کاروار:ہائی وے توسیع کے لئے سرکاری زمین تحویل میں لینے پرمعاوضہ کی ادا ئیگی۔ ملک میں قانون وضع کرنے کے لئے ضلع شمالی کینرا بنا ماڈل

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 7th December 2019, 6:46 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار7/دسمبر (ایس او نیوز)نیشنل ہائی وے66 توسیعی منصوبے کے لئے سرکاری زمینات کو تحویل میں لینے کے بعد خیر سگالی کے طورمعاوضہ ادا کرنے کی پہل ضلع شمالی کینرا میں ہوئی جس کی بنیاد پر نیشنل ہائی وے ایکٹ 1956میں ترمیم کرتے ہوئے ملک بھر میں تحویل اراضی پرمعاوضہ ادائیگی کا نیا قانون2017میں وضع کیا گیا ہے۔

 ایک رپورٹ کے مطابق نیشنل ہائی وے کو فورلین میں تبدیل کرنے کے لئے سرکاری زمینوں پر تعمیر شدہ سرکاری عمارتیں، مکانات اورمندروں کوتحویل میں لے کر اسے ڈھانے اور نیشنل ہائی وے کی توسیع کے لئے استعمال کرنے کے لئے ضلع شمالی کینرا کے مختلف مقامات پر نیشنل ہائی وے اتھاریٹی آف انڈیا نے4,96,78,172روپے خیرسگالی (ایکس گریشیا) معاوضہ ادا کیا ہے۔

 بتایا جاتا ہے کہ کاروار ماجالی سے اڈپی ضلع کے کنداپور تک نیشنل ہائی وے توسیعی منصوبے کے لئے تحویل اراضی کے دوران ایک زمانے سے سرکاری زمینات پر قبضہ کرکے رہائشی یا دیگر تعمیرات کرنے والوں کو کسی طرح کا معاوضہ قانونی طورپر ادا کرنے کی گنجائش نہیں تھی۔لیکن ضلع شمالی کینرا میں ایسے بے شمار معاملات درپیش ہونے کی وجہ سے اس مسئلے پر سنجیدگی سے غور کیا گیا۔ حالانکہ اس سے پہلے جتنے بھی سرکاری منصوبوں میں عمل ہواتھا اس میں سرکاری زمینات کے لئے کو ئی معاوضہ ادا نہیں کیا گیا تھا۔سال 2015میں اُس وقت ضلع انچارج وزیر آر وی دیشپانڈے نے نیشنل ہائی وے اتھاریٹی آف انڈیا کے اعلیٰ افسران کے سامنے سرکاری عمارتوں اور سرکاری زمین پر رہائش پزیر عام لوگوں کو بھی معاوضہ دینے کی سفارش رکھی۔مرکزی حکومت میں اس مسئلے پر غور و خوض کے بعد 2017 میں پرانے قانون میں ترمیم کی گئی اور خیر سگالی کے طور پر رقم ادا کرنے کی گنجائش نکالی گئی۔    

نئے قانون سے کس کو کتنا معاوضہ ملا؟:     اعداد وشمار کے مطاق ضلع شمالی کینرا میں کاروارکوڈی باغ میں محکمہ جنگلات کی زمین پر واقع مندر کی عمارت کے لئے 60,45,172 روپے، محکمہ جنگلات کی زمین پر شیڈ تعمیر کرنے والے ایرپّا الونڈی کو 1,42,000روپے،میور ورما اسٹیج اور اطراف کے علاقے میں سہولتوں کا نقصان ہونے پر ضلع انتظامیہ کو 70,69,000روپے،محکمہ ڈاک کو 93,90,000روپے،بینگا کلسا مندر کو 7,70,000روپے، ٹیگور بیچ کے پاس عمارتوں کی تحویل کے لئے ضلع انتظامیہ کو1,57,00,000روپے،آلیگدّامیں محکمہ بندرگاہ کی زمین پر واقع تین مکانات کے لئے 16,53,000روپے،کوڈی باغ میں واقع بلدیہ کے بیت الخلا ء کے لئے 2,53,000روپے، بینگا میں کاشی وشواناتھ مندر کے لئے 7,35,000 روپے، پی ڈبلیو ڈی کمپاونڈ کی دیوار کے لئے 2,52,000روپے اور ڈی ڈی پی آئی دفتر کی عمارت کے لئے 79,69,000روپے نیشنل ہائی وے اتھاریٹی آف انڈیا کی جانب سے اداکیے گئے ہیں۔    
    

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کا نوجوان اُدیاور میں ہوئے سڑک حادثہ میں شدید زخمی؛ علاج کے لئے مالی تعاون کی اپیل

بھٹکل مخدوم کالونی کا ایک نوجوان اُڈپی کے اُدیاور میں سڑک حادثہ میں شدید زخمی ہوا ہے اور اسے منی پال کستوربا اسپتال شفٹ کیا گیا ہے، نوجوان کی مالی حالت کمزور ہونے  کی وجہ سے علاج کے لئے  قریب تین لاکھ  روپیوں کی فوری ضرورت ہے۔ نوجوان کی شناخت سمیرسوکیری (34) کی حیثیت سے کی گئی ...

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

دبئی :شیرورگرین ویلی اسکول کے صدر ڈاکٹر سید حسن کی دختر دانیا کو ملا شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس‘

عرب امارات میں بہترین ہمہ جہتی تعلیمی کارکردگی کے لئے طالب علموں کو دیا جانے والا ’’ہَرہا ئنیس شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس“ امسال دانیا حسن کو تفویض کیا گیا ہے جس کا تعلق  بھٹکل کے پڑوسی علاقہ شرور سے ہے۔

بھٹکل میں الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے موسوم ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح

   یہاں نوائط کالونی میں  دبئی کے معروف تاجر جناب عتیق الرحمن  مُنیری کی طرف سے ان کے والد مرحوم الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے منسوب ایک ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح عمل میں آیا جس میں بھٹکل کی سرکردہ شخصیات سمیت علماء و عمائدین   موجود تھے۔

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

توہین آمیز فیس بک پوسٹ اور اس پر تشدد دونوں قابل مذمت

شان رسالتﷺ میں گستاخی کرتے ہوئے کئے گئے ایک فیس بک پوسٹ اور اس کے نتیجے میں شہر بنگلورو میں گزشتہ روز پیش آنے والے پر تشدد واقعات کی مذمت کے لئے چہار شنبہ کی صبح ممتاز علمائے کرام وقائدین کی زوم کانفرنس کے ذریعے ایک میٹنگ ہوئی

ایس ایس ایل سی نتائج میں حاصل اول مقام برقرار رکھنے افسر توجہ دیں: وزیر تعلیم ڈاکٹر سدھاکر

70 سالہ تاریخ میں چکبالاپور ضلع ایس ایس ایل سی امتحانات میں ریاست میں اول مقام جو حاصل کیا ہے۔ یہ ہمارے لئے بہت خوشی کی بات ہے۔ مگر اس سے اوپر جا نہیں سکتے مگر اس مقام کو بچائے رکھنا ہی ہمارے لئے ایک چیلنج ہے۔اس سلسلے میں ضلع کے افسروں کو توجہ دینا ضروری ہے۔