کورونا: ہندوستان میں ’کمیونٹی اسپریڈ‘ کا خطرہ، اموات کی تعداد 20 ہزار سے زائد

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 7th July 2020, 2:20 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بنگلور 7/ جولائی (یو این آئی/ایس او نیوز)    ہندوستان میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملوں کے درمیان کمیونٹی اسپریڈ یعنی طبقاتی پھیلاؤ کا  اندیشہ بڑھتا نظر آرہا ہے۔ بالخصوص کرناٹک  میں کورونا انفیکشن کے کمیونٹی اسپریڈ کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ کرناٹک کے علاوہ گوا، پنجاب و مغربی بنگال کے نئے ہاٹ اسپاٹ بننے کے آثار بھی ظاہر ہو رہے ہیں جو انتہائی تشویشناک ہے۔

بہر حال، ہندوستان میں کورونا وائرس کے یومیہ کیسز دو دن تک 24 ہزار سے زیادہ رہنے کے بعد گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اس میں کچھ حد تک کمی واقع ہوئی ہے ، لیکن اس عرصہ میں 467 افراد کی ہلاکت سے اموات کی مجموعی تعداد 20 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔

منگل کو مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کی طرف سے جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ، گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کورونا وائرس کے 22،252 نئے کیسز درج کئے گئے ہیں ، جو گزشتہ ہفتے کے بعد سے سب سے کم ہیں۔ آج ملنے والے کیسز سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 7،19،665 ہوگئی ہے۔ ہفتہ کے روز 22،771 نئے کیسز درج ہوئے۔ اتوار کو 24،850 اور پیر کو 24،248 کیسز تھے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی زد میں آنے سے 467 افراد کی موت کے ساتھ ہی ہلاک شدگان کی تعداد بڑھ کر 20،160 ہوگئی ہے اور اس عرصے کے دوران 15،515 مریض صحت مند ہوئے ہیں۔ اب تک ملک میں مجموعی طور پر 4،39،948 افراد وبا سے شفایاب ہوئے ہیں۔ اس وقت ملک میں کورونا وائرس کے 2،59،557 فعال کیسز ہیں۔

ملک میں ریاست مہاراشٹراکورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ہے جہاں کووڈ19کے 5،368 کیسز رپورٹ ہونے کے بعد ریاست میں کورونا وائرس کے متاثرین کی مجموعی تعداد 2،11،987 ہو چکی ہے۔ اسی عرصہ میں 204 اموات کے بعد ہلاک شدگان کی مجموعی تعداد 9،026 ہوچکی ہے۔ ریاست میں 1،15،262 افراد اس وبا سے شفایاب ہوئے ہیں۔

وائرس سے متاثر ہونے کے معاملہ میں دوسرے مقام پرریاست تمل ناڈو ہے جہاں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 3827 سے بڑھ کر 114978 ہوگئی ہے اور اسی عرصے میں 61 افراد کی موت کے بعد ہلاک شدگان کی مجموعی تعداد 1571 ہوگئی ہے۔ ریاست میں، 66،571 افراد کو علاج کے بعد مختلف اسپتالوں سے فارغ کردیا گیا ہے۔

قومی دارالحکومت دہلی میں کورونا وائرس کی وبا نے تباہی مچا دی ہے جہاں کورونامتاثرہ افراد کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔ قومی راجدھانی میں کورونا سے اب تک 1،00،823 افراد متاثر ہوئے ہیں ، جبکہ اس وبا سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 3115 ہوگئی ہے۔ دارالحکومت میں کورونا وائرس کے 72،088 مریض شفایاب ہوئے ہیں ، جن کو مختلف اسپتالوں سے فارغ کیا گیا ہے۔

ملک کی مغربی ریاست گجرات کووڈ 19 سے متاثر ہونے سے تعداد کے لحاظ سے چوتھے نمبر پر ہے ، لیکن اموات کی تعداد کے لحاظ سے یہ مہاراشٹر اور دہلی کے بعد تیسرے نمبر پر ہے۔ گجرات میں اب تک 36،772 افراد اس وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور 1960 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ ریاست میں 26،315 افراد اس جان لیوا وائرس سے شفایاب ہوئے ہیں۔

آبادی کے لحاظ سے ملک کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش میں اب تک کورونا وائرس کے 28،636 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور اس وائرس کی وجہ سے 809 افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ 19،109 مریض صحت مند ہوئے ہیں۔ جنوبی ہندوستان کی دو ریاستوں تلنگانہ اور کرناٹک میں کورونا وائرس کے کیسز بہت تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ تلنگانہ میں کورونا وائرس متاثرہ افراد کی تعداد 25،733 تک پہنچ چکی ہے اور 306 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جبکہ اب تک 14،781 افراد اس وبا سے شفایاب ہو چکے ہیں۔ کرناٹک میں 25،317 افراد متاثر ہوئے ہیں اور 401 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اس کے علاوہ ریاست میں 10،527 افراد مہلک وبا سے شفایاب بھی ہوئے ہیں۔

