ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کے خلاف خواتین کانگریس کامظاہرہ، وزیرپٹرولیم کو میمورنڈم سونپا

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 14th February 2020, 1:44 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،13فروری (آئی این ایس انڈیا) کانگریس کی خاتون یونٹ نے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کے خلاف جمعرات کو وزارت پٹرولیم کے باہر مظاہرہ کیا اور بعد میں وزیر پٹرولیم دھرمیندر پردھان کو میمورنڈم سونپ کر بڑھا دام فوری واپس لینے کا مطالبہ کیا۔آل انڈیا خواتین کانگریس کی صدر سشمیتا دیو کی قیادت میں تنظیم کے بہت سے عہدیداروں اور دہلی اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی امیدار رہے کچھ لیڈروں نے وزارت کے باہر مظاہرہ کیا۔سشمتا نے کہاکہ یہ اضافہ اس وقت کیا گیا ہے جب ملک میں اقتصادی مندی اور بے روزگاری اپنے عروج پر ہے،لاکھوں روزگار جا رہے ہیں،جب عوام بے روزگاری اور کساد بازاری کی مار جھیل رہی ہے تو ایسے میں مودی حکومت نے ان پر پھر سے مہنگائی کا بڑا وار کر دیا ہے۔اس سے تو ملک کے عام لوگوں کی کمر ہی ٹوٹ جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے مطالبہ کیا ہے کہ ایل پی جی سلنڈر کی بڑھی ہوئی قیمت فوری واپس لی جائے تاکہ لوگوں کو کچھ راحت مل سکے۔ دہلی اسمبلی انتخابات میں امیدوار رہیں الکا لامبا، اکاکشا ولا، نیتو ورما سون اور خواتین کانگریس کی کچھ دیگر عہدیدار اس احتجاج میں شامل رہے۔ رسوئی گیس کی قیمتوں میں بدھ کو 144.5 روپے فی سلنڈر کا اضافہ کیاگیا۔سرکاری پٹرولیم مارکیٹنگ کمپنیوں نے ایک نوٹیفکیشن میں یہ معلومات ملی،حالانکہ حکومت نے رسوئی گیس پر ملنے والی سبسڈی بڑھاکر تقریبا دگنی کر دی ہے۔اس سے سبسڈی والے سلنڈر کے صارفین پر زیادہ بوجھ نہیں پڑے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

پاکستان میں مندر کی تعمیر پر روک رجعت پسندانہ اقدام: التجا مفتی

 پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی صاحبزادی التجا مفتی نے پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ایک مندر کی تعمیر پر جاری تنازعے کے حوالے سے کہا ہے کہ مندر کی تعمیر پر روک ایک اسلامی فلاحی ریاست کے مذہبی آزادی کے تصور کے منافی ہے۔

خطرے میں اسپین، 95 فیصد آبادی ہو سکتی ہے کورونا کا شکار: تحقیق

کورونا وائرس یعنی کووڈ-19 کے حوالہ سے اسپین میں کی گئی اسٹڈی میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسپین کی آبادی کا صرف 5فیصد ہی اینٹی باڈیز تیار کرسکا ہے، جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ کورونا سے بچاؤ کے لیے ’ہرڈ امیونٹی‘ حاصل نہیں کی جاسکتی۔

کاروار اسپتال سے 12 مزید لوگ ڈسچارج

بھلے ہی  ضلع اُترکنڑا میں کورونا پوزیٹیو کے معاملے ہر روز سامنے آرہے ہوں، لیکن کاروار اسپتال میں ایڈمٹ کورونا کے متاثرین  روبہ صحت ہوکر ڈسچارج ہونے کا سلسلہ بھی برابر جاری ہے۔