مودی حکومت کے خلاف کانگریس کی ’منصوبہ بندی‘ آخری مرحلے میں، 2024 لوک سبھا انتخاب تک کا خاکہ ہو رہا تیار!

Source: S.O. News Service | Published on 14th September 2021, 11:49 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،14؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) کانگریس مودی حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں کے خلاف لگاتار آواز اٹھا رہی ہے اور قومی ایشوز کو سامنے رکھ کر کئی اہم مشورے بھی دے رہی ہے، لیکن اس کا کچھ خاص اثر مرکزی حکومت پر پڑتا ہوا نظر نہیں آ رہا ہے۔ اب مودی حکومت کو گھیرنے کے لیے کانگریس نے مہنگائی، بے روزگاری، نجکاری، زراعتی بحران سمیت مختلف قومی ایشوز پر تحریک چلانے کے لیے ایک خاکہ تیار کرنا شروع کر دیا ہے جو آخری مرحلے میں ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس تحریک کو لے کر کانگریس کے سرکردہ لیڈروں کی ایک ٹیم نے منصوبہ بندی کی ہے جس پر پارٹی صدر سونیا گاندھی آخری فیصلہ لیں گی۔ کانگریس کی یہ تحریک مرحلہ وار انداز میں آئندہ لوک سبھا انتخاب یعنی 2024 تک چلنے والی ہے۔

اس تعلق سے ایک رپورٹ ہندی نیوز پورٹل ’اے بی پی‘ پر شائع ہوئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ مودی حکومت کے خلاف تحریک چلانے کے لیے خاکہ تیار کرنے کے مقصد سے دگ وجے سنگھ کی صدارت میں بنی کمیٹی نے منگل کے روز پہلی میٹنگ کے بعد اپنا مشورہ پارٹی قیادت کے سامنے پیش کر دیا ہے۔ 15 گرودوارہ رقاب گنج روڈ واقع ’کانگریس وار روم‘ میں ہوئی اس میٹنگ میں پرینکا گاندھی بھی شامل ہوئی تھیں۔

رپورٹ کے مطابق فی الحال یہ پتہ نہیں چل سکا ہے کہ کانگریس کی پالیسی کیا ہوگی، لیکن بی جے پی سے جنگ کو نظریاتی جنگ قرار دیتے ہوئے دگ وجے سنگھ نے کہا کہ ’’کانگریس جوڑنے والا نظریہ ہے اور ہماری لڑائی توڑنے والے نظریہ سے ہے۔‘‘ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا انا ہزارے تحریک کے طرز پر سول سوسائٹی کے لوگوں کو تحریک سے جوڑا جائے گا؟ دگ وجے سنگھ نے کہا کہ اگر سول سوسائٹی کے لوگ بھی جڑنا چاہیں تو ان کا استقبال ہے۔ حالانکہ انا ہزارے کی تعریف کرتے ہوئے دگ وجے نے کہا کہ وہ شریف آدمی ہیں، لیکن ان کا سب نے غلط استعمال کیا، خصوصاً آر ایس ایس نے۔

مذکورہ کمیٹی میں کانگریس کے دلت چہرہ ادت راج بھی شامل ہیں اور انھوں نے کہا کہ ’’کانگریس اب سڑک پر زیادہ نظر آئے گی۔ 2024 تک جدوجہد جاری رہے گا اور انھیں (بی جے پی کو) ہم اقتدار سے بے دخل کر کے ہی دم لیں گے۔‘‘ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ’’27 ستمبر کو کسانوں کے بھارت بند کو کانگریس حمایت دے گی۔ ہم پٹرول پمپوں کے پاس 2014 سے پہلے اور آج کی قیمتوں کے پوسٹر لگائیں گے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

سول سروسز امتحان میں 27 مسلم امیدوار کامیاب، صدف چودھری کو ملک بھر میں 23 واں مقام حاصل

  ملک کے سب سے اہم قرار دیئے جانے والے یو پی ایس سی کے سول سروسز امتحان کے نتائج جاری کر دیئے گئے ہیں۔ اس مرتبہ مسلم طبقہ سے تعلق رکھنے والے کل 27 امیدواروں نے کامیابی حاصل کی ہے، جن میں سے 7 خواتین شامل ہیں۔

سول سروسز امتحان 2020 کے حتمی نتائج کا اعلان، بہار کے شبھم کمار کو اول مقام حاصل

  یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کی جانب سے جنوری 2021 میں منعقدہ سول سروسز امتحان 2020 کے تحریری حصے اور اگست-ستمبر 2021 میں منعقد پرسنالٹی ٹیسٹ (شخصیت) کے لیے انٹرویو کے نتائج کی بنیاد پر انڈین سول سروسز، انڈین فارن سروسز، انڈین پولیس سروسز اور سینٹرل سروسز میں تقرری کے لیے ...

راکیش ٹکیت کاامریکی صدرجوبائیڈن کو ٹیوٹ 11مہینے میں 700کسانوں کی موت، مانگی مدد

وزیر اعظم نریندر مودی اپنے امریکی دورے پر ہیں، جہاں انہوں نے امریکی نائب صدر کملا ہیرس سے ملاقات کی- اب پی ایم مودی صدر جو بائیڈن کے ساتھ اپنی پہلی ملاقات کرنے والے ہیں، جس میں کئی امور پر بات چیت ہونی ہے- لیکن اس دوران کسان رہنما اور بی کے یو کے ترجمان راکیش ٹکیت نے امریکی صدر جو ...

پسماند ہ طبقہ سے اتنی نفرت کیوں؟ ذات پرمبنی مردم شماری سے مرکزکے انکارپرلالویادوکاحملہ

بہارمیں ذات کی مردم شماری کے معاملے پر سیاست جاری ہے۔ آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو نے مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا ہے کہ اس نے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کر کے 2021 میں ذات پرمبنی مردم شماری سے انکار کیا۔