کانگریس کی کرناٹک یونٹ تحلیل، صدر اور کارگزار صدر کو رکھا گیا برقرار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 19th June 2019, 10:42 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 19 جون(ایس او نیوز/ایجنسی) لوک سبھا الیکشن میں کرناٹک میں مایوس کن کارکردگی کے بعد کانگریس نے بدھ کو پردیش کانگریس کمیٹی (پی سی سی) کو تحلیل کردیا۔ حالانکہ صدراورکارگزارصدر اپنے عہدے پر برقرار رہیں گے۔ پارٹی کے تنظیمی جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال کی طرف سے جاری بیان کے مطابق آل انڈیا کانگریس کمیٹی نے کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی کو تحلیل کردیا ہے اورصدراورکارگزارصدرکو برقرار رکھا گیا ہے۔

کانگریس نے اس قدم کی وجہ نہیں بتائی ہے، لیکن اسے لوک سبھا الیکشن میں پارٹی کی خراب کارکردگی سے جوڑکردیکھا جارہا ہے۔ واضح رہے کہ ریاست میں جے ڈی ایس کے ساتھ اتحاد میں ہونے کے باوجود کانگریس کرناٹک میں صرف ایک سیٹ جیت پائی ہے۔ دراصل کرناٹک میں حال کے دنوں میں تیزی سے الٹ پھیردیکھنے کو مل رہا ہے۔ اس سے قبل کانگریس لیڈراوررکن اسمبلی آرروشن بیگ کو پارٹی مخالف سرگرمیوں میں شامل ہونے کے الزام میں پارٹی سے معطل کردیا گیا تھا۔

لوک سبھا الیکشن 2019 میں کانگریس کو زبردست شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ شکست کے بعد روشن بیگ نے اپنی ہی پارٹی پرسوالیہ نشان کھڑے کردیئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کے دوران کانگریس نے مسلمانوں کوووٹ بینک کے طورپراستعمال کیا۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے دل میں خوف پیدا کیا گیا اوراس خوف کی وجہ سے مسلمان ایک خاص نظریے پرکام کرتے ہیں۔

اس سے قبل روشن بیگ نے وینوگوپال کومسخرہ اورسدا رامیا کومتکبرقراردیا تھا۔ جس پرانہیں وجہ بتاؤ نوٹس جاری کی گئی تھی۔ تاہم روشن بیگ نے وجہ بتاونوٹس کونظرانداز کرتے ہوئے اس کاجواب نہ دینے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کانگریس کے لیڈران اپنی نکتہ چینی تیزکرتے ہوئے دیگر لیڈران کوبھی نشانہ بنا رہے تھے۔ روشن بیگ نے صدرپردیش کانگریس دنیش گنڈوراؤکو بھی فلاپ ہیروقراردیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو۔بنگلوروٹریک پرچٹان توڑنے کا کام مسلسل جاری۔ دن کے وقت چلنے والی ریل گاڑیاں 24جولائی تک کے لئے منسوخ

انی بندا کے قریب سبرامنیا سکلیشپور ریلوے ٹریک پر ایک بڑی چٹان لڑھکنے کا خطرہ پیدا ہوگیا تھا۔ اس حادثے کو روکنے کے لئے پہاڑی تودے کو دھماکے سے توڑنے کاکام پچھلے دو تین دن سے جاری ہے جس کے لئے ہیٹاچی مشین کے کامپریسر اور بارود کا استعمال کیا جارہا ہے۔ لیکن تیز برسات کی وجہ سے دن ...

کرناٹک: بی ایس پی ارکان اسمبلی کمارسوامی کے حق میں ووٹ کریں گے:مایاوتی

کرناٹک میں کانگریس اورجے ڈی ایس کی مخلوط حکومت رہے گی یا جائے گی اس کا فیصلہ آج ہو جائے گا ۔ برسر اقتدار اتحاد کے ارکان اسمبلی کو بی جے پی ٹوڑنے کی کوشش کر رہی ہے لیکن اس بیچ بی ایس پی سپریموں نے کہا ہے کہ اس کی پارٹی کے ارکان اسمبلی کمارسوامی حکومت کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں گے ۔ یہ ...

مخلوط حکومت کی بقا کا سسپنس برقرار آج بھی اسمبلی میں تحریک اعتماد پر ووٹنگ کا امکان،باغیوں کو واپس لانے کیلئے سدارامیا کو وزیر اعلیٰ بنانے کی پیش کش

ریاست میں کانگریس جے ڈی ایس مخلوط حکومت کوبچانے کے لئے اتحادی جماعتوں کے قائدین کی کوششوں کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف اپوزیشن بی جے پی اس کوشش میں ہے کہ کسی طرح پیر کے روزتحریک اعتماد پر اسمبلی میں ووٹنگ ہو جائے لیکن خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں