وشواناتھ کے بیان پر رابطہ کمیٹی اجلاس میں بحث ہوگی: ڈی کے شیوکمار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th May 2019, 12:50 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍مئی(ایس او نیوز) ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے بھی سدرامیا کے متعلق ریاستی جے ڈی ایس صدر وشواناتھ کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سدرامیا کانگریس لیجسلیچر پارٹی کے لیڈر ہیں کانگریس پارٹی انہی کی قیادت میں کام کرے گی، کسی کو اگر سدرامیا کی قیادت پر کوئی اعتراض ہوتو وہ اپنی پارٹی سے شکایت کرے نہ کہ برسر عام بیان بازی۔ انہوں نے کہاکہ وشواناتھ نے سدرامیا کے خلاف جو بیان بازی کی ہے اس پر مخلوط حکومت کی رابطہ کمیٹی میں بحث کی جائے گی اور ضرورت پڑنے پر وشواناتھ سے اس سلسلے میں وضاحت بھی طلب کی جائے گی۔ اخبار ی نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ فی الوقت ان کی توجہ کندگول اسمبلی حلقے میں کانگریس امیدوار کو کامیاب بنانے کی طرف مرکوز ہے، اسی مقصد کے تحت وہ تمام پارٹی کارکنوں کو متحد رکھنے اور کندگول کے علاوہ چنچولی میں بھی کانگریس امیدوار کو کامیاب بنانے کی جدوجہد میں لگے ہوئے ہیں۔ اس دوران بتایا جاتاہے کہ ڈی کے شیوکمار کانگریس قیادت نے ہبلی دھارواڑ ضلع میں کانگریس کو منظم کرنے کی ذمہ داری سونپنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اور انہیں اس ضلع کا انچارج بھی بنائے جانے کا امکان ہے۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی

ریاستی حکومت نے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے حوالے کیا

ریاست کی سابقہ کانگریس جے ڈی ایس حکومت کے دور میں کی گئی مبینہ ٹیلی فون ٹیپنگ کی سی بی آئی جانچ کے ا حکامات صادر کرنے کے دودن بعد ہی آج ریاستی حکومت نے کروڑوں روپیوں کے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ سی بی آئی کے سپرد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

بنگلورو: نشے میں دھت شخص نے فٹ پاتھ پر 7 لوگوں کو کچل دیا

شراب کے نشے میں دھت ایک شخص نے بہت تیز رفتار کار فٹ پاتھ پر چڑھا دی اور فٹ پاتھ پر چل رہے 7 افراد اس کار کی زد میں آ گئے۔ زخمیوں کو فوراً اسپتال پہنچایا گیا اور خبر لکھے جانے تک ان لوگوں کی حلات نازک بنی ہوئی ہے۔ یہ واقعہ بینگلورو کے ایچ ایس آر لے آؤٹ علاقے کا ہے۔