کانگریس ایم ایل اے بھیم نایک کا اپنے ہی وزیرپی ٹی پرمیشورپر الزام، ڈیم پروجیکٹ کے لیے کمیشن مانگا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th June 2019, 11:10 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 26 جون(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) کرناٹک کے بلاری سے کانگریس ممبر اسمبلی بھیم نایک نے اپنی ہی سرکار کے وزیر پی ٹی پرمیشور پر سنگین الزامات عائد کئے ہیں۔انہوں نے الزام لگایا ہے کہ پی ٹی پرمیشور نے ایک ڈیم کی تعمیر کے منصوبے میں ٹھیکیدار سے کمیشن مانگا ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹھیکیدار، وزیر پی ٹی پرمیشور کے پاس جاتا ہے۔اس کے بعد وزیر ٹھیکیدار سے پوچھتے ہیں کہ اس 150 کروڑ کی گرانٹ میں سے کمیشن دیناہو گا۔بھیم نایک کے مطابق وزیر نے ٹھیکیدار سے کہا کہ 12 کلومیٹر پائپ لائن میرے حلقہ سے ہوکر جاتی ہے،80 کام میرا حلقہ ہے،مجھے کمیشن کی ضرورت ہے، تبھی میں کام شروع کرنے دوں گا۔ساتھ ہی انہوں نے پی ٹی پرمیشور کو بیکار کا وزیر قرار دیا،بھیم نایک نے کہا کہ میں نے اس کی شکایت ڈی شیو کمار سے کی ہے،وہ اس کے بارے میں جانتے ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

مہاراشٹر سیاسی گہما گہمی پر دیوے گوڑا کا بڑا بیان ’’سیاست میں کوئی کسی کا مستقل دوست یا دشمن نہیں‘‘

سابق وزیر اعظم اور جنتا دل سیکولر کے سربراہ ایچ ڈی دیوے گوڑا نے مہاراشٹر میں بدلتے ہوئے سیاسی واقعات پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے پیر کو کہا کہ سیاست میں کوئی کسی کا مستقل دوست یا دشمن نہیں ہوتا اور وقت کے مطابق حالات بدلتے رہتے ہیں۔

یلاپور ضمنی انتخاب: شیورام ہیبارکی سیاسی حیثیت کا انحصار سپریم کورٹ کے فیصلے پر؛ کیا بی جے پی لیڈران ہیبار کے لئے انتخابی مہم چلائیں گے ؟

یلاپور، بنواسی اور منڈگوڈ تعلقہ جات پر مشتمل اسمبلی حلقے میں انتخابی بخار تیز ہونے لگا ہے۔ جبکہ اس حلقے سے مستعفی ہونے والے سابق رکن اسمبلی شیورام ہیبار کی سیاسی حیثیت سپریم کورٹ کے فیصلے پر ٹکی ہوئی ہے، جو 13نومبر کو سامنے آنے والا ہے۔

یلاپور ضمنی انتخاب میں کانگریس کررہی ہے اپنی سیٹ بچانے کی جان توڑ کوشش۔ داؤ پرلگی ہے بھیمنّا نائک کی سیاسی زندگی 

ضمنی اسمبلی انتخابات کی تاریخ کا اعلان ہوتے ہی کانگریس پارٹی یلاپور حلقے میں اپنی سیٹ بچانے کی جان توڑ کوشش میں لگ گئی ہے۔اس کے ساتھ ہی کانگریس ضلع صدر بھیمنّا نائک کو اس حلقے سے پارٹی کا امیدوار بنائے جانے کی وجہ سے ان کی سیاسی زندگی بھی داؤ پر لگی ہوئی ہے۔

مضافاتی ریل خدمات 7؍ سال میں مکمل طور پر نافذ ہو جائیں گی؟

پچھلے ہفتہ ریلوے بورڈ کی طرف سے ریاستی حکومت کے ذریعہ پیش کر دہ نظر ثانی شدہ تفصیلی منصوبہ جاتی رپورٹ کو منظوری کے ساتھ ہی طویل عرصہ سے زیر التواء 16,035 کروڑ روپئے لاگت والے بنگلور شہر میں مضافاتی ریل منصوبے کو تحریک حاصل ہو گئی ہے-