اظہار کررہے ہیں۔

روزانہ 500کلومیٹر دور دراز مقامات کو ضروری اشیاء لے جانے والے لاری ڈرائیور اور کلینر راستے کے درمیان میں بھوک اور پیاس کے لئے ترستے ہوئے دیکھے گئے۔ گرچہ ہوٹلوں کو پارسل دینے کی اجازت دی گئی ہے لیکن شاہراہ اور اہم سڑکوں کے کنارے  موجود ہوٹل قلیل  آمدنی کو دیکھتے ہوئے اپنے ہوٹل بند رکھنے پر مجبور  ہیں۔ جس کے نتیجے میں ڈرائیوروں اور  کلینروں کو کھانے پینے  کا مسئلہ درپیش ہے۔

ریاستی لاری مالکان  سنگھا نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ روزانہ ہزاروں لاریاں ریاست کے ایک مقام سے دوسرے مقام کو عوام کے لئے ضروری اشیاء سپلائی کرتی ہیں۔ حکومت اس طرف توجہ دیتے ہوئے کم سے کم ضلعی اور ریاستی شاہراہوں پر جس طرح پٹرول پمپوں کو اجازت دی  گئی ہے اسی طرح گیاریج اور ہوٹلوں کو منظوری دی جائے۔سہولیات نہ  ہونے سے بے شمار لاریاں سڑکوں کے کنارے کھڑی ہوئی دیکھی جاسکتی ہیں۔

سنگھا کا کہنا ہے کہ گیاریجوں کے بند ہونے سے کئی لوگ بے روزگار ہوگئے ہیں ان کے گھروں کا حال بے حال ہے۔ زندگی مشکلات میں ہے۔ حالات کو مزید بگڑنے سے پہلے حکومت کے لئے ضروری کہ وہ مناسب  اقدام کرے ۔

حالات کے پیش نظر دھارواڑ ضلع کے ڈپٹی کمشنر نتیش پاٹل نے تیقن دیا ہے کہ ضروری اشیاء سپلائی کرنےو الے لاری ڈرائیوروں کے لئے ہوٹل اور گیاریج کے انتظامات کے متعلق غور کیا جارہاہے۔ شاہراہ اور اہم سڑکوں پر جہاں جہاں ضروری ہے وہاں کم سے کم تین گیاریج اور ہوٹلوں کو شروع کئے جانے کی اجازت دی جائے گی۔

شمالی کرناٹک لاری مالکان سنگھا کے سکریٹری معین الدین کا کہنا ہےکہ ضروری اشیاء لے جانے والے لاری ڈرائیور اور کلینروں کو راستے کے درمیان کئی ایک مشکلات کاسامنا ہے۔ کم سے کم دور دراز سفر کے دوران  ایک دو پنکچر کی دکانیں، ہوٹل یا ڈھابا دن کے 24گھنٹے کام کریں گے تو ہمیں کافی مدد ہوگی۔ ہم حکومت سے مطالبہ کرتےہیں کہ وہ اس سلسلےمیں جلد  کوئی فیصلہ لے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل جالی میں انڈر گراونڈ ڈرینیج کا مسئلہ؛ ممکنہ کنووں کو خراب کرنے والے چمبرس کی درستگی کے بعد ہی کام کو بڑھایا جائے گا آگے؛ ایک ہفتہ کے اندر سڑکوں کی مرمت کی یقین دھانی

بھٹکل کے جالی پٹن پنچایت حدود میں  تعمیر کئے جارہے  انڈر گراونڈ ڈرینیج (یو جی  ڈی)  کا مسئلہ بارش کے بعد مزید پیچیدہ ہونے کے بعد  گذشتہ روز  جالی پنچایت آفس میں  واٹر بورڈ انجینر سمیت  بھٹکل انڈر گراونڈ ڈرینیج کے کام کرنے والے کنٹریکٹر کے  ساتھ میٹنگ کا انعقاد کیا گیا تھا جس ...

کورونا کی تیسری لہر کو لے کر ریاستی ماہرین کمیٹی نے ریاستی حکومت کو سونپی سفارشی رپورٹ : وائرس شدت اختیار کرنےپر 3لاکھ بچے متاثر ہونے کا خدشہ

اگلے 6سے 8ہفتوں میں ملک میں کورونا کی تیسری لہر شروع ہونےکے متعلق ماہرین نےمتنبہ کیا تو ریاستی  حکومت نے ڈاکٹر دیوی شٹی کی قیادت میں کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ بتائیں کہ  تیسری لہر کو روکنے کے لئے کیا کیا اقدامات کریں۔ ڈاکٹر دیوی شٹی کی قیادت والی ماہرین کی کمیٹی نے ...

