کویمبتور میں دس سالہ بچی کی عصمت دری اور قتل کا معاملہ: موت کی سزا کا سامنا کرنے والے مجرم کی نظر ثانی کی اپیل سپریم کورٹ نے کی مسترد

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 7th November 2019, 8:32 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،07/نومبر(ایس او نیوز/ایجنسی ا) 2010 میں تمل ناڈو کے کوئمبتور میں   ایک دس سالہ بچی کی عصمت دری پھر اس کے قتل  میں مجرم پائے گئے  منوہرن کی  موت کی سزا کی نظر ثانی اپیل کو سپریم کورٹ نے مسترد کردیا  اور ایسی گھناونی حرکت کرنے والوں کو  سخت پیغام دیا کہ   ایسوں کی سزا موت ہی ہونی چاہئے۔

مجرم منوہرن کو 2010 میں کویمبتور میں ایک نابالغ لڑکی کی اجتماعی عصمت دری اور اس کے بعد اس کواور اس کے بھائی کو قتل کرنے کے معاملے میں موت کی سزا سنائی گئی تھی۔جسٹس آر ایف نریمن کی قیادت والی تین رکنی بنچ نے ایک کے مقابلے دو کی اکثریت سے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ مجرم منوہرن کی موت کی سزا کو برقرار رکھنے والے فیصلے کا جائزہ لینے کی کوئی بنیاد نہیں ہے۔جسٹس نریمن اور جسٹس سوری کانت نے نظرثانی کی درخواست مسترد کر دی جبکہ جسٹس سنجیو کھنہ نے کہا کہ صرف سزا کے معاملے پر ان کا خیال مختلف ہے۔بنچ نے کہاکہ اکثریت کے فیصلے کے پیش نظر نظرثانی پٹیشن پوری طرح سے خارج کی جاتی ہے۔

خیال رہے کہ  29/اکتوبر 2010 کو منوہرن اور اس کے ایک ساتھی موہن کرشنا نے  اسکول جانے والی ایک دس سالہ  بچی اور اس کےسات سالہ  بھائی کوا یک مندر کے قریب   پکڑ لیا تھا  اوربچی   کا دونوں مجرموں نے مل کر  ریپ کرکے  دونوں بچوں کو زہر دے دیا تھا، مگر جب دونوں بچوں کی موت واقع نہیں ہوئی تو دونوں کے ہاتھ پیر باندھ کو  ان کو قریبی نہر  میں پھینک دیا تھا،   جس  میں ڈوب کر دونوں بچوں کی موت واقع ہوگئی تھی۔

بتایا گیا ہے کہ  منوہرن کے ساتھی موہن کرشنا  کی پہلے ہی پولس انکاونٹر میں موت ہوچکی ہے۔

واقعے   کی گھمبیرتا کو دیکھتے ہوئے   سپریم کورٹ نے  نچلی عدالت  اور مدراس ہائی کورٹ کے مجرم کو سنائے گئے موت کے  فیصلے کو برقرار رکھا اور اُس کی نظر ثانی کی اپیل کو بھی مسترد کردیا۔

ایک نظر اس پر بھی

لاک ڈاؤن کے دوران جان گنوا نے والے مہاجر مزدوروں کے اہل خانہ کو 25لاکھ روپئے معاوضہ دینے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

   سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا  کے قومی صدر ایم کے فیضی نے اخباری بیان جاری کرتے ہوئے   مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بغیر تیاری کے اعلان کردہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے کام کرنے کی جگہ اور اپنے گھروں کو پیدل سفر کرنے والے جو مہاجر مزدور بھوک اور تھکن سے جان گنو ا چکے ہیں،  ان کے ...

پوری دنیا میں کورونا کا قہر جاری، متاثرین کی تعداد 63 لاکھ سے تجاوز

پوری دنیا میں عالمی وبا کورونا وائرس کا قہر جاری ہے اور ہر روز متاثرین اور اس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد میں مستقل اضافہ ہو رہا ہے۔تازہ اعداد و شمار کے مطابق کورونا متاثرین کی تعداد 63لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ اس وبا سے اب تک 3.73لاکھ سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔

کووڈ-19 پازیٹیو مسلمان دہشت گرد ہیں، انھیں مار دینا چاہئے

کانپور واقع جی ایس وی ایم میڈیکل کالج کی پرنسپل ڈاکٹر آرتی لال چندانی کا ایک متنازعہ ویڈیو سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہو رہا ہے جس میں وہ مسلمانوں اور تبلیغی جماعت اراکین کے لیے نازیبا کلمات ادا کر رہی ہیں۔ اس ویڈیو میں ڈاکٹر آرتی لال چندانی نہ صرف تبلیغی جماعت والوں کو دہشت گرد ...