بھٹکل میں حافظات کا مسابقہ حفظ قرآن کریم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 4th May 2019, 10:47 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل ۴مئی (ایس او نیوز/موصولہ رپورٹ)   جمعیت الحافظات جامعۃ الصالحات بھٹکل کے زیر اہتمام بھٹکل کی تاریخ میں پہلی مرتبہ حافظات کے مابین مسابقہ حفظ قرآن منعقد ہوا جس میں شہر بھٹکل کی 74 کے قریب منتخب طالبات وخواتین نے حصہ لیا، یہ اپنی نوعیت کا ایک منفرد اور انوکھا پروگرام تھا جس میں مختلف عمر کی حافظات نے شرکت کی اورپروگرام کے جملہ انتظامات بھی خواتین ہی نے سنبھالے۔

مسابقہ کو نو گروپ میں تقسیم کیا گیا تھا جس میں سفلی،وسطی اور علیا تین زمرے تھے اور ہر زمرہ میں دس پارے،پندرہ پارے اور مکمل قرآن، مسابقہ کے لیے جملہ 120 کے قریب فارم موصول ہوئے تھے،مختلف نشستوں میں شرکاء کی جانچ کے بعد74 ممتاز شرکاء کو مسابقے کے لیے منتخب کیا گیا،منتخب مساہمات کا مسابقہ پانچ نشستوں میں مختلف اوقات میں رکھا گیا، جملہ زمروں کے ہر گروپ میں اول دوم سوم آنے والوں کو گراں قدر انعامات سے نوازا گیا نیز تمام منتخب شرکاء کو بھی خصوصی انعامات دیے گئے، اس کے علاوہ بھٹکل کی سطح پر سب سے عمر رسیدہ حافظہ 85 سال کی معمر خاتون محترمہ شہربانو محتشم صاحبہ اوربڑی عمر میں حفظ کرنے والی حافظہ محترمہ زرینہ ایس ایم صاحبہ کو 54 سال کی عمر میں پہنچنے کے بعد حفظ مکمل کرنے پر اور عفیفہ انجم بنت محمد میراں ارمار صاحبہ کوصرف پچاس دن میں حفظ مکمل کرنے پر اور عزیزہ مریم اقرأ بنت محمد سلیم بایزید کو صرف آٹھ سال کی عمر میں حفظ مکمل کرنے پر، اسی طرح اس وقت بھٹکل کی  سب سے کم عمر حافظات کو بھی خصوصی اعزازات سے نوازا گیا، اسی طرح ان خواتین کا بھی خصوصی اعزاز کیا گیا جن کی تمام اولاد حافظ قرآن ہیں،نیز گزشتہ 20 سال یا اس سے زائد مدت تک مسلسل قرآن رمضان المبارک کی تراویح میں سنانے والی 50 سے زائد حافظات کو بھی خصوصی اعزاز دیا گیا، مجموعی طور پر چار لاکھ روپے کے انعامات تقسیم کیے گئے۔اختتامی نشست میں جامعۃ الصالحات کے معاون ناظم مولانا الیاس صاحب ندوی نے اعلان کیا کہ اس طرح کا پروگرام ان شاء اللہ ہر سال ہوگا اور اگلے سال حفظ کرنے والی نامکمل یعنی زیر تکمیل حافظات کے درمیان بھی دس/ پندرہ اور بیس پاروں کا مسابقہ ان شاء اللہ ہوگا۔

 الحمدللہ پروگرام توقع سے زیادہ کامیاب رہا، پروگرام کی جملہ نشستوں میں خواتین کی کثیر تعداد حاضر ہوئیں،اور جامعۃ الصالحات جالی روڈ کا وسیع کمپا ؤنڈ اپنی تنگ دامانی کی شکایت کرنے لگا، ان حافظات کے قرآن کو سن کر ایک نئے جذبہ اور شوق کے ساتھ خود حافظ بننے اور اپنی اولاد کو حافظ بنانے کے ارادے سے خواتین واپس ہوئیں، حاضرین کی طرف سے اس طرح کے پروگرام بار بار منعقد کرنے کی خواہش ظاہر کی گئی،مسابقہ میں اول دوم سو م آنے والی حافظات یہ ہیں :

سفلی مکمل قرآن 
عائشہ بنت سید فضل الرحمن صاحب برماور    اول
مریم اقرأ بنت محمد سلیم صاحب بایزید     دوم 
ثمرہ بنت سید اشرف صاحب ایس جے        سوم 

وسطی مکمل قرآن
ام ہانی بنت مولانا سید ابرار صاحب بافقیہ      اول
نورہ بنت محمد شعیب صاحب قاضیا     دوم 
ندیٰ بنت محمد شعیب صاحب قاضیا     سوم 

علیا مکمل قرآن 
فائقہ بنت محی ا لدین صاحب اسحاقی           اول
صغیرہ بانو بنت محمد عثمان صاحب محتشم    دوم 
گل تاج بنت شمس الدین صاحب افریکہ         سوم 

وسطی   ۱۵ پارے
عائشہ فدا بنت حشمت اللہ رکن الدین     اول
  خدیجہ بشری بنت منور  پیشمام             دوم  

