مودی کے دورہ کرناٹک کے دوران کانگریس کے 19سوال؟ اپوزیشن پارٹی نے وزیر اعظم کو ریاست کے عوام سے کئے گئے وعدے یا ددلائے

Source: S.O. News Service | Published on 3rd September 2022, 11:51 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،3؍ ستمبر(ایس او  نیوز)وزیر اعظم نریندرمودی کی ساحلی کرناٹک میں مختلف ترقیاتی کاموں کے افتتاح کے موقع پر آمد کے بعدکانگریس پارٹی نے سوشیل میڈیا پر ان کے خلاف زبرشت مہم چھیڑ کر انہیں خوب آڑے ہاتھوں لیا ہے اور سوال کیا ہے کہ اس سے پہلے کرناٹک کے دوروں کے دوران مودی نے جو بلند بانگ وعدے کئے تھے ان کا کیا ہوا۔

پارٹی نے مودی کا دھوکہ نام کا ایک ہیش ٹیگ بنا کر اس کے ذریعہ وزیر اعظم سے سوالات کی بوچھاڑ کردی۔ سوال کیا ہے کہ مودی نے بنگلور و سمیت ریاست کے سات شہروں کو اسمارٹ سٹی بنانے کا اعلان کیا، ان کا کیا ہوا؟۔ ان شہروں کوا سمارٹ بنانے کے لئے مودی نے 836کروڑ روپے دینے کا وعدہ کیا، وہ دے دئیے؟۔ اب اسمارٹ سٹی تو چھوڑو یہ سٹی کہلانے کے لائق بھی نہ رہے۔ بارش کے سبب یہ تمام شہر ڈوب چکے ہیں۔

کانگریس نے سوال کیا ہے کہ کیا مودی کے دور میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت کم ہو گئی؟۔ کیا عوام کی جیب میں تمام اخراجات کے بعد پیسے کی بچت ہو رہی ہے۔کانگریس نے کہا ہے کہ مودی جی!کنڑیگاؤں نے مودی کے وعدوں کو یاد رکھا ہے۔ مودی نے کہا تھا کہ فروغ ہنر پر توجہ دی جائے گی۔ روزگار کے مواقع پیدا کئے جائیں گے۔ لیکن کرناٹک میں اب سرکاری نوکریاں فروخت ہو رہی ہیں۔ بے روزگاری اپنی انتہا پر ہے۔ آپ کے وعدے کیا ہوئے؟مودی کے دھوکوں کی فہرست اگر بنائی جائے تو وہ آسمان کو چھولے گی۔ گیس کنکشن کے بارے میں مودی نے جب ٹیلی پرامپٹر سے پڑھ کر تقریر کی تھی اس کے بعد ہی انہوں نے گیس سلنڈر پر دی جانے والی سبسڈی روک دی تھی۔ گیس کی قیمتوں میں اضافہ کے بارے میں کرناٹک کی ماؤں کے سوال کا جواب کیا مودی کے پاس ہے؟۔خواتین کے تحفظ کی بات کرتے ہیں۔ لیکن ایک وزیر کو ہی عصمت دری کے الزامات سے بچا یا گیا۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ عصمت ریزی کا شکار ہونے والی مظلومہ کی ہی غلطی ہے۔

بی جے پی کے اراکین اسمبلی خواتین پر حملہ کر رہے ہیں، ان تمام کے خلاف آپ نے کیا قدم اٹھایا؟۔مودی نے وعدہ کیا تھا کہ خواتین کو ایک فیصد شرح سود پر 2لاکھ روپے تک کا قرضہ دیا جائے گا، اس کی بجائے کنٹراکٹروں سے 40فیصد کمیشن وصول کیا جا رہا ہے۔مودی نے خواتین کی ترقی کے لئے سکنیا سمردھی اسکیم کے تحت کروڑو ں روپے جمع کرنے کا اعلان کیا، ایسا تو نہیں ہوا لیکن کرناٹک میں کرپشن کا بول بالا ہو رہا ہے او ر کروڑوں روپے رشوت کے طور پر بٹورے جا رہے ہیں۔

