مرکز کے زرعی قوانین کے خلاف کانگریس کی دستخطی مہم کو مہاراشٹرا کے عوام کا بھرپور تعاون حاصل

Source: S.O. News Service | Published on 17th November 2020, 8:19 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ممبئی،17؍نومبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) مرکز کی بی جے پی حکومت کی طرف سے کسانوں پر مسلط کئے گئے زرعی قوانین کے خلاف مہاراشٹر بھر میں جاری کانگریس کی دستخطی مہم کو عوام کا بھرپور تعاون حاصل ہوا ہے۔ تقریباً پچاس لاکھ دستخط شدہ میمورنڈم منگل کے روز ریاستی کانگریس کے انچارج ایچ کے پاٹل کو سونپا جائے گا۔ یہ اطلاع ریاستی کانگریس کے صدر اور ووزیر محصول بالاصاحب تھورات نے دی۔

بالاصاحب تھورات نے کہا ہے کہ بی جے پی کے ناجائز زرعی قوانین کو رد کرنے کی کانگریس کی تحریک ریاست بھر میں جاری ہے جسے عوام کا بھرپور تعاون حاصل ہو رہا ہے۔ تحریک کے تحت یہ دستخطی مہم بھی چلائی جا رہی تھی جس میں ریاست کے کسانوں و مزدوروں نے بھرپور حصہ لیتے ہوئے ان قوانین کو رد کرنے کے مطالبے کے لیے تقریباً 50 لاکھ دستخط کیے۔ یہ تمام دستخط اور میمورنڈم ریاستی کانگریس کے صدر دفتر تلک بھون میں ریاستی کانگریس کے نگراں ایچ کے پاٹل کے سپرد کر کئے جائیں گے۔

تھورات نے کہا کہ اس دستخطی مہم کے تحت ہمارا ہدف 2 کروڑ دستخط جمع کرنے کا ہے۔ اس مہم کے تحت دیہی علاقون تک کانگریس کے کارکنان نے کام کیا اور یہ قوانین کس طرح کسانوں و مزدوروں کو تباہ کرنے والے ہیں، اس کی معلومات لوگوں کو دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ زرعی قوانین کی سخت مخالفت کرتے ہوئے کانگریس نے اس کے خلاف تحریک شروع کر رکھی ہے۔ اس کے تحت یوم حقوق کسان، دھرنا، مظاہرہ، ریاستی گورنر کو میمورنڈم و ورچوئیل ریلی کا انعقاد کر کے صدائے احتجاج بلند کی گئی۔

زرعی قوانین کے خلاف کانگریس کی تحریک کے تحت ریاست کے دس ہزار گاؤں و قصبوں کے 50 لاکھ کسانوں ومزدوروں نے حصہ لیا۔ اس کے علاوہ کولہاپور، سانگلی، ناگپور، امراوتی سمیت ریاست کے تمام اضلاع میں ٹریکٹر ریلی نکالی گئی۔ اسی درمیان دستخطی مہم بھی جا ری رہی۔ تھورات نے کہا کہ کسان-مزدوروں مخالف مرکزی حکومت کے قوانین کے خلاف کانگریس کی تحریک اس وقت تک جاری رہے گی اور جب تک کسانوں و مزدوروں کو انصاف نہیں مل جاتا۔

ایک نظر اس پر بھی

لو جہاد: یوگی حکومت کے ذریعہ منظور آرڈیننس کو سی پی آئی-ایم ایل نے آئین پر حملہ ٹھہرایا

 کمیونسٹی پارٹی آف انڈیا (ایم ایل) کی اترپردیش اکائی نے یوگی کابینہ کے ذریعہ مبینہ لوجہاد پر منظور کیے گئے آرڈیننس کو ملک کے آئین پر حملہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ ملکی آئین میں حاصل ایک شہری کو انتخاب، مذہب اور شہری آزادی کے حقوق پر کھلا حملہ ہے۔

شاہین باغ کی دادی ’ٹائم میگزین‘ کے بعد ’بی بی سی‘ کی 100 بااثر خواتین کی فہرست میں بھی شامل

ٹائم میگزین کی 2020 میں 100 سب سے بااثر شخصیات کی فہرست میں جگہ بنانے کے بعد اب شاہین باغ کی بلقیس دادی نے ایک اور کامیابی حاصل کرتے ہوئے ’بی بی سی- 100 ویمن آف دی ایئر‘ میں بھی مقام حاصل کیا ہے۔

بھٹکل گُڈلک روڈ میں پائپ لائن بچھانے کے کاموں میں عوام کی طرف سے شکایات کے بعد بھٹکل میونسپل چیف نے واٹربورڈ کے آفسران کے ساتھ رکھی میٹنگ

بھٹکل کے کارگیدے اور گُڈلک روڈ میں  کل اتوار کو عوام الناس کی طرف سے انڈر گراونڈ ڈرینج (یو جی ڈی) کے پائپ لائن بچھانے اور چمبرس تعمیر کرنے کے دوران  کام کو غیر سائنٹیفک اور غیر معیاری قرار دینے کے بعد آج پیر کو بھٹکل میونسپل چیف پرویز قاسمجی نے کاروار سے  واٹر بورڈاور یوجی ڈی ...

بھٹکل قومی شاہراہ سے متصل جگہ پر امیوزمنٹ پارک کو منظوری دینے پر میونسپل کونسلروں کو اعتراض؛ اے سی کو دیا گیا میمورنڈم

قومی شاہراہ 66سے متصل زین لاڈج کے پڑوس میں کھلونوں کی  ایگزبیشن’’امیوز منٹ پارک‘‘ کو منظوری دینے سے نہ صرف شاہراہ پر ٹرافک کا مسئلہ ہوگا بلکہ شاہراہ کے فورلین کاکام بھی جاری ہےاور کووڈ-19کے چلتے عوام کے لئے مناسب نہیں ہے۔  منظوری کو رد کرنے کی مانگ لے کر  سماجی کارکن فیاض ملا ...

کرناٹک میں کورونامعاملات میں اضافہ ہواتو کالجوں کودوبارہ بندکرناناگزیرہوجائے گا: ڈاکٹرکے سدھاکر

دنیابھرمیں کوروناوائرس کی دوسری لہرکاآغازہوگیاہے۔ دہلی اوراحمدآبادمیں بھی دوسری لہرشروع ہوگئی ہے۔ ریاست میں کوروناوائرس کے معاملات میں اضافہ ہوتاہے توپھرکالجوں کوبند کرنا ناگزیرہوجائے گا۔

بی جے پی اپنے مرکزی وزیر کے لو جہاد کا کیا کرےگی: شیوپال سنگھ یادو

ملک میں ’لو جہاد‘ کا مدا اس وقت کافی سرخیوں میں ہے اور اترپردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ کی حکومت اس کے لئے قانون بنانے والی ہے۔ بی جے پی کو چھوڑ کر تمام سیاسی پارٹیاں اس کی مخالفت کر رہی ہیں لیکن اتر پردیش حکومت اس کو مدا بنائے ہوئے ہے۔ پرگتی شیل سماج وادی پارٹی (لوہیا) کے صدر ...