ثمرہ بنت اشرف ایس جے /راسخہ تنزیل بنت زبیر رکن الدین /فالحہ بنت اکرم اکرمی   سوم                                                                                                                                                                                                                     
علیا ۱۵  پارے 
ناصحہ بنت محمد حسین صاحب اکرمی    اول
خدیجہ کبری بنت محمد سائب صدیقہ     دوم 
فہمیہ بنت محمد عرفان قاسمجی  /  فاطمہ زلفی بنت محمد مسعود مصباح      سوم 

سفلی ۱۰ پارے
 سائرہ نوال بنت بہاء الدین ایف اے       اول
عائشہ بنت عطاء الرحمن ملا      دوم 
رابعہ بصری بنت مصدق ایس ایم  / رابعہ انوشہ بنت احسان الحق سعدا   سوم 

وسطی ۱۰ پار
 ہاجرہ بشری بنت سلطان ایس ایم       اول
واصفہ بنت حسین شبیر رکن الدین     دوم 
خدیجہ مازیہ بنت محمد حسین معلم  /  بی بی سمیرہ بنت اعجاز احمد شیخ    سوم 

علیا ۱۰ پارے
نمرہ بنت محمد زبیر صاحب ملا      اول
فاطمہ ثمرین بنت محمد انصار قاضیا      دوم 
نبیلہ بنت محمد جعفر رکن الدین /مہناز بنت محمد اشرف رکن الدین    سوم

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں مہرشی والمیکی جینتی پروگرام : وید اور پران کسی ایک طبقے تک محدود نہیں : جئے شری موگیر

مہرشی والمیکی نے سماج میں مساوات، بھائی چارگی ، آپسی اعتماد ، پیار و محبت پیدا کرنے والے مہان شخصیت تھے۔ وید اور پران کسی بھی ایک طبقے تک محدود نہیں ہونے کا اترکنڑا ضلع پنچایت صدر جئے شری موگیر نے خیال ظاہر کیا۔

بھٹکل کے وینکٹاپور برج پر لاریوں کی آپسی ٹکر : کوئی جانی نقصان نہیں

سامان سے لدی لاری اور مچھلی سپلائی سواری کے درمیان آپسی تصادم میں دونوں سواریوں کو شدید نقصان پہنچنے اور کرشماتی طورپر ڈرائیور اور کلینر بغیر کسی جانی نقصان سے عافیت پانے کا واقعہ سنیچر کی رات وینکٹاپور پُل پرپیش آیاہے۔

بھٹکل میں آدھار کارڈ کے سینٹرس تمام پنچایت دفتروں میں قائم کرنے کا مطالبہ لے کر کانگریس مائناریٹی کمیٹی کی جانب سے ڈپٹی کمشنر کو میمورنڈم

کانگریس ضلع مائناریٹی کمیٹی کی جانب سے ڈپٹی کمشنر کے نام ایک میمورنڈم دیا گیاجس میں مطالبہ کیاگیا ہے کہ آدھار کارڈ رجسٹریشن اور اس سے متعلقہ دوسری کارروائیوں کے لئے بھٹکل میں آدھار سنٹرز میں اضافہ کیا جائے اور تمام گرام پنچایتوں میں بھی ایسے سینٹرز قائم کیے جائیں۔

بھٹکل میں کی گئی شراب کا نشہ چھوڑنے والوں کی تہنیت

بھٹکل کے نسچل مکھی وینکٹر ا منا مندر میں اکھل کرناٹکا جن جاگرتی ویدیکے، دھرمستھلا گرام ابھیرودّی یوجنے بی سی ٹرسٹ (رجسٹرڈ)شمالی کینرااور کرناٹکا راجیہ مدھیہ پان سمیم منڈلی بنگلوروکے اشتراک سے ضلعی سطح پر گاندھی سمرتی، جن جاگرتی جتھا اور شراب کی لت چھوڑنے والوں کو تہنیت کا ...

کاروار میں مہرشی والمیکی جینتی پروگرام میں طلبا کی تہنیت : جدید ترقی نے زند گی کو بدل کررکھ دیا ہے : ڈی سی

بدلی ہوئی جدید زندگی میں لوگوں کے اصول واقدار میں بھی تبدیلیاں ہوئی ہیں۔ نئی نسل میں پہلے جیسے  بزرگوں کا احترام باقی نہیں رہا،نئی نسل کے نوجوان صرف  ظاہری اصولوں پر اکتفا کرنا افسوس ناک ہے۔ والدین خاص کر اس سلسلے میں نوجوانوں پر توجہ دے کر تربیت و رہنمائی کرنےکی اترکنڑا ضلع ...

ہوناور:قرض داروں کے تقاضے سے تنگ آکرآنگن واڈی کارکن خاتون نے کی خود کشی۔ ہراساں کرنے والوں کے خلاف قانونی کاروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاجی مظاہرہ

بھاری شرح سود پرقرضہ دینے والوں کے تقاضے اور ہراسانی سے تنگ آکرکلسین موٹے کے مقام پر ایک آنگن واڈی کارکن نیتراوتی(31سال) نامی خاتون نے شراوتی ندی میں کود کرجمعہ کے دن خود کشی کرلی۔اس کے خلاف عوام نے تعلقہ اسپتال کے سامنے احتجاجی مظاہرا کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ قرض واپس لوٹانے کے ...