کانگریس نے کہا ہے کہ مودی کے سارے وعدے ہزار وں، لاکھوں کروڑر وپے کے ہوتے ہیں لیکن عملی میدان میں دیکھا جائے تویہ صفر ہیں۔مودی نے خواتین کوترقی کرنے کے لئے استری انتی اسٹور کھولنے کا اعلان کیا،لیکن ریاست میں آپ کی پارٹی کی حکومت نے نوکریاں فروخت کرنے کی دکان کھول کر بیٹھ گئی ہے، اس بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟۔ڈبل انجن حکومت نے کرناٹک کے ساتھ ہمیشہ ناانصافی کی ہے۔

بنگلورو میسور ریل سے بھی زیادہ رفتار سے تقریر کرنے والے مودی نے میسور کو پیرس بنانے کا اعلان کیاتھا،اب میسور اور بنگلورو کے درمیان کا بیشتر حصہ ڈوبا ہوا ہے، اس پر مودی کیا کہیں گے؟۔ بنگلور و میسور شاہراہ پر ہزاروں کی تعداد میں گڈھے ہیں،کیا وہ مودی کی نظر میں آئے ہیں۔ اسی طرح کانگریس نے کرناٹک سے جڑے مختلف معاملات پر مودی سے 19سوال کئے ہیں اور ریاستی حکومت کی مبینہ بدعنوانیوں کو ان کے سامنے لانے کی کوشش کی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بجٹ 2023: ’کوئی امید نہیں، بجٹ ایک بار پھر ادھورے وعدوں سے بھرا ہوگا‘، سدارمیا کا اظہارِ خیال

یکم فروری کو مرکز کی مودی حکومت رواں مدت کار کا آخری مکمل بجٹ پیش کرنے والی ہے۔ مرکزی وزیر مالیات نرملا سیتارمن کے ذریعہ بجٹ پیش کیے جانے سے قبل بجٹ 2023 کو لے کر کانگریس کے کچھ لیڈران نے اپنے خیالات ظاہر کیے ہیں۔

کرناٹک ہائی کورٹ کی وارننگ، کہا: چیف سکریٹری دو ہفتوں میں لاگو کرائیں حکم

کرناٹک ہائی کورٹ نے منگل کو انتباہ دیا کہ اگر ریاستی حکومت دو ہفتوں کے اندر سبھی گاؤں اور قصبوں میں قبرستان کے لئے زمین فراہم کرانے کے اس کے حکم پر عمل درآمد کرنے میں ناکام رہتی ہے تو وہ چیف سکریٹری کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کرنے پر مجبور ہوجائے گا ۔

منگلورو: محمد فاضل قتل میں ہندوتوا عناصر ملوث ہونے کا دعویٰ - اپوزیشن پارٹیوں نےکیا کیس کی دوبارہ جانچ کامطالبہ 

بی جے پی یووا مورچہ لیڈر پروین نیٹارو قتل کے بدلے میں عناصر کی طرف سے سورتکل میں محمد فاضل کو قتل کرنے کا کھلے عام دعویٰ کرنے والے وی ایچ پی اور بجرنگ دل لیڈر شرن پمپ ویل کے خلاف کانگریس ، جے ڈی ایس اور ایس ڈی پی آئی جیسی اپوزیشن پارٹیوں نے اس قتل کیس کی ازسر نو جانچ کا مطالبہ کیا ...

ٹمکورو میں اشتعال انگیز بیان دینے والے شرن پمپ ویل سمیت دیگر ہندوتوا لیڈروں کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ لے کر اے پی سی آر نے ایس پی کو دیا میمورنڈم

حال ہی میں ریاست کرناٹک کے  ٹمکور میں  منعقدہ شوریہ یاترا کے دوران وی ایچ پی لیڈر شرن پمپ ویل نے جو متنازع اور اشتعال انگیز بیان دیا  تھا ، اس پر کٹھن کارروائی کرتے ہوئے اسے گرفتارکرنے کا مطالبہ لے کر  ایسوسی ایشن فار پروٹیکشن آف سوِل رائٹس (اے پی سی آر) کے  ایک وفد نے ٹمکورو ...