مہاراشٹر: بی جے پی نے اپنے اسپیکر امیدار کا نام واپس لیا، کانگریس رہنما نانا پٹولے بلا مقابلہ منتخب

Source: S.O. News Service | Published on 1st December 2019, 9:01 PM | ملکی خبریں |

ممبئی، یکم دسمبر (ایس او نیوز/ایجنسی) مہاراشٹر میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اسپیکر کے لئے مقرر کئے گئے اپنے امیدوار کا نام واپس لے لیا ہے۔ بی جے پی نے اس عہدے کے لئے کشن کٹھورے کو امیدوار بنایا تھا لیکن اسمبلی میں انتخاب سے عین قبل اس نے کٹھورے کا واپس واپس لینے کا اعلان کر دیا۔ امیدوار کا نام صبح ساڑھے دس بجے تک واپس لیا جا سکتا تھا۔

اسپیکر کے انتخاب سے کچھ وقت پہلے ایک کل جماعتی اجلاس کا انعقاد یا گیا، جس کے بعد بی جے پی نے انتخاب سے پیچھے ہٹنے کا فیصلہ کر لیا۔ دریں اثنا، کانگریس رہنما نانا پاٹولے نے صحافیوں سے کہا کہ مہاراشٹرا اسمبلی کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے جب کوئی اسپیکر بلامقابلہ منتخب کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ مہاراشٹر کی اہم حزب اختلاف کی جماعت بی جے پی نے ہفتہ کے روز اعلان کیا تھا کہ وہ اسمبلی اسپیکر کے انتخاب میں حصہ لے گی اور اس کے لئے ممبر اسمبلی کشن کٹھوریا کو اپنا امیدوار مقرر کر دیا۔ ادھر، مہا وکاس اگھاری کی جانب سے کانگریس رہنما نانا پٹولے کو امیدوار بنایا گیا۔ غور طلب ہے کہ کٹھورے تھانے جبکہ نانا پٹولے بھانڈارا سے رکن اسمبلی منتخب ہوئے ہیں۔

اسپیکر کے حوالہ سے مہاراشٹر بی جے پی کے صدر چندر کانت پاٹل نے کہا کہ ہماری پارٹی نے اسمبلی اسپیکر کے عہدے کے لئے کشن کٹھورے کو امیدوار بنایا تھا لیکن ہم نے ان کا نام واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

ادھر، این سی پی رہنما چھگن بھج بل نے اسمبلی اسپیکر انتخاب کے حوالہ سے کہا، حزب اختلاف نے بھی اسمبلی اسپیکر کے عہدے کے لئے پرچہ نامزدگی داخل کیا تھا لیکن دیگر ایم ایل اے کی درخواست اور اسمبلی کے وقار کو برقرار رکھنے کی خاطر، انہوں نے نام واپس لے لیا۔ اب اسپیکر کا انتخاب بلا مقابلہ ہونا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ریپ کے معاملے پرسوال سے بھاگ جانے والے سشیل مودی نے زبان کھولی،راہل کو چیلنج کرتے ہوئے ٹویٹ کیا، اپنے آپ پر اعتماد کرو، اپنے حقیقی نام پر الیکشن لڑو

پٹنہ سیلاب کے موقعہ پربھاگ جانے والے اورریپ کے واقعے پرسوال سے فرارہوجانے والے نائب وزیراعلیٰ سوشیل کمارمودی کی زبان راہل گاندھی پرکھل گئی ہے۔بے چارے نے ان معاملات پرچپی کے بعدکچھ توبولاہے۔