مغربی بنگال میں 22،987 افراد جان لیوا کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں اور اب تک 779 افراد ہلاک اور 15،235 افراد شفایاب ہوئے ہیں۔ راجستھان میں بھی کوروناوائرس کا پھیلاؤ اپنے شباب پر ہے اور اب تک متاثرہ افراد کی تعداد 20،688 تک پہنچ چکی ہے جبکہ 461 افراد ہلاک ہوچکے ہیں ۔اس وبا سے سے اب تک ریاست میں 16،278 افراد پوری طرح سے صحت یاب ہوچکے ہیں۔

آندھرا پردیش میں 20،019 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں اور اموات کی تعداد 239 ہوگئی ہے۔ ہریانہ میں ، 17،540 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں اور 276 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ کورونا وائرس کی زد میں آنے سے مدھیہ پردیش میں 617 ، پنجاب میں 169 ، جموں و کشمیر میں 138 ، بہار میں 97 ، اتراکھنڈ میں 42 ، اوڈیشہ میں 38 ، کیرالہ میں 27 ، جھارکھنڈ میں 20 ، چھتیس گڑھ اور آسام میں 14،14 ، ہماچل پردیش میں11، پڈوچیری میں 12، گوا میں 7، چنڈی گڑھ میں چھ ، اروناچل پردیش میں دو اور تری پورہ ، لداخ اور میگھالیہ میں ایک ایک شخص کی موت ہوچکی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک: ایس ایس ایل سی میں تقریبا 6 لاکھ طلبہ کامیاب

کورونا کی خطرناک وبا کے درمیان ریاست کرناٹک میں منعقد ہوئے ایس ایس ایل سی ( دسویں جماعت) کے نتائج منظر عام پر آچکے ہیں ۔ تقریبا 6 لاکھ طلبہ نے ان امتحانات میں کامیابی حاصل کی ہے ۔ طلبہ کی ہمت اور حوصلہ کی ہر جانب سے ستائش کی جارہی ہے ۔

کاروار:ایس ایس ایل سی امتحان کے نتائج۔ سرسی کی سنّدھی ہیگڈے نے پایا ریاست میں پہلا رینک

امسال ریاست میں ایس ایس ایل سی کے جو امتحانات ہوئے تھے اس کا سامنا طلبہ نے کووڈ وباء کے پس منظر میں ذہنی تناؤ کے ساتھ کیا تھا۔اس کے بعد کافی دنوں سے طلبہ بڑی بے چینی کے ساتھ اپنے نتائج کا انتظار کررہے تھے۔

کرناٹک میں 5985 کورونا پوزیٹیو، 107 ہلاک

ریاست کرناٹک میں پچھلے 24 ؍ گھنٹوں میں 5985 افراد کورونا میں مبتلا ہوئے ہیں، 107 کی موت ہوگئی، متاترین کی کل تعداد 1،78،087 ہوگئی، جبکہ 4،670 افراد شفایاب ہو کر اسپتالوں سے رخصت ہوئے ہیں۔ 107 افراد ہلاک ہوئے ، مہلوکین کی کل تعداد 3،198 ہوگئی ہے۔

کرناٹک میں آئندہ 5دنوں اوربنگلورمیں دوروزتک شدیدبارش کی پیشین گوئی، ریاست میں شدیدبارش اورسیلاب سے 100 سڑکوں اورپلوں کونقصان

ریاست بھرمیں پچھلے چنددنوں سے موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ جاری ہے۔شدیدبارش اورسیلاب سے ریاست کے کم از کم 100 سڑکیں اورپلوں کونقصان پہنچاہے۔ اس سلسلہ میں محکمہ تعمیرات عامہ (پی ڈبلیوڈی)کے افسروں نے معلومات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ تین دنوں سے ریاست میں بھاری بارشیں ہورہی ...

کشمیر میں بی جے پی کارکنان کو ایک منصوبہ کے تحت نشانہ بنایا جارہا: الطاف ٹھاکر

 بی جے پی جموں و کشمیر یونٹ کے ترجمان الطاف ٹھاکر نے پارٹی کارکنوں پر ہونے والے حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر میں بی جے پی کے کارکنوں کو ایک منصوبہ بند سازش کے تحت نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

مرکزی حکومت کا ہتھیاروں کی درآمد پر پابندی کا فیصلہ ناقابل فہم: سوگت رائے

مرکزی حکومت کے ذریعہ 101ملٹری ہتھیاروں کی درآمدگی پر پابندی عاید کیے جانے پر ترنمول کانگریس نے سوال کھڑے کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ قدم اٹھانے سے قبل ملک میں اسلحہ سازی کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کی ضرورت تھی اور اس کے لئے روڈ میپ تیار کیا جانا چاہیے۔

کشمیر: ڈاکٹر شاہ فیصل نے اٹھایا حیرت انگیز قدم، پارٹی کے صدارتی عہدہ سے دیا استعفیٰ

 کشمیری قوم کے لئے نیلسن منڈیلا بننے کی تمنا رکھنے والے 36 سالہ سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر شاہ فیصل نے گزشتہ برس مارچ میں 'ہوا بدلے گی' نعرے کے تحت لانچ کردہ اپنی جماعت 'جموں و کشمیر پیپلز موومنٹ' کے صدارتی عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ان کی جگہ پر پارٹی کے نائب صدر فیروز پیرزادہ کو ...