منگلورو : کلاک ٹاور کے پاس پولیس کی اچانک چیکنگ ۔ غیر ضروری طور پر سڑکوں پر گاڑیاں دوڑانے والوں کے خلاف کی گئی کارروائی

دو دن پہلے شہر میں لاک ڈاون کے اوقات میں کمی کرنے کے بعد سڑکوں پر موٹر گاڑیوں کا ہجوم لگ گیا تھا۔ اس پر قابو پانے کے لئے پولیس کے افسران نے کلاک ٹاور کے پاس اچانک چیکنگ شروع کردی اور غیر ضروری طور پر سڑکوں پر گاڑیاں دوڑانے والوں کے خلاف معاملات درج کرلیے۔

اترکنڑا میں 77373افراد کو کووڈکا دوسرا ٹیکہ دیا جاچکا ہے: صحت عامہ کی رپورٹ

اترکنڑا میں ابھی تک 77173لوگوں کو کووڈکا ٹیکہ لگایاجاچکاہے۔ منگل کی شام 7بجے تک ملی رپورٹ کے مطابق 1590ڈوز باقی ہیں۔ جس میں کووی شیلڈ 740اورکو ویکسن 850ڈوز ٹیکوں کا ذخیرہ موجود ہے۔ اس بات جانکاری  ڈسٹرکٹ  آر سی ایچ افسر ڈاکٹر رمیش راؤ نے دی۔

جناب ایس ایم سید محی الدین مارکیٹ صاحب مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین بھٹکل کے نئے صدر منتخب

مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین بھٹکل  کے نائب صدرجناب ایس ایم سید محی الدین مارکیٹ صاحب اب مرکزی خلیفہ جماعت المسلمین بھٹکل کے  صدر منتخب ہوئے ہیں۔ پیر کو جماعت کے دفتر میں منعقدہ انتظامیہ میٹنگ میں  انہیں اس عہدہ کےلئے بالاتفاق رائے منتخب کیا گیا۔ یاد رہے کہ خلیفہ جماعت ...

کاروار میں کووڈ ٹیکہ مہم کا افتتاحی پروگرام : ہر ایک ٹیکہ لگوائیں اور اپنی جان کی حفاظت کریں : روپالی نائک

کورونا پر قابو پانے کے لئے حکومتیں کام کررہی ہیں، ملک بھر میں 21جون سے شروع ہوئے مفت کووڈ ٹیکہ مہم میں ہرایک ٹیکہ لگاتے ہوئے اپنی جان کی حفاظت کا سامان کرنے کی رکن اسمبلی روپالی نائک نے عوام سے اپیل کی۔

میسورو میں ’ڈیلٹا پلس‘ فارم کا پہلا کیس سامنے آیا

میسورو میں کورونا وائرس سے متعلق ’ڈیلٹا پلس‘ شکل کا پہلا کیس سامنےآیا ہے۔ تاہم متاثرہ شخص کو اس مرض کی کوئی علامت نہیں ہے اور جو بھی اس کے ساتھ رابطہ میں آیا ہے وہ انفکیشن میں نہیں ہے۔ ریاستی وزیر صحت ڈاکٹر کے سدھاکر نے یہ جانکاری دی۔ 

سابق وزیر اعظم دیو ےگوڑا پر 2 کروڑ روپے جرمانہ عائد

ریاست کرناٹک کی بنگلورو کی ایک عدالت نے 10 سال قبل ٹیلی ویژن انٹرویو میں نندی انفراسٹرکچر کوریڈور انٹرپرائزز (نائس لمیٹڈ) کے خلاف توہین آمیز بیانات دینے پر سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڑا کو کمپنی کو 2 کروڑ روپے ہرجانے کے طور پر ادا کرنے کی ہدایت کی ہے۔

کرناٹک میں مزید 4 اضلاع اَن لاک کی رعایتیں، دوپہر تک دکانیں کھولنے کی اجازت

کووڈ۔19 کا پھیلاؤ کم ہونے کے  سبب  مزید 4 اضلاع میں حکومت نے اَن لاک کی رعایتیں دی ہیں، یہاں کووڈ پازیٹیو معاملات کی شرح 5 فیصد سے کم ہوگئی ہے۔ دکشن کنڑا، ہاسن، داونگیرے اور چامراج نگر میں صبح 6 بجے تا دوپہر 1 بجے تک ضروری اشیا کی خریداری کے لئے دکانیں کھلی رکھنے کی اجازت دی گئی ...

بنگلور کے جے ہلّی اور ڈی جے ہلّی تشدد معاملے میں اے پی سی آر کی کوششوں سے چار لوگوں کو ملی ضمانت

گذشتہ سال اگست میں  بنگلور کے ڈی جے ہلّی اور کے جے ہلّی میں ہوئے تشدد کے واقعات    اور رکن اسمبلی  اکھنڈ شری نواس مورتی کے مکان  کو آگ لگانے کے معاملے  میں گرفتار  رحمان خان اور محمد عدنان سمیت چار لوگوں  کو کرناٹک ہائی کورٹ  نے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