10؍دسمبر کو ہورہے قانون ساز الیکشن کے لئے کانگریس کی مہم

Source: S.O. News Service | Published on 28th November 2021, 11:15 AM | ریاستی خبریں |

کولار ، 28؍نومبر (ایس او نیوز) یہاں کے کولار روڈ پر واقع ایس این ریسارٹ میں 10/دسمبر 2021کو منعقد ہونے والے ریاستی قانون ساز کونسل انتخابات کی مہم کا انعقاد کیاگیا۔ اس مہم کا افتتاح مقامی رکن اسمبلی ایس ایس نارائن سوامی نے کیا۔ اس موقع پر انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اس انتخابات کے لئے ضلع کولار،چکبالاپور کانگریس امیدوار کی حیثیت سے انیل کمارکو ٹکٹ دیاگیا ہے۔ یہ فیصلہ سرینواس پور کے رکن اسمبلی رمیش کمار، کولار کے رکن اسمبلی سرینواس گوڑا مالور کے رکن اسمبلی بچے گوڑا، ملباگل کے سابق رکن اسمبلی کتور منجوناتھ، ایم ایل سی نصیر احمد اور دیگر لیڈرس کی موجودگی میں لایاگیا۔ ضلع کولار کانگریس کے صدر کے چندرا ریڈی آخر تک اس ریس میں شامل تھے۔ چندرا ریڈی کو اس انتخابات میں امیدوار بنانے کے لئے میں نے آخری دن تک کوشش کی لیکن افسوس ایسا نہیں ہوسکا۔ ہائی کمانڈرنے اس انتخابات کے لئے انیل کمار کے حق میں فیصلہ کیا ہے۔ اور ابھی خبر ملی ہے کہ چندرا ریڈی کانگریس پارٹی چھوڑکر بی جے پی میں شامل ہوگئے۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ 6/سال پہلے ریاستی قانون ساز کونسل انتخابات میں بھی کولار، چکبالاپور کانگریس امیدوار انیل کمار ہی تھے اور اس وقت انہیں شکست ہوگئی لیکن اس بار ایسا نہیں ہوگا کیونکہ دونوں اضلاع کے اسمبلی اراکین سے مل کر ان کا ساتھ دے رہے ہیں۔ اورمجھے یقین ہے اس بار ضرور وہ کامیابی حاصل کرلیں گے۔ انہوں نے اس موقع پر بنگارپیٹ حلقے کے گرام پنچایت کے اراکین اور میونسپل کونسلرس سے مخاطب ہوکر کہاکہ اس بار بی جے پی اور جے ڈی ایس پارٹی دونوں مل کر کانگریس کو ہرانے کی سازش کررہے ہیں۔ انہوں نے انیل کمار کو یقین دلایا کہ بنگارپیٹ حلقے سے اس انتخابات میں ضرور اکثریت حاصل کریں گے۔ اس موقع پرانیل کمار نے کہاکہ میں گزشتہ20/ سال سے کانگریس پارٹی کی خدمت کرتا آرہا ہوں۔2010میں میں نے ضلع کولار کانگریس کے صدر کی حیثیت سے کام شروع کیا اور 2015میں مجھے ایم ایس آئی ایل چیرمین کا عہدہ بھی حاصل ہوا۔ اور میں نے عہدوں سے مستعفی ہوکر گزشتہ سال قانون ساز کونسل انتخابات میں حصہ لیا۔ لیکن افسوس اس انتخابات میں مجھے شکست ہوگئی۔ اب مجھے یقین ہے کہ اس انتخابات میں آپ سب مل کر میرا ساتھ دیں گے کیونکہ عوام بی جے پی حکومت سے تنگ آچکے ہیں۔ خصوصاً ضلع کولارمیں بی جے پی حکومت کی وجہ سے تمام ترقیاتی کام ٹھپ ہوگئے ہیں جب ریاست کے وزیراعلیٰ سدرامیا تھے اس وقت خصوصاً مقامی رکن اسمبلی ایس این نارائن سوامی نے کافی حد تک اس حلقے کے لئے ترقیاتی کام تیزی کے ساتھ مکمل کئے۔

ایک نظر اس پر بھی

کوروناکے معاملات میں مسلسل اضافہ۔ رام نگرم ضلع کا کووڈ ہاٹ اسپاٹ ہونا خود عوام کو ستانے لگا

پچھلے دنوں ریاست بھر میں کووڈ کی تیسری لہرکے دوران اور اومیکرون کے تیزی سے پھیلنے کے باوجود ضلع میں کووڈ کے مریضوں کی تعداد کم ہی نظرآرہی تھی،مگر پچھلے ایک ہفتے سے کووڈ کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہواہے۔

اس موسم میں سردی و بخار عام ہے، گھبرانے کی ضرورت نہیں، 25؍ جنوری تک کورونا معاملوں میں اضافہ ہوسکتا ہے: وزیر صحت کے سدھاکر

کرناٹک میں جنوری کی آخر تک کورونا معاملوں میں سب سے زیادہ اضافہ ہونے کے خدشات کے درمیان منگل کو کورونا متاثرین کی تعداد میں معمولی کمی دیکھی گئی۔ 

بنگلورو: 19سے زیادہ جرائم سے معا ملات میں ملوث ملزم راہل پر ہنومنت نگر پو لیس گو لی چلا کر گرفتار کرنے میں کا میاب

منشیات کے دھندہ سمیت جرائم کے19معا ملات میں ملوث ہوکر عدالت سے8مرتبہ وارنٹ جاری ہو نے کے باوجود پو لیس کو چکمہ دے کر فرار ہو رہے غنڈہ راہل پر گو لی چلا کر ہنو منت نگر پو لیس گرفتار کر نے میں کامیاب رہی۔

کووڈ پر قابو پانے کے لئے مہا لکشمی لے آ ؤٹ علاقہ میں وار روم کاقیام، کورونا متا ثرین کو فوری علاج کیلئے درکار اقدامات کئے جا ئیں گے:ریاستی وزیرگو پا لیا

ریاستی وزیر برائے آبکاری کے گوپالیا نے کہا کہ شہر میں روزانہ کووڈ معا ملات میں اضافہ کے پیش نظر اس پر قابو پانے کے لئے ریاستی حکومت نے احتیاطی اقدامات کئے ہیں۔

بنگلورو میں کووڈ کے بڑھتے معا ملات، سلیکان سٹی ڈینجر سٹی میں تبدیل ہوتادکھا ئی دے رہا ہے

بنگلورو شہر میں روزانہ کووڈ کے معا ملات میں اضافہ کے پیش نظر سلیکان سٹی ڈینجر سٹی کے طور پر تبدیل ہوتے دکھا ئی دے رہا ہے۔آنے والے دنوں میں شہر میں کووڈ کے معا ملات میں مزید اضافہ کے خدشات ہیں۔کل شہر میں کووڈ کے 23ہزار معاملات درج ہو ئے تھے،جس سے شہریوں میں خوف کا ماحول دکھا ئی ...

کووڈ کی دوسری اور ممکنہ تیسری لہر کے خدشات کے باوجود۔ بی بی ایم پی نے2,589کروڑ روپئے جائیدادا ٹیکس کے طور پر وصول کئے

کووڈ کی دوسری لہر اور ممکنہ تیسری لہر کے درمیان ہی بروہت بنگلور مہا نگر پا لیکے(بی بی ایم پی) نے جاریہ ما لی سال کے9ماہ کے دوران جملہ2,589 کروڑ روپیوں کا جائیداد ٹیکس وصول کیا ہے۔